تازہ ترین

راجوری وپونچھ میں لوہڑی کا تہوار جوش و خرو ش سے منایا گیا

 پونچھ//پورے ملک کی طرح سرحدی اضلاع پونچھ اور راجوری میں لوہڑی کا تہوار جوش و خروش اور عقیدت کے ساتھ منایا گیا۔پونچھ اور راجوری میں مختلف مقامات پر ہندو اور سکھ برادری کی جانب سے روائتی انداز میں لوہڑی(الائو) جلا کراس میں میٹھی ریوڑیاں پھینکی اور لو ہڑی کے گیت گاتے ہوئے ایک دوسر ے کو لوہڑی کی مبارکباد دی گئی۔اس سلسلہ میں کچھ عقیدت مندوں نے کشمیر عظمی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ لوہڑی سردی کے آخری ایام میں منایا جانے والا پنجاب کا روایتی تہوارہے جوہر سال 13 جنوری کو منایا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ نئی شادی اور بچے کی پیدائش والے گھر میں یہ تہوار اور بھی خوشی کے ساتھ منایا جاتا ہے۔پونچھ اور راجوری کے صدر مقامات پر لوہڑی کے موقعہ پر صبح سے ہیں شہر میں چہل پہل رہی۔اس دوران لوگوں نے ایک دوسرے کو مکی ،ریوڈی،گڈ اور مونگ پھلی کی شیرنی تقسیم کی۔ہندو، مسلم، سکھ اور عیسائی بھائی چارے کا اظہار کرت

چوئی منکوٹ میں لفٹ سکیم دو برسوں سے بند

مینڈھر//سب ڈویژن مینڈھر کی سرحدی پنچائت اپر منکوٹ کے علاقہ چوئی منکوٹ کی وارڈ نمبر 9  میں لفٹ سکیم گذشتہ دو برسوں سے لگاتار بند ہے اور سرحدی علاقہ میں بسنے والے لوگ پانی کی بوند بوند کیلئے ترس رہے ہیں۔ علاقہ سے تعلق رکھنے والے چوہدری میر محمد کا کہنا ہے کہ لفٹ سکیم بند ہونے سے اپر منکوٹ پنچائت سے تعلق رکھنے والے بیشمار لوگ پانی سے محروم ہیں اور محکمہ جل شکتی کے ملازمین ٹس سے مس نہیں ہورہے ہیں۔ انکا کہنا تھا کہ وارڈ نمبر 9جوکہ بالکل ہی سرحد پر پڑتا ہے ،میں فوج پانی دیتی ہے اور ہماری درجنوں خواتین دو سے تین کلومیٹر کا سفر کرکے فوج کے کیمپ کے نزدیک سے جاکر پانی لاتی ہیں لیکن متعلقہ محکمہ اور انتظامیہ سرحد پر بسنے والے لوگوں کو بنیادی سہولیات فراہم نہیں کررہی ہے۔ انکا کہنا تھا کہ یہ ایک ایسا علاقہ ہے جہاں پر کسی بھی وقت پاکستانی فوج گولہ باری کرسکتی ہے لیکن انتظامیہ لوگوں کو پینے کا ص

پرائمری سکول مالا کھوڑی ناڑ کی حالت خستہ

منجاکوٹ// سرحد پر واقع پنچایت اپر راجدھانی میں گورنمنٹ پرائمری اسکول مالا کھوڑی ناڑ کی حالت انتہائی خستہ ہوچکی ہے اور سکول عمارت گرنے کے دہانے پر ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ محکمہ ایجوکیشن کے افسران کو اس بارے میں آگاہ کیا گیا کہ بلڈنگ کی حالت انتہائی خراب ہوچکی ہے اوران کے بچوں کی پڑھائی متاثر ہو رہی ہے تاہم محکمہ ٹس سے مس نہیں ہورہا ہے ۔انہوںنے کہا کہ بلڈنگ کی حالت بالکل خستہ ہو چکی ہے اور کبھی بھی گر سکتی  ہے جس سے بچوں کی قیمتی جانیں ضائع ہونے کا احتمال ہے۔مقامی لوگوں نے گورنر انتظامیہ سے مانگ کی کہ سکول عمارت کی جلد سے جلد مرمت کروائی جائے تاکہ بچوں کی پڑھائی متاثر نہ ہو اورساتھ ہی سکول میں بنکر بنانے کا مطالبہ کیاگیا تاکہ بچے گولہ باری کے وقت محفوظ رہ سکیں۔  

۔21کلو میٹر سڑک13سال میں بھی نہ بن پائی

کوٹرنکہ// نوشہرہ ڈویژن کی بیشتر سڑکیں بدحالی کا شکار ہونے کی وجہ سے لوگوں کیلئے درد سر بنی چکی ہیں۔موگلہ سے خواص 21کلو میٹر سڑک کا کام 2008 میں محکمہ گریف،پی ایم جی ایس وائی اور محکمہ آر اینڈ بی نے ہاتھ میں لیا تھا تاہم سڑک کو تین محکموں میں تقسیم کرنے کے باوجود بھی سڑک نہیںبن پائی۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ تحصیل خواص کو صدر مقام کے ساتھ جوڑنے والی واحد سڑک ہے جو عوام کیلئے مصیبت بنی  ہوئی ہے۔ مقامی سرپنچ گیان چند شرمانے بتایا کہ پٹی نالہ کے مقام پر پل نہ ہونے کی وجہ سے برسات اور برف باری کے دوران لوگ اپنی جانوں کو جوکھم میں ڈال کر دریا عبور کرتے ہیں اور برسات کے موسم میں دریا میں پانی کی مقدار اضافہ کے دوران مسافروں کو گاڑیوں میں سے اتار کے جے سی بی مشین کا سہارا لے کر دریا عبور کروایا جاتا ہے ۔ مقامی لوگوں نے لیفٹنٹ گورنر انتظامیہ و ضلع انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ تحصیل خواص کی سڑک

تازہ ترین