ڈیموکریسی اجلاس کیلئے110ممالک مدعو | غیر جمہوری قوتوں پر امریکی پابندیوں کا امکان

  واشنگٹن //واشنگٹن میں ہونے والی ڈیموکریسی اجلاس میں غیر جمہوری قوتوں پر پابندیاں عائد کیے جانے کا امکان ہے۔ رپورٹ کے مطابق 110 ممالک کو9 سے 10 دسمبر کے اجلاس میں مدعو کیا گیا ہے ۔امریکی میڈیا کے مختلف آؤٹ لیٹس نے رپورٹ کیا کہ امریکی محکمہ خزانہ اس ہفتے اجلاس کے موقع پر سلسلہ وار پابندیاں عائد کرے گا، جن میں ایسے لوگوں کو نشانہ بنایا جائے گا جو جمہوریت کو نقصان پہنچاتے ہیں۔واشنگٹن میں ایک ترجمان نے بتایا کہ 'محکمہ خزانہ ایسے افراد کو نامزد کرنے کے لیے متعدد کارروائیاں کرے گا جو دنیا بھر میں جمہوریت اور جمہوری اداروں کو نقصان پہنچانے والی بدنیتی کی سرگرمیوں میں ملوث ہیں، جس میں بدعنوانی، جبر، منظم جرائم، اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں شامل ہیں۔اس کے علاوہ محکمہ خزانہ بدعنوانوں کی حوصلہ افزائی کرنے والی خامیوں کو دور کرنے کے سلسلے میں بھی اقدامات کا اعلان کرے گا۔واش

نائیجر میں فوج اور باغیوں میں جھڑپ | 100 سے زائد ہلاکتیں

نیامے// نائیجر کے مغربی صوبے میں مسلح باغیوں اور فوج کے درمیان گھمسان کی جھڑپ ہوئی جس میں 27 فوجی اہلکار سمیت 100 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق نائیجر کے علاقے تیلابیری کے ضلع تیرا میں مسلح افراد نے فوجی اڈے پر حملہ کردیا۔ فوج اور جنگجووں میں گھمسان کی جھڑپ ہوئی۔خونی جھڑپ میں نائیجر فوج کے 27 اہلکار ہلاک اور 8 زخمی ہوگئے۔ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں 4 زخمیوں کی حالت نازک ہونے کے سبب ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔نائیجر فوج کے ترجمان نے دعویٰ کیا ہے کہ جوابی کارروائیوں میں 95 سے زائد حملہ آور ہلاک ہوگئے جب کہ فرار ہونے والوں کی گاڑیاں اور اسلحہ قبضے میں لے لیا۔    

اردگان کو بم سے اڑانے کی کوشش ناکام

سیرت //سیکورٹی فورسز نے ترک صدر طیب اردگان کو بم سے اڑانے کی کوشش ناکام بنادی گئی۔ ترک میڈیا کے مطابق طیب اردگان صوبے سیرت میں ایک ریلی میں شریک تھے کہ سیکورٹی فورسز نے گاڑی کے نیچے سے بم برا?مد کیا، جس کو فوراً بم ڈسپوزل اسکواڈ نے ناکارہ بنا دیا، فرانزک ٹیموں نے کار کو گھیرے میں لے کر انگلیوں کے نشانات اور دیگر شواہد جمع کرلیے اور مزید تحقیقات کا ا?غاز کردیا۔  

افغانستان میں یتیم خانوں کیلئے موبائل لائبریری کی سہولت بحال

کابل //افغانستان میں طالبان کی اقتدار میں واپسی کے بعد پہلی بار موبائل لائبریری بس یتیم خانے میں پہنچی جس کے دروازے کھلتے ہی بچوں کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھر گئیں۔ رپورٹ کے مطابق 11 سالہ آرزو عزیزی کا کہنا تھا کہ 'میں واقعی بہت خوش ہوں، میں ان کتابوں کا دوبارہ مطالعہ کر رہی ہوں جو مجھے پسند ہیں'، اس کتاب میں ان کے پسندیدہ ٹوم (ایک بلی) کے ذریعے گنتی کرنے میں مدد دی گئی ہے جسے پنیر کے اتنے زیادہ ٹکڑے ملے ہیں جنہیں گننا مشکل ہے۔ساتھیوں کی پْرجوش چہچہاہٹ کے ساتھ ایک تبدیل شدہ بپلک بس میں بیٹھی آرزو نے کہا کہ لائبریری تین ماہ تک نہیں آئی تھی۔موبائل لائبریری ان 5 بسوں میں سے ایک ہے جس کی منظوری چارمغز نامی مقامی تنظیم نے دی تھی اور اس کا قیام آکسفورڈ یونیورسٹی سے تعلیم یافتہ افغان خاتون فرشتہ کریم نے کیا تھا۔کابل میں حالیہ برسوں میں سیکڑوں بچے روزانہ موبائل لائبریریوں کا استعمال

تازہ ترین