شمالی کشمیر کے سوپور میں جنگجو اور معاون کارگرفتار: پولیس

سری نگر// پولیس نے سیکورٹی فورسز کے ساتھ مل کر پیر کو شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع کے سوپور علاقے میں ایک سرگرم جنگجو اور جنگجو معاون کار کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ پولیس زرائع کے مطابق سرگرم عسکریت پسند توفیق کابو ولد غلام رسول کابو ساکنہ کبو محلہ آرام پورہ سوپور اور معاون کار کی شناخت بلال احمد کالو ولد عبدالرحمن کالو ساکن تکیا بل سوپور کے طور ہوئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق پولیس اور سیکورٹی فورسز نے سوپور کے ننگلی علاقے میں ایک خفیہ اطلاع کے بعد پولیس، 52آر آر اور 177بٹالین سی آر پی ایف کی مشترکہ ٹیم کے ذریعہ محاصرے اور تلاشی آپریشن کے دوران دونوں گرفتاریاں عمل میں لائی ہیں، تاہم گرفتار افراد کی وابستگی فوری طور پر معلوم نہیں ہو سکی۔ پولیس نے اس ضمن میں متعلقہ دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے اور مزید تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔  

سکل ڈیلوپمنٹ کو بڑھاوا دینے کی خاطر اسلامک یونیورسٹی اپنا بھر پور تعاون فراہم کرئے گی: وائس چانسلر

سری نگر// اسلامک یونیورسٹی اونتی پورہ میں سکل ڈیلوپمنٹ کے حوالے سے ایک ورکشاپ کا انعقا د عمل میں لایا گیا جس میں ماہرین کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر شکیل احمد رمشو نے اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’سکل ڈیلوپمنٹ کو بڑھاوا دینے کی خاطر یونیورسٹی اپنا کلیدی کردار ادا کرئے کو تیارہے‘۔ انہوں نے کہا کہ ’کالجوں اور یونیورسٹیوں سے فارغ التحصیل ہونے والے طلبا و طالبات روزگار تلاش کرنے کے بجائے دوسروں کو روزگار فراہم کرنے کی صلاحیت پیدا کریں‘۔ وائس چانسلر کے مطابق ہمیں سکل ڈیلوپمنٹ کی طرف خصوصی توجہ مبذول کرنے کی ضرورت ہے تاکہ آگے چل کرنوجوان سرکاری نوکریوں کے بجائے اپنا روزگار خود کما سکیں۔ انہوں نے کہا کہ سکل ڈیلوپمنٹ کو بڑھاوا دینے کی خاطر اسلامک یونیورسٹی اپنا بھر پور تعاون فراہم کرئے گی۔ اُن کا

محبوبہ مفتی مطالبات منوانے دہلی پہنچیں، جنتر منتر پر ورکرز کے ہمراہ احتجاج کیا

کشمیر میں جاری تشدد اور حالیہ ہلاکتوں کے خلاف پی ڈی پی کی صدر محبوبہ مفتی نے آج دہلی کے جنتر منتر پر مرکزی حکومت کے خلاف احتجاج کیا۔ احتجاج کے دوران اُن کے ہمراہ پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے ورکرز اور دیگر کارکنا بھی موجود تھے۔  محبوبہ مفتی نے مرکز پر جموں و کشمیر کو "پرامن" علاقہ کے طور پر پیش کرنے کا الزام لگایا انہوں نے کہا کہ جب کہ حقیقت یہ ہے کہ کشمیر کی سڑکوں پر خون بہایا جا رہا ہے اور لوگوں کو اپنی رائے کا اظہار کرنے پر انسداد دہشت گردی کے قوانین کے تحت گرفتار کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 'کشمیری عوام کو بولنے کی اجازت نہیں ہے، باہر نکلنے کی بھی اجازت نہیں ہے۔ کوئی باہر نکلتا ہے تو اسے گولی مار دی جاتی ہے'۔ کشمیر کی سڑکیں خون سے بھری ہوئی ہیں۔   انہوں نے کہا کہ کشمیر کے نوجوانوں پر یو اے پی اے کی دفعات لگا کر انہیں جیلوں میں قید کیا جا رہا ہ

جے سی پبلیکشنز کی متنازع کتاب: پولیس کو پبلشر اور ڈسٹری بیوٹر کے خلاف کیس درج کرنے کی ہدایت

سری نگر// دلی نشین جے سی پبلشرز کی ساتویں جماعت کی ’ہسٹری اینڈ سویکس‘ کی متنازع درسی کتاب پر عوامی حلقوں میں پائے جانے والے غم و غصے کے بیچ جہاں سری نگر انتظامیہ نے پولیس کو پبلشر اور کتاب کے سری نگر ڈسٹری بیوٹر کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے لئے مکتوب روانہ کیا ہے وہیں جموں و کشمیر بورڈ آف اسکول ایجوکیشن نے تمام سرکاری و نجی اسکولوں کو یہ کتاب استعمال کرنے سے اجتناب کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ دریں اثنا جے سی پبلیکشنز پرائیویٹ لمیٹڈ دلی س اس ضمن میں معافی نامہ جاری کرتے ہوئے اس کو ایک غیر ارادی غلطی قرار دیا ہے۔ بتادیں کہ جے سی پبلیکشنز دلی کی طرف سے چھاپی گئی ساتویں جماعت کی اس ’ہسٹری اینڈ سویکس‘ کی درسی کتاب میں پیمبر اسلام حضرت محمد (ص) اور حضرت جبرئیل (ع) کا عکس چھاپا گیا ہے۔ اس متنازع کتاب کا نوٹس لیتے ہوئے ایڈیشنل ضلع مجسٹریٹ سری نگر سید حنیف بلخی

ہم اومیکرون کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہیں: پرنسپل جی ایم سی جموں

جموں//گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں کی پرنسپل ڈاکٹر ششی سادھنا شرما کا کہنا ہے کہ اومیکرون تیزی سے منتقل ہونے والا ویرینٹ ہے لیکن ہم اس کا مقابلہ کرنے کے لئے پوری طرح سے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس نئے ویرینٹ سے بیماری کی شدت کیا ہوسکتی ہے اور اموات کی شرح کیا رہ سکتی ہے وہ ریسرچ کے بعد ہی بتایا جا سکتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کورونا گائیڈ لائنز پر من و عن عمل در آمد سے ہی اس نئے ویرینٹ سے بچا جا سکتا ہے۔ موصوفہ نے یہ باتیں پیر کے روز اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کہیں۔ انہوں نے کہا: ’نئے قسم کا یہ اومیکرون ویرینٹ جنوبی افریقہ میں پایا گیا یہ بھی تیزی سے منتقل ہونے والا ویرینٹ ہے‘۔ ان کا کہنا تھا: ’اس سے بیاری کی شدت کیا ہوگی اور اموات کی شرح کیا ہوگی وہ ریسرچ کے بعد ہی بتایا جا سکتا ہے جو آنے والے ایک دو ہفتوں میں معلوم ہوگا‘۔ ڈاکٹر شرما نے کہا ک

اومیکرون اور کووڈ19- عالمی اقدامات ہی مہلک وبا سے دفاع

    سرینگر// ہلاکت خیز عالمی وبا کووڈ کی انتہائی تبدیل شدہ اومیکرون ویرینٹ نے دنیا بھر کے سائنسدانوں کو الرٹ کردیا ہے۔ تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ عام زکام کے ساتھ جینیاتی مواد کے اشتراک کی وجہ سے اومیکرون زیادہ پھیلتا ہے۔ سائنسدانوں کے مطابق اومیکرون سے ظاہر ہوتا ہے کہ کووڈ پرکنٹرول نہیں، عالمی سطح پر اقدامات ہی اس کو روک سکتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اومیکرون اور عام زکام میں گہرا تعلق سامنے آیا ہے۔اومیکرون ایک ایسی جینیاتی ترتیب پر مشتمل ہے جو دوسرے وائرس میں عام ہے جو زکام کا سبب بنتے ہیں۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ وائرس کا اومیکرون ویرینٹ ممکنہ طور پرکسی دوسرے وائرس سے عام زکام کا سبب بننے والاجینیاتی مواد حاصل کر لیتا ہے یہ مواد اسی متاثرہ خلیہ میں موجود ہوتا ہے۔ یہ جینیاتی ترتیب پہلے کسی بھی کورونا ویرئنٹ میں ظاہر نہیں ہوئی۔ یہ وائرس آسانی سے من

موسم کا لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ گہرا تعلق ہوتا ہے:سونم لوٹس

سری نگر//موسم کا لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ گہرا تعلق ہے لہذا خراب موسمی حالات کے باعث لوگوں کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے ہم کم سے کم پندرہ روز قبل ہی پیشن گوئی دینے کی کوشش کرتے ہیں۔ ان باتوں کا اظہار محکمہ موسمیات کے علاقائی ناظم سونم لوٹس نے محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کے ہفتہ وار پروگرام ’سکون‘ میں اپنے انٹرویو کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا: ’لوگ ہم پر کافی بھروسہ کرتے ہیں اس بھروسے کو برقرار رکھنے کے لئے ٹیکنالوجی کی دستیابی کے علاوہ میں اور میرے ساتھ جڑے باقی ساتھی کافی محنت کرتے ہیں‘۔ ان کا کہنا تھا: ’لوگوں کو موسمیات کے متعلق بر وقت اور برار جانکاری فراہم کرنا ہماری ذمہ داری ہے یہ ہمارا ان پر کوئی احسان نہیں ہے‘۔ موصوف ناظم محکمہ موسمیات نے کہا کہ موسم کا لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ گہرا تعلق ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا: &

ملک میں کوروناوائرس کے 8 ہزار سے زائد نئے کیسز

نئی دہلی// ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ہلاکت خیز کورونا وائرس کے 8,306 نئے کیسز سامنے آئے ہیں اور اس جان لیوا وبا کی وجہ سے 211 مریضوں کی موت ہوئی ہے۔ پیر کی صبح مرکزی وزارت صحت کی جانب سے جاری کردہ تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں ایکٹیو کیسز کی تعداد ایک لاکھ سے گھٹ کر 98,416 رہ گئی ہے۔ کورونا کے مزید 8306 نئے کیسز کے ساتھ ہی متاثرین کی مجموعی تعداد بڑھ کر تین کروڑ 46 لاکھ 41 ہزار 561 ہو گئی ہے۔ اسی عرصہ کے دوران 8 ہزار 834 مریض صحت یاب ہونے کے بعد جان لیوا وبا سے شفایاب ہونے والے مریضوں کی تعداد تین کروڑ 40 لاکھ 69 ہزار 608 ہوگئی۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں اس جان لیوا وائرس سے مزید 211 مریضوں کی موت کے بعد مرنے والوں کی تعداد چار لاکھ 73 ہزار 537 ہو گئی ہے۔ ملک میں کورونا وائرس کے ایکٹیو کیسز کی شرح 0.28 فیصد، صحت یابی کی شرح 98.35 فیصد اور امو

کپوارہ میں غالباً حرکت قلب بند ہونے سے سی آر پی ایف افسر فوت

کپواڑہ// شمالی کشمیر کے ضلع کپوارہ میں دوران شب سی آر پی ایف کے ایک سب انسپکٹر کی ممکنہ طور حرکت قلب بند ہونے موت واقع ہوئی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ کپوارہ میں قائم ایک کیمپ میں سانس لینے میں دقت محسوس کرنے کی شکایت کے بعد سی آر پی ایف کے ایک سب انسپکٹر کو اتوار اور پیر کی درمیانی شب سب ضلع ہسپتال کپوارہ پہنچایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ان کو مردہ قرار دیا۔ متوفی افسر کی شناخت سب انسپکٹر جئے نارائن سنگھ کے بطور ہوئی ہے جو سی آر پی ایف کی 98 بٹالین سے وابستہ تھے۔ ہسپتال کے ایک سینئر ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ مذکورہ افسر کی موت واقع ہونے کی اصلی وجوہات پوسٹ مارٹم کے بعد ہی معلوم ہوسکتی ہیں تاہم ہمارے ابتدائی تشخیص کے مطابق غالباً حرکت قلب بند ہونا ہی موت واقع ہونے کی باعث بن گئی ہے۔    

ملک میں کووڈ ویکسین لینے والوں کی مجموعی تعداد 127.93 کروڑ سے متجاوز

    نئی دہلی// کووڈ ویکسینیشن مہم میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں 24 لاکھ سے زائد افراد کو کووڈ ویکسین لگائی گئی ہیں۔ اس کے ساتھ ہی ویکسینیشن کرانے والوں کی مجموعی تعداد 127.93 کروڑ سے زیادہ ہو گئی ہے۔ صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت نے پیر کو یہاں بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں ملک میں 24 لاکھ 55 ہزار 911 افراد کو کووڈ ویکسین لگائی گئی ۔ اس کے ساتھ ہی آج صبح 7 بجے تک 127 کروڑ 93 لاکھ نو ہزار 669 افراد کو کووڈ ویکسین لگائی جاچکی ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں کووڈ انفیکشن کے 8306 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ اس وقت ملک میں 98 ہزار 416 کووڈ مریض زیر علاج ہیں۔ یہ متاثرہ کیسز کا 0.28 فیصد اور یومیہ کیسزکا 0.94 فیصد ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 8834 کووڈ مریض صحت مند ہوئے ہیں اور اب تک تین کروڑ 40 لاکھ 69 ہزار 608 افراد شفایاب ہو چکے ہیں۔ م

کشمیر: برف وباراں کے بعد موسم بہتر،دس دنوں کے دوران موسم خشک رہنے کی پیش گوئی

سری نگر// وادی کشمیر میں برف وباراں کے بعد محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے عین مطابق موسم میں بتدریج بہتری واقع ہو رہی ہے۔ متعلقہ محکمے کے سربراہ سونم لوٹس کا کہنا ہے کہ جموں وکشمیر اور لداخ یونین ٹریٹری کے تمام اضلاع میں حسب توقع موسم بہتر ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وادی کشمیر میں 8 اور 9 دسمبر کو موسم ایک بار پھر کروٹ بدل سکتا ہے تاہم اگلے دس دنوں کے دوران موسم مجموعی طور پر خشک رہنے کا ہی امکان ہے۔ ادھر مطلع ابر آلود رہنے سے وادی میں شبانہ درجہ حرارت میں نمایاں کمی واقع ہونے سے سردی کا زور بھی قدرے تھم گیا۔ دارلحکومت سری نگر میں کم سے کم درجہ حرارت2.6 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جہاں گذشتہ شب کا کم سے کم درجہ حرارت 0.6 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا تھا۔ سری نگر جہاں گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 15.3 ملی میٹر بارش ریکارڈ ہوئی ہے، میں یکم دسمبر کو رواں سیزن کی سرد تری

تازہ ترین