تازہ ترین

ملازمین ملکی وفاداری کے پابند

  سکریننگ کمیٹی تشکیل، معاملات کی چھان بین کے بعد فیصلے لئے جائینگے   سرینگر// حکومت جموں کشمیر نے کہا ہے کہ ہر سرکاری ملازم کو لازمی طور پر ملک کی سالمیت ، ایمانداری اور یونین آف انڈیا اور اس کے آئین کے ساتھ وفاداری کو برقرار رکھنا چاہیے اور ایسا کچھ نہیں کرنا چاہیے جو سرکاری ملازم کے لیے ناپسندیدہ ہو۔مزید یہ بتایا گیا ہے کہ ہر ایک سرکاری ملازم اپنی ملازمت کے دوران ہر وقت جے اینڈ کے گورنمنٹ ایمپلائز کنڈکٹ رولز ، 1971 کا پابند ہے۔ یہ قواعد مختلف دفعات پر مشتمل ہیں جو سرکاری اور نجی سیکٹر میں ملازمین کے طرز عمل کو چلانے والی سرگرمیوں کی ایک وسیع رینج کا احاطہ کرتی ہیں۔ جموں و کشمیر سول سروسز (کریکٹر اینڈ اینٹی سیڈینٹس) انسٹرکشنز ، 1997 کو جاری کرتے ہوئے ، 1997 کے گورنمنٹ آرڈر نمبر 1918-GAD کے ذریعہ بتاریخ9دسمبر 1997کے ترمیم کے مطابق ، درج ذیل ہدایات کو ذہن میں رکھا

۔1930میں قائم کئے گئے محکمہ خوراک ورسدات کی نئی عمارتیں بنیں نہ1990کے بعد ملازمین کی بھرتی ہوئی

 سرینگر //محکمہ خوراک وشہری رسدات( امور صارفین و عوامی تقسیم کاری) میں افرادی قوت کی کمی ایک سنگین مسئلہ بنی ہوئی ہے جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ تین تین راشن گھاٹوں پرایک سٹور کیپر راشن فراہم کرنے کیلئے تعینات رکھا گیا ہے۔محکمہ میں موجود ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ فی الوقت کشمیر وادی میں 2004سرکاری راشن گھاٹ اور 1162فئیرپرائز شاپ موجود ہیں۔ اگرچہ پرایئویٹ فئیر پرائز شاپ پر مالکخود ہی لوگوں کو راشن فراہم کرتے ہیںلیکن سرکاری راشن گھاٹوں پر عملے کی شدید قلت کے نتیجے میں لوگ کئی کئی دنوں تک راشن سے محروم رہ جاتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ کرناہ سے لیکر قاضی گنڈ تک تین تین راشن گھاٹوں کا اضافی چارج ایک ہی سٹور کیپر کو دیا گیا ہے ۔المیہ تو یہ ہے کہ سٹور کیپروں کی قلت دور کرنے کیلئے کہیں تیل ڈیپو چلانے والوں کو راشن کی تقسیم کاری کا کام سونپا گیا ہے تو کہیں حمال اور کہیں چ

سرحدپار سے تشددکوہوا دینے کی کوششیں| ملی ٹینسی نا قابل برداشت

اودہم پور // لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا ہے کہ ملی ٹنسی یاجنگجویت کو کسی بھی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جو بھی ملی ٹنسی کو فروغ دینے کی کوشش کرے گا، اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ منوج سنہا نے اودھم پور پولیس ٹریننگ کالج میں 669 فائرمین کے پہلی بیچ کی آؤٹ پاسنگ پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جموں و کشمیر میں تشدد کو ہوا دینے کی کوششیں ہو رہی ہیں جن کا مقابلہ کرنے کیلئے پولیس و دیگر سیکیورٹی ایجنسیاں کوشاں ہیں۔سنہا نے کہاکہ جموں وکشمیر امن وامان ،ترقی اورخوشحالی کی راہ پرگامزن ہے اوراب کسی کویہاں بدامنی یاتشددپھیلانے کی اجازت نہیں دی جائیگی ۔سنہا نے کہاکہ نئی پوداورنوجوان نسل کو سوشل میڈیا کے ذریعے گمراہ کر کے نہ صرف قومی سطح پر بلکہ عالمی سطح پر شدت پسندی کو فروغ دینے کی کوشش کی جا رہی ہے جس کا مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ ایسے عناصر جموں و کشمیر

پولیس ڈیوٹی کے دوران چوکنا رہیں

 شوپیان//ڈائریکٹر جنرل پولیس دلباغ سنگھ نے جمعرات کوجنوبی کشمیر کے ضلع شوپیاں کا دورہ کیا جہاں انہوں نے مشترکہ سیکورٹی جائزہ اجلاس کی صدارت کی اور سی سی ٹی وی مانیٹرنگ سسٹم کا افتتاح کیا۔پولیس سربراہ نے افسران پر زور دیا کہ وہ امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کیلئے سخت کوشش کرنے کی حکمت عملی اپنائے رکھیں ۔ انہوں نے کہا کہ پولیس، دیگر سیکورٹی اداروں کیساتھ مل کر دہشت گردوں کے خلاف مربوط کارروائی جاری رکھیں تاکہ دیرپا امن کو یقینی بنایا جا سکے ۔ڈی جی پی نے اس بات پر زور دیا کہ پولیس اہلکاروں کو نوجوانوں کو دہشت گردی کی طرف دھکیلنے والے عناصر سے سختی سے نمٹنا چاہیے۔ انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ وہ ان سرگرمیوں میں ملوث افراد کی نشاندہی کریں اورایسے عناصر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائیں۔انہوں نے کہا کہ فورسز کو زیادہ چوکس رہنا چاہیے تاکہ امن مخالف عناصر کے مذموم عزائم کو ناکام ب

وائرس متاثرین میں بدستور اضافہ

سرینگر //جموں و کشمیر میں مسلسل تیسرے روز بھی کورونا متاثرین کی تعداد میں اُچھال کا سلسلہ جاری ہے۔ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران وائرس کی تشخیص کیلئے 57 ہزار 278ٹیسٹ کئے گئے جن میں13اضلاع کے 170افراد کو مثبت قرار دیا گیا جبکہ دیگر 7اضلاع میں کسی کی رپورٹ بھی مثبت نہیں آئی ہے۔ جموں و کشمیر میں متاثرین کی مجموعی تعداد3لاکھ 27ہزار 466 ک پہنچ گئی ہے۔ جمعرات کو ایک مرتبہ پھر وائرس سے کسی کی موت نہیں ہوئی جسکی وجہ سے متوفین کی مجموعی تعداد 4415بنی ہوئی ہے۔ کورونا وائرس سے 41جموں جبکہ 129کشمیر میںمتاثر ہوئے ہیں۔ کشمیر سے تعلق رکھنے والے 129افرادمیں 3بیرون ریاستوں سے سفر کرنے کے بعد وادی پہنچے جبکہ126مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے مثبت پائے گئے۔ اننت ناگ ، کولگام اور شوپیان میں کسی کی رپورٹ مثبت نہیں آئی جبکہ دیگر 7اضلاع میں 129افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں سرینگر میں70، بارہمولہ میں 1

سیاسی کارکنوں کے رہائشی کوارٹر

بڈگام//حکام نے جمعرات کو وسطی کشمیر بڈگام میں بی ڈی سی ممبر پکھر پورہ اور پی ڈی پی کے سابق  رہنما نذیر احمد ایتو سمیت کئی سیاسی کارکنوں کے سرکاری رہائشی کوارٹروں پر تالے چڑھائے۔تاہم ، اس اقدام پر سیاسی کارکنوں نے ناراضگی ظاہر کی ہے ، جو ان کے مطابق گزشتہ کئی برسوںسے ان سرکاری کوارٹروں میں مقیم تھے۔انہوں نے کہا کہ انہیں ان رہائشی کوارٹروں کو تالا لگانے کے بارے میں پیشگی اطلاع نہیں دی گئی۔ عہدیداروں نے بتایا کہ اعلی حکام کی ہدایات پر تحصیلدار چاڑورہ نے تحصیل آفس چاڑورہ کے قریب آر اینڈ بی عمارت پرتالے لگائے، جسے کئی سیاسی رہنمائوں کی جانب سے رہائشی کوارٹر کے طور پر استعمال کیا جا رہا تھا۔ان میں’ اپنی پارٹی‘ کے محمد مقبول ملہ ، پی ڈی پی کے سابق یوتھ لیڈر نذیر احمدایتو، این سی کے فیروز احمد بٹ، سینئر ورکر شوکت احمد رائے سابق بی ڈی سی ممبر اورحسینہ بیگم بی ڈی سی ممبر پکھر پو

ڈگری کالج شوپیان

 شوپیان //اسکولوں و کالجوں کے نام فوج اور پولیس کے جاں بحق افسران و جوانوں کے نام پر رکھے جانے کے سرکاری فیصلے کے بعد شوپیان کے گورنمنٹ ڈگری کالج کو ایک سابق مقامی فوجی جوان کے نام سے منسوب کیا گیا ہے۔ کا نام فوجی جوان امتیاز احمد ٹھوکر کے نام پر رکھا گیا ہے۔پشاوری محلہ کریوا شاداب( وڈر) کاامتیاز احمد ٹھوکر فسٹ پیرا سے وابستہ پیرا ٹروپر تھا ،جو 24فروری 2015 کو سوپور میں ایک انکانٹر میں مارا گیا تھا۔ شوپیان گورنمنٹ ڈگری کالج شوپیان کا نام تبدیل کرنے کی تقریب منعقد کی گئی جس میں پولیس ، سیول اور فوج کے اعلی حکام موجود تھے۔ گورنمنٹ ڈگری کالج شوپیاںاب "امتیاز احمد ٹھوکر میموریل ماڈل ڈگری کالج شوپیان"کہلایا جائیگا۔حکام کا کہنا ہے کہ یہ ان شہداکیلئے اعزاز اور خراج عقیدت کی علامت ہے ، جنہوں نے ملک کی خاطر اپنا سب کچھ قربان کردیا۔ شوپیان میں پہلے ہی( آئی ٹی آئی )انڈسٹریل ٹرینگ ا