طویل عرصہ کے بعد حدمتارکہ کیساتھ زرعی سرگرمیاںبحال | دونوں ممالک کے مابین جنگ بندی معاہدہ کسانوں کیلئے مفید ثابت

راجوری //راجوری اور پونچھ اضلاع کے لائن آف کنٹرول کے قریب لگ بھگ دو دہائیوں کے بعد زرعی کھیتوں میں مکمل کاشتکاری کا عمل دیکھا جا رہا ہے کیونکہ کسان لائن آف کنٹرول پر فائرنگ اور گولہ باری کے خوف کے بغیر کھیت میں اپنے زراعت کے کاموں کو انجام دینے کے قابل ہوسکے ہیں۔لائن آف کنٹرول پر گزشتہ نو مہینوں سے ماحول پرامن ہے ۔تقریباً 9 ماہ قبل رواں برس26 فروری کو ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان جنگ بندی کے معاہدے کا اعلان کیا گیا تھا۔جنگ بندی کے اس معاہدے کا اعلان دونوں فوجوں کے درمیان ڈی جی ایم او کی سطح پر ہاٹ لائن بات چیت کے بعد ہوا تھا ۔26 فروری کے اس معاہدے کے بعدلائن آف کنٹرول پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کا ایک واقعہ بھی سامنے نہیں آیا۔اگرچہ لائن آف کنٹرول پر دراندازی کی کچھ کوششیں اور دیگر عسکریت پسندی کی کارروائیاں ہوئیں لیکن فوج کی طرف سے فائرنگ اور گولہ باری کی وجہ سے جنگ بندی

پی ایم اے وائی سکیم کی فہرست سے نام خارج ہونے کا معاملہ | کالابن کے مستحقین کا محکمہ دیہی ترقی کیخلاف شدید احتجاج

مینڈھر //پردھان منتری اواس یوجنا کے فہرستوں سے مستحقین کے نام خارج ہونے کے معاملہ کو لے کر کالابن کے لوگوں نے محکمہ دیہی ترقی وضلع انتظامیہ پونچھ کیخلاف شدید احتجاج کیا ۔اس دوران مستحقین نے بلاک ڈیولپمنٹ آفیسر اور اے ڈی سی پونچھ کیخلاف شدید نعرے بازی کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ ملازمین کی ذاتی مداخلت پر ناموں کو خارج کیا گیا ہے ۔مظاہرین نے بتایا کہ پنچایتی اراکین کی مدد سے انہوں نے اپنے نام فہرستوں میں درج کروائے تھے لیکن فہرستیں جب واپس آئی تو ان میں سے زیادہ ناموں کو خارج کر کے کئی ایسے کنبوں کو شامل کرلیا گیا ہے جوکہ اس زمرے میں آتے ہی نہیں تھے ۔مظاہرین نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ملازمین نے سیاسی اثر ورسوخ کا استعمال کرتے ہوئے غیر قانونی طورپر کئی ناموں کا اندراج کیا ہے ۔منور حسین ،محمد رفیق ،عبدالمجید اور محمد رمضان چوہدری وغیرہ نے بتایا کہ لوگوں کیساتھ ناانصافیاں کی گئی ہیں

منکوٹ کے سرپنچوں کا اجلاس | پہاڑی قبائل کو پارلیمنٹ سے امیدیں وابستہ

مینڈھر //مینڈھر کے منکوٹ بلاک سے تعلق رکھنے والے پہاڑی قبائل کے سرپنچوں نے ایک اجلاس کے دوران مرکزی حکومت سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ رواں پارلیمنٹ سیشن کے دوران ہی پہاڑیوں کو ایس ٹی کا درجہ دیا جائے تاکہ ان کی فلاح و بہبود ممکن بنائی جاسکے ۔انہوں نے کہاکہ رواں پارلیمنٹ سیشن سے پہاڑی قبائل کو امیدیں وابستہ ہیں لیکن بھاجپا کی قیادت والی مرکزی حکومت کو چاہئے کہ وہ پہاڑی قبائل کیساتھ کئے گئے وعدوں کو جلدازجلد پورے کرئے ۔سعید خان ،محمد سلیم ،محمد عارس چوہدری ،سرپنچ اظہر نسیم خان نے کہا کہ پہاڑی قبائل گزشتہ کئی دہائیوں سے پسماندگی کا شکار ہیں جبکہ اس سے قبل تمام حکومتوں نے قبائل کی فلا ح و بہبود کیلئے صرف وعدے کئے ہیں جبکہ عملی طور پر کوئی کام نہیں کیا جس کی وجہ سے پہاڑیوں کی اقتصادی حالت مزید خستہ ہوتی جارہی ہے ۔انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ نئی حد بندی سے قبل ہی طبقہ کو ایس ٹی کا درجہ دیا جائ

سڑکوں پر غیر قانونی طریقہ سے مٹریل جمع | پی ایم جی ایس وائی محکمہ نے کارروائی شروع کی

مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن میں محکمہ پی ایم جی ایس وائی کی سڑکوں پر غیر قانونی طریقہ سے ریت اور بجری جمع کرنے کیخلا ف مہم شروع کر دی گئی ہے تاکہ سڑکوں کو خراب ہونے سے بچایا جاسکے ۔محکمہ کے مطابق سڑکوں پر غیر قانونی طریقہ سے ریت ،بجری و دیگر ساز و سامان جمع کرنے کی وجہ سے جہاں حادثات کا خدشہ پیدا ہو جاتا ہے وہائیں سڑک کو بھی نقصان پہنچتا ہے ۔محکمہ کے جونیئر انجینئر صدام چوہدری کی جانب سے اس سلسلہ میں ایک مہم شروع کی گئی جس کے تحت جے سی بی مشینیں لگا کر سڑکوں پر جمع کئے گئے مٹریل کو باہر نکالا دیا گیا ۔آفیسر موصوف نے بتایا کہ لوگوں کے مذکورہ قدم کی وجہ سے محکمہ کی تیار کردہ سڑکوں کو نقصان پہنچ رہا ہے ۔محکمہ نے لوگوں کو انتبادیتے ہوئے کہاکہ سڑکوں پر مٹریل جمع نہ کیا جائے تاکہ ٹریفک کی آمد ورفت میں خلل نہ آئے او ر نہ ہی سڑکیں متاثر ہوں جبکہ اس عمل میں ملوث پائے گئے افراد کیخلاف کارروائی ب

طویل عرصہ کے بعد حدمتارکہ کیساتھ زرعی سرگرمیاں بحال

راجوری //راجوری اور پونچھ اضلاع کے لائن آف کنٹرول کے قریب لگ بھگ دو دہائیوں کے بعد زرعی کھیتوں میں مکمل کاشتکاری کا عمل دیکھا جا رہا ہے کیونکہ کسان لائن آف کنٹرول پر فائرنگ اور گولہ باری کے خوف کے بغیر کھیت میں اپنے زراعت کے کاموں کو انجام دینے کے قابل ہوسکے ہیں۔لائن آف کنٹرول پر گزشتہ نو مہینوں سے ماحول پرامن ہے ۔تقریباً 9 ماہ قبل رواں برس26 فروری کو ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان جنگ بندی کے معاہدے کا اعلان کیا گیا تھا۔جنگ بندی کے اس معاہدے کا اعلان دونوں فوجوں کے درمیان ڈی جی ایم او کی سطح پر ہاٹ لائن بات چیت کے بعد ہوا تھا ۔26 فروری کے اس معاہدے کے بعدلائن آف کنٹرول پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کا ایک واقعہ بھی سامنے نہیں آیا۔اگرچہ لائن آف کنٹرول پر دراندازی کی کچھ کوششیں اور دیگر عسکریت پسندی کی کارروائیاں ہوئیں لیکن فوج کی طرف سے فائرنگ اور گولہ باری کی وجہ سے جنگ بندی

ضلع ہسپتال کو جانے والی سڑک خستہ حالی کا شکار

پونچھ//مرکز کے زیر انتظام خطہ جموں و کشمیر کے سرحدی ضلع پونچھ کے صدر مقام پر محلہ کماں خان میں ضلع ہسپتال اور کھوڑی ناڑ، پچیتر نگر کو جانے والی سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے لوگوں کو گونا گوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ضلع ہسپتال کی طرف جانے والی خستہ حال سڑک کی وجہ سے آمد و رفت میں مریضوں اورعوام کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔اس راستے پر عرصہ دراز پہلے کیا گیا کام اب خستہ حالی کا شکار ہے اور سڑک برائے نام ہی سڑک رہ گئی ہے جبکہ دو اور تین پہیہ گاڑیوں کے اور پیدل چلنے کے لحاظ سے بھی سڑک کی حالت بد ترین ہو گئی ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اْن کو سڑک کی خراب حالت کی وجہ سے بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ پونچھ اور متعلقہ محکمہ میونسپل کونسل اعلیٰ حکام سے سڑک کی طرف توجہ دینے کی اپیل اور اس کی مرمتی کا مطالبہ کیا ہے ۔   

پی ایم اے وائی سکیم کی فہرست سے نام خارج ہونے کا معاملہ

مینڈھر //پردھان منتری اواس یوجنا کے فہرستوں سے مستحقین کے نام خارج ہونے کے معاملہ کو لے کر کالابن کے لوگوں نے محکمہ دیہی ترقی وضلع انتظامیہ پونچھ کیخلاف شدید احتجاج کیا ۔اس دوران مستحقین نے بلاک ڈیولپمنٹ آفیسر اور اے ڈی سی پونچھ کیخلاف شدید نعرے بازی کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ ملازمین کی ذاتی مداخلت پر ناموں کو خارج کیا گیا ہے ۔مظاہرین نے بتایا کہ پنچایتی اراکین کی مدد سے انہوں نے اپنے نام فہرستوں میں درج کروائے تھے لیکن فہرستیں جب واپس آئی تو ان میں سے زیادہ ناموں کو خارج کر کے کئی ایسے کنبوں کو شامل کرلیا گیا ہے جوکہ اس زمرے میں آتے ہی نہیں تھے ۔مظاہرین نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ملازمین نے سیاسی اثر ورسوخ کا استعمال کرتے ہوئے غیر قانونی طورپر کئی ناموں کا اندراج کیا ہے ۔منور حسین ،محمد رفیق ،عبدالمجید اور محمد رمضان چوہدری وغیرہ نے بتایا کہ لوگوں کیساتھ ناانصافیاں کی گئی ہیں

راجوری میں میڈیکل کیمپ کا اہتمام کیا گیا

راجوری //فوج کی جانب سے راجوری ضلع میں میڈیکل کیمپ کا اہتمام کیا گیا۔ضلع کے پسماندہ دیہات میں منعقدہ اس طبی کیمپ کے دوران مریضوں کو معیاری سہولیات فراہم کرنے کیساتھ ساتھ ایک ویٹر نری کیمپ بھی منعقد کیا گیا جس کے دوران مویشیوں کی مختلف بیماریوں کیساتھ ساتھ ان کیلئے مفت ادویات بھی تقسیم کی گئیں۔راجوری کمیونٹی ہیلتھ سنٹر کے اشتراک سے منعقدہ اس طبی کیمپ میں محکمہ صحت و پشو پالن کے علاوہ فوج کے ماہر ڈاکٹروں نے بھی مریضوں و مویشیوں کو معیاری سہولیات فراہم کیں ۔فوج کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس طبی کیمپ کے دوران 350مریضوں کی طبی جانچ کی گئی جبکہ 60مویشیوں کا معائینہ بھی کیا گیا ۔مقامی لوگوں و پنچایتی اراکین نے فوج کا شکریہ ادا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ فوج آئندہ بھی اس طرح کی خدمات انجام دیتی رہے گی ۔

منکوٹ کے سرپنچوں کا اجلاس

مینڈھر //مینڈھر کے منکوٹ بلاک سے تعلق رکھنے والے پہاڑی قبائل کے سرپنچوں نے ایک اجلاس کے دوران مرکزی حکومت سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ رواں پارلیمنٹ سیشن کے دوران ہی پہاڑیوں کو ایس ٹی کا درجہ دیا جائے تاکہ ان کی فلاح و بہبود ممکن بنائی جاسکے ۔انہوں نے کہاکہ رواں پارلیمنٹ سیشن سے پہاڑی قبائل کو امیدیں وابستہ ہیں لیکن بھاجپا کی قیادت والی مرکزی حکومت کو چاہئے کہ وہ پہاڑی قبائل کیساتھ کئے گئے وعدوں کو جلدازجلد پورے کرئے ۔سعید خان ،محمد سلیم ،محمد عارس چوہدری ،سرپنچ اظہر نسیم خان نے کہا کہ پہاڑی قبائل گزشتہ کئی دہائیوں سے پسماندگی کا شکار ہیں جبکہ اس سے قبل تمام حکومتوں نے قبائل کی فلا ح و بہبود کیلئے صرف وعدے کئے ہیں جبکہ عملی طور پر کوئی کام نہیں کیا جس کی وجہ سے پہاڑیوں کی اقتصادی حالت مزید خستہ ہوتی جارہی ہے ۔انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ نئی حد بندی سے قبل ہی طبقہ کو ایس ٹی کا درجہ دیا جائ

سڑکوں پر غیر قانونی طریقہ سے مٹریل جمع

مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن میں محکمہ پی ایم جی ایس وائی کی سڑکوں پر غیر قانونی طریقہ سے ریت اور بجری جمع کرنے کیخلا ف مہم شروع کر دی گئی ہے تاکہ سڑکوں کو خراب ہونے سے بچایا جاسکے ۔محکمہ کے مطابق سڑکوں پر غیر قانونی طریقہ سے ریت ،بجری و دیگر ساز و سامان جمع کرنے کی وجہ سے جہاں حادثات کا خدشہ پیدا ہو جاتا ہے وہائیں سڑک کو بھی نقصان پہنچتا ہے ۔محکمہ کے جونیئر انجینئر صدام چوہدری کی جانب سے اس سلسلہ میں ایک مہم شروع کی گئی جس کے تحت جے سی بی مشینیں لگا کر سڑکوں پر جمع کئے گئے مٹریل کو باہر نکالا دیا گیا ۔آفیسر موصوف نے بتایا کہ لوگوں کے مذکورہ قدم کی وجہ سے محکمہ کی تیار کردہ سڑکوں کو نقصان پہنچ رہا ہے ۔محکمہ نے لوگوں کو انتبادیتے ہوئے کہاکہ سڑکوں پر مٹریل جمع نہ کیا جائے تاکہ ٹریفک کی آمد ورفت میں خلل نہ آئے او ر نہ ہی سڑکیں متاثر ہوں جبکہ اس عمل میں ملوث پائے گئے افراد کیخلاف کارروائی ب

تھنہ منڈی کے لوہر الال میں مفت میڈیکل کیمپ کا انعقاد

 تھنہ منڈی //سب ڈویژن تھنہ منڈی کے لوہر الال علاقے میں فوج نے ایک مفت طبی کیمپ لگایا تھا جس میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اس کیمپ کے ذریعے ایسے بیشمار مریضوں کیلئے بنیادی طبی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنایا گیا جو اپنے علاج و معالجہ کیلئے ضروری ادویات کے متحمل نہیں ہوسکتے ہیں۔اس موقع پر لوگوں کو مفت میڈیکل چیک اپ اور علاج کے ساتھ ساتھ مفت ادویات بھی فراہم کی گئیں۔ علاؤہ ازیں محکمہ ویٹرنری سے وابستہ ڈاکٹر بھی کیمپ کا حصہ رہے جنہوں نے مال مویشی کیلئے بہترین اور مفت ادویات فراہم کیں۔اس میڈیکل کیمپ سے مریضوں بالخصوص غریب طبقہ کو کافی فائدہ پہنچا۔ واضح رہے کہ فوج جموں و کشمیر کے دیگر دور دراز علاقوں میں اسی نوعیت کے کیمپوں کا انعقاد کیا جاتا ہے جن سے عوام کو کافی فائدہ ہوتا ہے۔ نائب سرپنچ الال مختار چوہدری نے بتایا کہ اس کیمپ میڈیکل کیمپ میں فوج کے ماہر ڈاکٹروں نے لوگوں کی ط

ضلع ہسپتال کو جانے والی سڑک خستہ حالی کا شکار

پونچھ//مرکز کے زیر انتظام خطہ جموں و کشمیر کے سرحدی ضلع پونچھ کے صدر مقام پر محلہ کماں خان میں ضلع ہسپتال اور کھوڑی ناڑ، پچیتر نگر کو جانے والی سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے لوگوں کو گونا گوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ضلع ہسپتال کی طرف جانے والی خستہ حال سڑک کی وجہ سے آمد و رفت میں مریضوں اورعوام کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔اس راستے پر عرصہ دراز پہلے کیا گیا کام اب خستہ حالی کا شکار ہے اور سڑک برائے نام ہی سڑک رہ گئی ہے جبکہ دو اور تین پہیہ گاڑیوں کے اور پیدل چلنے کے لحاظ سے بھی سڑک کی حالت بد ترین ہو گئی ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اْن کو سڑک کی خراب حالت کی وجہ سے بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ پونچھ اور متعلقہ محکمہ میونسپل کونسل اعلیٰ حکام سے سڑک کی طرف توجہ دینے کی اپیل اور اس کی مرمتی کا مطالبہ کیا ہے ۔   

انجمن اردو صحافت کے بینر تلے عالمی سطح کے صحافیوں کا پونچھ دورہ

پونچھ//انجمن اردو صحافت کے بینر تلے جموں کشمیر کے عالمی سطح کے صحافیوں نے سرحدی ضلع پونچھ کا دورہ کر کے وہاں کے سیاسی ، سماجی، علمی منظر نامے کا مشاہدہ کیا۔اس دورہ کے دوران جامعہ ضیاء العلوم گروپ آف انسٹی چیوٹ کے چیئرمین مولانا سعید احمد حبیب بانڈے کی جانب سے جامعہ کے احاطے میں صحافی برادری جن میں بی بی سی لندن اور وائس آف امریکہ کے بین الاقوامی صحافی اور براڈ کاسٹرز یوسف جمیل ا،ریاض مسرورکشمیر یونیورسٹی میں شعبہ صحافت کے مدرس ڈاکٹر راشد مقبول، سینئر صحافی ہارون ریشی،انجمن اردو صحافت جموں کشمیر کے صدر ریاض ملک،ناظم نذیر، بلال فرقانی، شیخ تجمل ،شوکت ساحل شامل ہیں کا جامعہ میں والہانہ استقبال کیا ۔اس دوران ایک مختصرتقریب کا اہتمام کیا گیا جہاں مرکزی زیر انتظام جموں و کشمیر کے موجودہ منظر نامے پر تبادلہ خیال کیا گیا اورپیر پنچال خطہ کے سماجی معاشی حالات پر روشنی ڈالی گئی ۔ اس دوران پونچ

مزید خبریں

راجوری میں میڈیکل کیمپ کا اہتمام کیا گیا  راجوری //فوج کی جانب سے راجوری ضلع میں میڈیکل کیمپ کا اہتمام کیا گیا۔ضلع کے پسماندہ دیہات میں منعقدہ اس طبی کیمپ کے دوران مریضوں کو معیاری سہولیات فراہم کرنے کیساتھ ساتھ ایک ویٹر نری کیمپ بھی منعقد کیا گیا جس کے دوران مویشیوں کی مختلف بیماریوں کیساتھ ساتھ ان کیلئے مفت ادویات بھی تقسیم کی گئیں۔راجوری کمیونٹی ہیلتھ سنٹر کے اشتراک سے منعقدہ اس طبی کیمپ میں محکمہ صحت و پشو پالن کے علاوہ فوج کے ماہر ڈاکٹروں نے بھی مریضوں و مویشیوں کو معیاری سہولیات فراہم کیں ۔فوج کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس طبی کیمپ کے دوران 350مریضوں کی طبی جانچ کی گئی جبکہ 60مویشیوں کا معائینہ بھی کیا گیا ۔مقامی لوگوں و پنچایتی اراکین نے فوج کا شکریہ ادا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ فوج آئندہ بھی اس طرح کی خدمات انجام دیتی رہے گی ۔   &nbs

راجوری کا نوجوان قومی انڈ ر 19کرکٹ ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب

راجوری //راجوری ضلع کے ایک نوجوان نے کرکٹ میدان میں اپنا لوہا منواتے ہوئے قومی انڈر 19کرکٹ ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب ہو گیا ہے ۔ضلع ہیڈ کوارٹر سے تعلق رکھنے والے حافظ امان زری کو قومی انڈر 19 کرکٹ ٹیم کیلئے منتخب کیا گیا ہے اور وہ اگلے ماہ دبئی میںشروع ہونے والے چار ملکی کرکٹ ٹورنامنٹ میں ٹیم کا حصہ ہوں گے۔ ۔مذکورہ نوجوان ایک ابھرتا ہوا باصلاحیت کرکٹر ہے اور کم عمری کا نامور حافظ بھی ہے۔مرکزی قصبہ راجوری کے عقیل زراری اور یاسمین زری کا بیٹا، نوعمر لڑکا 11ویں کلاس کا طالب علم ہے اور اس نے عرفان پٹھان کرکٹ اکیڈمی پنجاب میں کرکٹ کی تربیت لی ہے۔کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے امان زری نے کہا کہ پنجاب میں عرفان پٹھان کرکٹ اکیڈمی میں ٹریننگ لینے کے بعد انہوں نے اسکریننگ ٹیسٹ میں پرفارم کیا اور انڈر 19 قومی کرکٹ ٹیم کیلئے منتخب ہو گئے۔نوجوان کھلاڑی نے بتایا کہ ’یہ ایک خواب کے سچ ہون

تازہ ترین