سیول سیکریٹریٹ میں ماسک پہننا لازمی قرار

سرینگر //حکومت نے سیول سیکریٹریٹ کے سبھی افسروں ، سٹاف ممبران اور سیکریٹریٹ آنے والے دیگر لوگوں کیلئے ماسک پہننا لازمی قرار دیا ہے ۔ یہ قدم کورونا وائیرس کے پھیلاو کو روکنے کی غرض سے اٹھایا گیا ہے ۔  اس سلسلے میں جنرل ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ نے باضابطہ احکامات جاری کئے ہیں ۔  حکمنامے کے مطابق انتظامی سیکریٹریوں کو ماسک خریدنے کا اختیار دیا گیا ہے تا کہ سیکرٹریٹ کے ہر ملازم کو دوبارہ قابلِ استعمال تین تین ماسک دئیے جا سکیں ۔  حکمنامے میں مزید بتایا گیا ہے کہ بازار میں ماسک نہ ملنے کی صورت میں متعلقہ سیکرٹری اپنی ضروریات خوراک و سول سپلائیز محکمہ کو بھیجیں گے ۔ 

سوپور مسلح تصادم آرائی میں ایک جنگجو جاں بحق: پولیس

سرینگر//پولیس نے بدھ کے روز کہا کہ شمالی ضلع بارہمولہ کے سوپور علاقے میں جنگجوﺅں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جو مسلح تصادم آرائی آج صبح شروع ہوئی تھی اُس میں ایک جنگجو جاں بحق ہوگیا ہے۔ پولیس نے کہا کہ تصادم آرائی کی جگہ سے ایک جنگجو کی لاش بر آمد ہوئی ہے جس کی شناخت جیش محمد نامی تنظیم سے وابستہ سجاد احمد ڈار ساکن سوپور کے طور ہوئی ہے۔ اس سے قبل آج صبح سوپور کے آرمپورہ نامی علاقے میں جھڑپ کا آغاز ہوگیا جس کے دوران طرفین کے مابین شدید گولی باری کا تبادلہ ہوا۔  

ملک میں ’سماجی ایمرجنسی‘، ماہرین کا لاک ڈاون بڑھانے کا مشورہ: وزیر اعظم

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے کورونا وبا کی وجہ سے پیدا صورتحال کو’سماجی ایمرجنسی‘ قرار دیتے ہوئے بدھ کو کہا کہ کئی ریاستی حکومتوں، ضلع انتظامیہ اور ماہرین نے لاک ڈاون کی مدت بڑھانے کو کہا ہے۔  مودی نے ملک میں کورونا وبا کی وجہ سے پیدا صورتحال پر سیاسی جماعتوں کے قانون ساز جماعتوں کے رہنماوں کے ساتھ آج ویڈیو کانفرنس کے ذریعے میٹنگ میں حصہ لیتے ہوئے کہا”ملک میں ’سماجی ایمرجنسی‘ جیسی صورت حال ہے اور اس کے پیش نظر حکومت کو کئی سخت فیصلے کرنے پڑے ہیں۔ ہمیں اب بھی مکمل طور محتاط رہنے کی ضرورت ہے“۔ انہوں نے کہا” مختلف ریاستی حکومتوں، ضلع انتظامیہ اور ماہرین نے لاک ڈاون کی مدت بڑھانے کو کہا ہے“۔  

وادی کشمیر میں11اور جموں میں کورونا وائرس کے3نئے کیس

سرینگر//جموں کشمیر میں بدھ کے روز کورونا وائرس میں مبتلاءنئے14کیس سامنے آگئے۔اس طرح مرکز کے زیر انتظام علاقے میں مہلک وائرس میں مبتلاءافراد کی تعداد139ہوگئی ہے۔ سرکاری ترجمان روہت کنسل نے ایک ٹویٹ کرتے ہوئے جموں کشمیر میں نئے کیس سامنے آنے کی تصدیق کی۔ انہوں نے لکھا کہ جو 14نئے کیس آج سامنے آئے اُن میں11 کشمیر جبکہ3جموں میں سامنے آگئے۔ کنسل کا مزید کہنا تھا کہ آج نئے کیسوں کے سامنے آنے سے جموں کشمیر میں مہلک وائرس سے متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد139ہوگئی ہے۔ان میں سے130کیس ایکٹو ہیں۔وادی کشمیر کے اندر ایکٹیو کیسوں کی تعداد 103جبکہ جموں میں ایسے کیسوں کی تعداد27ہے۔  

اشیا ئے ضروریہ کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے وزارت داخلہ کی ضروری اشیا قانون نافذ کرنے کی ہدایت

  نئی دہلی//وزارت داخلہ نے کورونا سے نمٹنے کےلئے ملک بھر میں جاری مکمل لاک ڈاون کے دوران ضروری اشیا کی فراہمی کو یقینی بنانے کےلئے ضروری اشیا قانون نافذ کرنے کو کہا ہے۔ مرکزی داخلہ سکریٹری اجے کمار بھلہ نے سبھی ریاستوں اور مرکزکے زیر انتظام ریاستوں کو لکھے خط میں کہا ہے کہ ضروری اشیا کی فراہمی کو یقینی بنانے کےلئے ہر ممکن طریقے استعمال کئے جانے چاہیں۔ان اقدامات کے تحت اسٹاک حد طے کرنے ،قیمتوں کا تعین ، پیداوار میں اضافہ اور ڈیلروں اور دیگر کھاتوں کی جانچ وغیرہ شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ مزدوروں کی کمی کی وجہ سے مختلف اشیا کی پیداوار میں کمی کی رپورٹیں آرہی ہیں۔ایسی حالت میں جمع خوری،کالابازاری ،منافع خوری وغیرہ کا خدشہ ہے جس سے اشیا کی قیمتوں میں اضافہ ہوگا۔ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں سے کہا گیا ہے کہ وہ مناسب شرح کی دکانوں پر اشیا کی فراہمی کو یقینی بنانے کےلئ

کورونا وائرس پرقابو پاکر ہی فضائی ٹرانسپورٹ پر پابندی ہٹائی جائے گی:وزیر شہری ہوا بازی

سرینگر//بھارت اُسی وقت گھریلو اور بین الاقوامی پروازوں پر جاری پابندی ہٹائے گا جب یہ بات یقینی بن جائے گی کہ کورونا وائرس کو قابو میں کرلیا گیا ہے ۔اس بات کا اظہار بدھ کے روز شہری ہوا بازی کے وزیر ہردیپ سنگھ پوری نے کیا۔ انہوں نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا”مجھے اُن لوگوں سے ہمدردی ہے جو کورونا وائرس کے نتیجے میں گھریلو اور بین الاقوامی پروازوں پر عائد بروقت پابندیوں کی وجہ سے سخت مصائب جھیل رہے ہیں“۔ بھارت میں کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے 25مارچ سے سبھی قسم کی پروازوں پر پابندی عائد ہے۔تاہم کارگو پروازیں، آف شور ہیلی کاپٹر آپریشن اور دیگر خصوصی و ایمر جنسی پروازیں کام کررہی ہیں۔ وزیر موصوف کا کہنا تھا”پابندی اُسی وقت ہٹائی جائے گی جب اس بات کا یقین ہو کہ کورو نا وائرس پر قابو پایا گیا ہے اور اب اس مہلک وائرس سے ملک کے شہریوں کو کوئی خطرہ نہیں ہے“۔

شمالی کشمیر کے سوپور میں جنگجوﺅں اور فورسز کے مابین مسلح تصادم

سرینگر//شمالی ضلع بارہمولہ کے سوپور علاقے میں بدھ کو سیکورٹی فورسز اور جنگجوﺅں کے مابین مسلح تصادم شروع ہوگیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق فورسز نے جنگجوﺅں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد گذشتہ رات سوپور کے آرمپورہ نامی علاقے کو محاصرے میں لے لیا۔اس دوران علاقے کی سبھی راہیں بند کرکے گھر گھر تلاشی آپریشن شرو ع کیا گیا۔ دورانِ آپریشن آج صبح جنگجوﺅں اور فورسز کا آمنا سامنا ہوتے ہی طرفین میں گولی باری شروع ہوگئی جو آخری اطلاعات ملنے تک جاری تھی۔  

تازہ ترین