تازہ ترین

پنڈت ملازم کی ہلاکت کے خلاف دوسرے دن بھی احتجاج

 بڈگام +اننت ناگ+شوپیان+کولگام// چاڈورہ قصبے میں گذشتہ روز مشتبہ ملی ٹینٹوں کے ہاتھوں راہل بھٹ نامی پنڈت کی ہلاکت کے خلاف جمعہ دوسرے دن بھی وادی  اور جموںکے مختلف مقامات پر احتجاجوں کا سلسلہ جاری رہا۔شیخ پورہ پنڈت کالونی میں رہائش پذیر پنڈت برادری کے لوگوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔احتجاجیوں میں زن و مرد شامل تھے اور وہ جم کر نعرہ بازی کر رہے تھے ۔ احتجاجیوں نے ائر پورٹ روڈ کی طرف پیش قدمی کرنے کی کوشش کی جس کو وہاں تعینات پولیس اہلکاروں نے ناکام بنا دیا۔انہوں نے کہا کہ پولیس کو احتجاجیوں کو منتشر کرنے کے لئے کچھ آنسو گیس کے گولوں کا استعمال اور معمولی نوعیت کا لاٹھی چارج بھی کرنا پڑا۔احتجاجیوں کا کہنا تھا کہ پہلے وہ کالونی میں ہی احتجاجی دھرنے پر بیٹھے تھے اور لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کا انتظار کر رہے تھے لیکن جب وہ نہیں آئے تو باہر نکلنے پر مجبور ہوگئے ۔ان کا الزام تھا کہ سرک

راہل بھٹ کی آخری رسومات ادا

سرینگر// جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا مہلوک راہل بھٹ کے اہلخانہ سے ملے اور انہیں انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی۔انہوں نے کہا کہ مصیبت کی اس گھڑی میں ہم پسماندگان کے ساتھ کھڑے ہیں اور اس گھناؤنی حرکت کے مرتکبین کو بخشا نہیں جائے گا۔منوج سنہا نے ایک ٹویٹ میں کہا’راہل بھٹ کے رشتہ داروں سے ملا اور خاندان کو انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی‘۔ان کا ٹویٹ میں مزید کہنا تھا’جنگجوؤں اور ان کے حامیوں کو یہ گھناؤنی حرکت انجام دینے کی بھاری قیمت چکانی پڑے گی‘۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ راہل کی اہلیہ کو جموں میں سرکاری ملازمت نیز اسکے اہل خانہ کو مالی معاونت فراہم کی جائیگی۔اسکے علاوہ راہل کی بیٹی کے تعلیمی اخراجات سرکار اٹھائے گی۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ اس بات کا فیصلہ کیا گیا ہے کہ اس واقعہ کی تحقیقات کیلئے SITقائم کی جائیگی اسکے علاوہ متعلقہ ایس ایچ او

بانڈی پورہ میں 2غیر ملکی ملی ٹینٹ ہلاک

 بانڈی پورہ +پلوامہ //بانڈی پورہ کے آرہ گام جنگلاتی علاقے میں گذشتہ روز فرار ہونے والے 2ملی ٹینٹ مارے گئے۔ادھر پلوامہ کے مضافاتی گائوں میں ملی ٹینٹوں نے ایک پولیس کانسٹیبل کو گولیاں مار کر ہلاک کردیا۔ بانڈی پورہ پولیس بیان کے مطابق پولیس اور 13آر آر نے بانڈی پورہ کے برار آرہ گام علاقے میں ایک انسداد دہشت گردی آپریشن میں حال ہی میں کالعدم ایل ای ٹی کے دراندازی کرنے والے 2 غیر ملکی  ملی ٹینٹوں کو بے اثر کر دیا۔ یہ دونوں بانڈی پورہ کے  سریندر جنگلاتی علاقے میں 11مئی کو ہوئے آپریشن میں فرار ہو گئے تھے۔پولیس لشکر طیبہ کے ایک مقامی ملی ٹینٹ لطیف راتھرعرفاسامہ کا سراغ لگا رہی تھی جو سرینگر اور بڈگام میں گزشتہ دو ماہ سے دہشت گردی کے واقعات میں ملوث تھا۔ ایک ہفتہ قبل بانڈی پورہ کے علاقے سریندر میں لطیف راتھر کی نقل و حرکت کی تصدیق ہوئی تھی جہاں وہ لشکر طیبہ کے ایک تازہ

عدالت عظمیٰ میں حد بندی کمیشن کیخلاف عرضی پر سماعت

نئی دہلی//سپریم کورٹ نے جمعہ کو مرکز، جموں اور کشمیر انتظامیہ اور الیکشن کمیشن آف انڈیاسے دو کشمیر ی باشندوں کی درخواست پر جواب طلب کیا جس میں حکومت کی جانب سے حد بندی کمیشن کی تشکیل کے فیصلے کو چیلنج کیا گیا تھا۔ مرکز کے زیر انتظام علاقے میں اسمبلی اور لوک سبھا کے حلقے جسٹس سنجے کشن کول اور ایم ایم سندریش کی بنچ نے مرکز اور الیکشن کمیشن آف انڈیا کو نوٹس جاری کیا اور چھ ہفتوں میں ان سے جواب طلب کیا اور کہا کہ اس کے بعد دو ہفتوں میں جوابی حلف نامہ داخل کیا جائے گا۔شروع میں سرینگر کے دو رہائشیوں حاجی عبدالغنی خان اور ڈاکٹر محمد ایوب متو کی طرف سے پیش ہونے والے وکیل نے کہا کہ آئین کی شق کے برخلاف یہ حد بندی کی مشق کی گئی اور حدود میں ردوبدل اور توسیعی علاقوں کو شامل نہیں کیا جا سکتا۔.بنچ نے کہا کہ حد بندی کمیشن کچھ عرصہ پہلے تشکیل دیا گیا تھا اور درخواست گزاروں سے پوچھا کہ اس وقت وہ کہاں

اے سی بی کی کارروائی

ترال//اے سی بی  نے رشوت لینے کے الزام میں صدر میونسپل کمیٹی اونتی پورہ کو گرفتار کیا۔اینٹی کرپشن بیورو کو شکایت موصول ہوئی تھی کہ بلال احمد بٹ شکایت کنندہ کے بلوں پر کارروائی کے لیے 1000کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ شکایت کنندہ نے وہ بلوں کی منظوری کے لیے 5 فیصد کمیشن کا مطالبہ کرتا ہے۔ شکایت کنندگان نے الزام لگایا کہ وہ آئی ٹی فرم کا مالک ہے۔ اسے ایک سال پہلے ٹینڈر الاٹ کیا گیا تھا۔ ایجنسی نے مقدمہ نمبر 9/2022/S ACB اننت ناگ میں درج کیا  اور تحقیقات شروع کی گئی۔تفتیش کے دوران، ایک ٹریپ ٹیم تشکیل دی گئی۔ ٹیم نے صدر میونسپل کمیٹی، اونتی پورہ کو ایک ہزاریعنی 20650میں سے 5% کا مطالبہ کرنے اور قبول کرنے پر رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔ اسے اے سی بی ٹیم نے موقع پر ہی گرفتار کر لیا، آزاد گواہوں کی موجودگی میں اس کے قبضے سے رشوت کی رقم بھی برآمد کر لی گئی۔  

حوالہ کیس| جموں اور سرینگر میں 9مقامات پر چھاپے

سرینگر//ریاستی تحقیقاتی ایجنسی نے جمعہ کے روز  سرینگر اور جموں میں کم سے کم 9مقامات پر چھاپے مارے ،جہاں سے قابل اعتراضات دستاویزات کی ضبطی عملی میں لانے کا دعویٰ کیا گیا ہے ۔ سرینگر میں ایجنسی نے مہجور نگر کی سعادات کالونی میں شریف الدین شاہ ولد سید غنی شاہ کے گھر پر چھاپہ مارا جو کہ جنوبی کشمیر کے لارنو کوکرناگ کے حقیقی رہائشی ہیں۔ اسی طرح جموں میں بھی چھاپے مارے جا رہے تھے۔جموں میں بابو سنگھ حوالہ کیس کے سلسلے میں کئی جگہوں سے قابل اعتراضات دستاویزات اور دیگر الیکٹرانک سامان ضبط کیاگیا ۔ کٹھوعہ کے رہنے والے سنگھ کو حوالہ کی رقم کا مرکزی سرغنہ کہا جاتا ہے جس کے لیے محمد شریف شاہ نے سرینگر سے نقدی جمع کی تھی۔انہوں نے کہا کہ ان کی ایجنسی نے سدھانت شرما کی بھی شناخت کی ہے جو بابو سنگھ اور شریف شاہ کے ساتھ رابطے میں تھا اور  رقومات کے لین دین میں اہم رول اداکررہا تھا۔ مبینہ طور

پروفیسر سمیت تین سرکاری ملازمین بر طرف

سرینگر/بلال فرقانی/ جموں و کشمیر حکومت نے مبینہ طور پر جنگجوؤں کے ساتھ روابط ہونے کے پاداش میں کشمیر یونیورسٹی کے ایک پروفیسر اور ایک پولیس کانسٹیبل سمیت تین سرکاری ملازموں کو نوکریوں سے برخاست کر دیا۔ حکومت نے مبینہ طور پر  ملی ٹینٹوں کے ساتھ روابط ہونے اور مختلف جنگجو تنظیموں کیلئے معاونین کے طور کام کرنے کے الزام میں تین سرکاری ملازموں کو نوکریوں سے فارغ کر دیا۔جن ملازموں کو نوکریوں سے بر خاست کر دیا گیا ، ان میں کشمیر یونیورسٹی میں کمسٹری مضمون کے پروفیسر الطاف حسین پنڈت ولد غلام حسن پنڈت ساکن سوپور بارہمولہ، سلیکشن گریڈ پولیس کانسٹبل غلام رسول ملک ولد غلام مصطفیٰ ملک ساکن براتھ ڈوڈہ اور محکمہ تعلیم کا ایک استاد محمد مقبول حجام ساکن گنگہ بگ لولاب حال سوگام لولاب شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ آئین ہند کے دفعہ311 کے تحت مقدمات کی جانچ اور سفارش کرنے والی نامزد کمیٹی نے ان تین سرکاری