تازہ ترین

’امریکہ طالبان کیخلاف فضائی حملے جاری رکھے گا‘

کابل// افغانستان میں میں طالبان کی پیش قدمی کے پیش نظر امریکی سینٹرل کمانڈ کے سربراہ جنرل کینتھ مک کنزی نے کہا ہے کہ امریکہ طالبان کی پیش قدمی روکنے کے لئے افغان فورسز کی مدد کی خاطر فضائی حملے جاری رکھے گا۔ جنرل کینتھ میک کنزی نے کابل میں پریس کانفرنس میں کہا ” امریکہ نے طالبان کے ٹھکانوں پر فضائی حملے بڑھا دیئے ہیں“۔ ان کا کہنا تھا” اگر طالبان کی جانب سے حملوں کا سلسلہ جاری رہا تو امریکہ افغان فورسز کی مدد میں اضافے کو جاری رکھے گا“۔ دوسری جانب افغانستان میں طالبان کی پیش قدمی کی وجہ سے افغان آرمی چیف جنرل ولی محمد احمد زئی نے اپنا دورہ ہندوستان ملتوی کردیا ہے۔ ہندوستان میں واقع افغان سفارتخانہ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ فوجی سربراہ ملک میں شدید لڑائی کی وجہ سے اپنا دہلی دورہ ملتوی کررہے ہیں۔

تیونِس کے صدر نے وزیر اعظم و پارلیمنٹ کومعطل کردیا

تیونس سٹی // تیونس میں پْرتشدد مظاہروں کے بعد تیونسی صدر نے وزیر اعظم کو معزول اور پارلیمنٹ کو معطل کردیا ہے۔ کوویڈ19 معاملات میں بڑے پیمانے پر حکومت کی طرف سے انتظامات نے ملک کے معاشی اور معاشرتی انتشار اور بدامنی میں اضافہ کیا ہے جس پر عوام نے شدید ردِعمل کا اظہار کیا تھا۔ تاہم اب صدر کی جانب سے وزیر اعظم کو معزول اور پارلیمنٹ کو معطل کرنے پر عوام سڑکوں پر جشن منانے کیلئے نکل آئے ہیں۔2019 میں منتخب ہونے والے صدر قیص سعید نے اعلان کیا ہے کہ وہ حکومت کی باگ ڈور اپنے ہاتھ میں لے رہے ہیں۔عوام کی اکثریت صدارتی فیصلے کی حامی ہے جبکہ دوسری جانب ارکانِ پارلیمنٹ اسے جمہوریت پر حملہ قرار دے رہے ہیں۔اتوار کو ہزاروں افراد نے وزیر اعظم ہیچیم میچیچی اور ان کی اعتدال پسند اسلامی حکمران جماعت اینہڈا کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے دیکھا ، ‘‘نکل جاؤ!’’۔صدر نے کہا کہ یہ فیصلہ اس

امریکہ اورچین کے درمیان اعلیٰ سطحی مذاکرات شروع | گمراہ کن ذہنیت اور خطرناک پالیسی بدلے امریکہ: بیجنگ

بیجنگ//چین کے شہر تیآنجن میں پیر کے روز جب امریکہ اور چین کے درمیان اعلیٰ سطحی بات چیت کا آغاز ہونے کے درمیان چین نے امریکہ پر دو طرفہ تعلقات کو اسٹیکنگ کرنے کا الزام لگایا۔ چینی نائب وزیر خارجہ شی فینگ نے امریکہ سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی انتہائی گمراہ کن ذہنیت اور خطرناک پالیسی کو تبدیل کرے۔ شی نے امریکی نائب وزیر خارجہ وینڈی شرمین سے کہا کہ چین اور امریکہ تعلقات میں کھڑا ہونا اس لئے ہے کہ کچھ امریکی چین کوخیالی دشمن کے طور پر پیش کرتے ہیں۔شرمین ، چین اور امریکہ کے تعلقات کے انچارج چینی وزیر خارجہ وانگ یی کے ساتھ تیآنجن شہر میں واقع ریزورٹ میں بند دروازوں سے الگ الگ ملاقاتوں میں دونوں ملکوں کے درمیان تنا ؤکے تعلقات پر تبادلہ خیال کر رہے ہیں۔ جو بائیڈن کے چھ ماہ قبل امریکی ریاستہائے متحدہ کا اقتدار سنبھالنے کے بعد وہ چین کا دورہ کرنے والی اعلیٰ ترین امریکی اہلکار ہیں۔ سابق امریکی صد

نیوزی لینڈ میں 45 ہزار افراد ہیپاٹائٹس- سی سے متاثر

ویلنگٹن//نیوزی لینڈ کے تقریبا 45000 رہائشی ہیپاٹائٹس سی سے متاثر ہیں ، اگرچہ ان میں سے نصف تک کئی برسوں تک علامات کے ظاہر ہوئے بغیر اس مرض سے لاعلم رہے ۔ہیلتھ کے ڈائرکٹر جنرل ایشلے بلوم فیلڈنے یک بیان میں کہا کہ عالمی ہیپاٹائٹس ڈے کے موقع پر ایسے پر خطر افراد کو جراثیم کے جلد اور آسان جانچ کیلئے ملک میں پاپ اپ ہیپاٹائٹس سی ٹسٹنگ کلینک قائم کیے جانے چاہئیں تاکہ لوگوں کو انفیکشن کی تیز رفتار اور آسان تشخیص کے خطرے سے دوچار افراد کی مدد کی جاسکے ۔ خطرے میں پڑنے والے افراد میں وہ لوگ شامل ہیں جن کو زیادہ خطرہ والے ملک میں علاج ملا یا پیدائش کے وقت ہیپاٹائٹس سی سے متاثران کی ماں تھی۔بلوم فیلڈ نے کہا کہ ہیپاٹائٹس سی خون سے پیدا ہونے والا وائرس ہے جو جگر پر حملہ کرتا ہے اور کینسر کا سبب بن سکتا ہے ۔ نیوزی لینڈ میں ہر سال ایک ہزار کے قریب افراد ہیپاٹائٹس سی سے متاثر اورتقریباً 200 افراد ہلاک ہ

لائبریری سے لی گئی کتاب 63 سال بعد واپس کردی گئی

لندن //انگلینڈ کی ایک لائبریری سے بطور امانت پڑھنے کے لیے لی گئی کتاب کو 63 سال بعد لائبریری کو واپس کردیا گیا۔ غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق جب یہ کتاب واپس کی گئی تو اس پر ایک تحریر لکھی تھی کہ ’دیری، کبھی نہ دینے سے بہتر ہے‘۔اس کتاب کی ایک تصویر نیو کیسل لائبریریز کی جانب سے فیس بک پر شیئر کی گئی۔اس حوالے سے نیو کیسل لائبریریز کا بتانا تھا کہ یہ ڈیرل ہف کی کتاب تھی جس کا نام "ہاؤ ٹو لائی ودھ اسٹیٹسٹکس" (اعداد و شمار کے ذریعے جھوٹ کیسے بولا جائے) تھا۔مذکورہ کتاب کو بذریعہ ڈاک سینٹرل لائبریری پہنچایا گیا، اور پتہ کرنے پر معلوم ہوا کہ یہ کتاب یہاں سے 63 سال قبل بطور امانت پڑھنے کے لیے لی گئی تھی۔  

لائبریری سے لی گئی کتاب 63 سال بعد واپس کردی گئی

لندن //انگلینڈ کی ایک لائبریری سے بطور امانت پڑھنے کے لیے لی گئی کتاب کو 63 سال بعد لائبریری کو واپس کردیا گیا۔ غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق جب یہ کتاب واپس کی گئی تو اس پر ایک تحریر لکھی تھی کہ ’دیری، کبھی نہ دینے سے بہتر ہے‘۔اس کتاب کی ایک تصویر نیو کیسل لائبریریز کی جانب سے فیس بک پر شیئر کی گئی۔اس حوالے سے نیو کیسل لائبریریز کا بتانا تھا کہ یہ ڈیرل ہف کی کتاب تھی جس کا نام "ہاؤ ٹو لائی ودھ اسٹیٹسٹکس" (اعداد و شمار کے ذریعے جھوٹ کیسے بولا جائے) تھا۔مذکورہ کتاب کو بذریعہ ڈاک سینٹرل لائبریری پہنچایا گیا، اور پتہ کرنے پر معلوم ہوا کہ یہ کتاب یہاں سے 63 سال قبل بطور امانت پڑھنے کے لیے لی گئی تھی۔  

تازہ ترین