تازہ ترین

جو بائیڈن، بارک اوبامہ اور بل گیٹس کے ٹوئٹر اکاﺅنٹس ہیک

واشنگٹن // امریکہ کے ممکنہ صدارتی امیدوار جو بائیڈن، بارک اوبامہ، ارب پتی بل گیٹس اور ریپر کین ویسٹ سمیت دنیا کے ایک درجن سے نامور ترین شخصیات کے ٹوئٹر اکاﺅنٹس ہیک ہونے کی اطلاعات ملی ہیں۔ یہ واقعہ کل شام کا ہے جس میں شائع ہونے والی ٹوئیٹس میں 'بٹ کوائن' کی صورت میں عطیات مانگے گئے تھے۔ ٹوئٹر نے ایک اِی میل میں بتایا ہے کہ معاملے پر غور کیا جا رہا ہے اور جلد ہی اس پر تفصیلی بیان جاری کیا جائے گا۔ فوری طور پر معاملے کی نوعیت اور واضح اسباب کا پتہ نہیں لگ سکا ہے لیکن مسئلے کی سطح اور تناسب سے لگتا تھا کہ معاملہ کسی ایک اکاﺅنٹ یا ایک سروس تک محدود نہیں ہے۔ یہ اطلاع وائس آف امریکہ نے دی ہے۔ اس کی وجہ سے شیئر مارکیٹ کاروبار بند ہونے پر ٹوئٹر کے حصص میں تقریباً چار فی صد کی کمی واقع ہو چکی تھی۔ میڈیا کے مطابق چند ٹوئیٹس کو فوری طور پر ڈیلیٹ کیا گیا، لیکن ایسا لگ ر

کورونا کی تباہ کاریاں جاری

  نئی دہلی// عالمی وباکورونا وائرس کاقہر انتہائی تیزی سے بڑھتا جارہا ہے اور دنیا بھر میں متاثرہ افراد کی تعداد 13.3 کروڑ کو عبور کر چکی ہے جبکہ ہلاک ہونے والوں کی تعداد پانچ لاکھ 78ہزار سے زائد پہنچ چکی ہے ۔کووڈ 19 سے متاثرین کی تعداد کے معاملہ میں امریکہ دنیا بھر میں پہلے ، برازیل دوسرے اور ہندوستان تیسرے مقام پر ہے ۔امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سینٹر فار سائنس اینڈ انجینئرنگ (سی ایس ایس ای) کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق دنیا بھر میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد بڑھ کر 13323530ہوگئی ہے جبکہ اب تک 578628افراد اس جان لیوا وبا سے ہلاک ہوچکے ہیں۔کورونا وائرس کے دنیا بھر میں 50 لاکھ 29 ہزار 95 مریض اسپتالوں، قرنطینہ مراکز میں زیرِ علاج اور گھروں میں آئسولیشن میں ہیں، جن میں سے 59 ہزار 506 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 78 لاکھ 52 ہزار 461 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔امریکہ میں ا

رواں سال کے آخر تک ٹیکہ آنے کی امید :ڈاکٹر انتھونی

واشنگٹن // امریکہ کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف الرجی اینڈ انفیکشیس ڈیزیز کے ڈائریکٹر ڈاکٹر انتھونی فاؤچی نے کہا کہ انہیں اس بات کی پوری امید ہے کہ رواں سال کے آخر تک یہ واضح ہو جائے گا کہ مختلف ٹیموں کے ذریعہ کورونا وائرس کے جو ٹیکے تیار کئے جارہے ہیں وہ کتنے موثر اور محفوظ ہوں گے یا نہیں۔ ڈاکٹر فاؤچی نے امید کا اظہار کیا کہ رواں سال کے آخر تک کورونا کی ویکسین تیار کرلی جائے گی حالانکہ بڑے پیمانے پر اسے بنانے اور تقسیم کرنے میں کافی وقت لگے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ سائنسدان کورونا کی دوا اور ویکسین کی تیاریوں میں مسلسل مصروف ہیں اور امید ہے کہ رواں سال کے آخر یا 2021 کے ابتداء میں مؤثر ویکسین تیار کرلی جائے گی اور اس بات کی پختہ معلومات ہوگی کہ مختلف ٹیموں کے ذریعہ جو کورونا وائرس کے ویکیسن تیار کئے جارہے ہیں وہ کتنے موثر اور محفوظ ہوں گے یا نہیں ۔  

روس ایک اہم شراکت دار:ڈبلیو ایچ او

ماسکو//عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے دنیا میں کورونا وائرس (کووڈ ۔19) کی ویکسین تیار کرنے کے عمل میں روس کو ایک اہم شراکت دارقرار دیا ہے ۔روس کی سکینوف یونیورسٹی کے گاملویا انسٹی ٹیوٹ آف ایپیڈیمولوجی اینڈ مائکرو بایولوجی کے ذریعہ تیار کی گئي کووڈ- 19 ویکسین کے کلینیکل ٹرائل کا پہلا مرحلہ کامیابی کے ساتھ مکمل ہوگیا ہے ۔سکینوف یونیورسٹی کے انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل پیراسٹولوجی کے ڈائریکٹر الیگزینڈر لوکاشیف نے کہا کہ ویکسین کے ٹرائل سے معلوم ہوتا ہے کہ یہ انسانی صحت کے لئے محفوظ ہے اور اس کے دوسرے مرحلے کا ٹرائل جولائی کے آخر تک مکمل ہوگا۔مستقبل میں ویکسین کی تقسیم کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں ڈبلیو ایچ او کے ترجمان نے کہا کہ "عالمی ادارہ صحت ویکسین کے ٹرائل کامیابی سے مکمل ہونے کے بعد منصفانہ اور مساوی الاٹمنٹ کو یقینی بنانے کے واسطے اصول و ضوابط بنانے کے لیے اپنے تمام شراکت دارو

ہانگ کانگ کی خصوصی حیثیت ختم

واشنگٹن// امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ہانگ کانگ کو دی جانے والی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا اعلان کیا ہے ۔بدھ کے روز وائٹ ہاؤس میں نامہ نگاروں کو مطلع کرتے ہوئے ٹرمپ نے کہا ’’ہانگ کانگ کے ساتھ اب چین جیسا ہی سلوک کیا جائے گا‘‘۔مسٹر ٹرمپ نے یہ حکم ایک ایسے وقت میں جاری کیا جب امریکہ اور چین کے مابین تناؤ میں نمایاں اضافہ ہوا ہے ۔ جب سے ہانگ کانگ میں چین نے نئے متنازعہ قومی سلامتی کے قانون کو نافذ کیا ہے ، ٹرمپ انتظامیہ کا موقف چین کے تئیں تیزی سے سخت ہوتا جارہا ہے ۔ اس ماہ کے شروع میں امریکہ نے ہانگ کانگ کو دفاعی سازوسامان اور حساس ٹکنالوجی کی برآمد پر پابندی لگانے کا اعلان کیا تھا۔امریکی صدر نے ہانگ کانگ کے خود مختار قانون نامی ایک اور حکم پر بھی دستخط کردیئے ہیں۔ اس قانون کے تحت امریکہ ہانگ کانگ میں لوگوں کے حقوق پامال کرنے والے چینی عہدیداروں اور کمپنیوں کے خلاف کار

فضائی حدود پر پابندی

ہیگ// فضائی حدود پر پابندی کہ معاملے پر سعودی عرب، بحرین، مصر، متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے مقابلہ میں قطر کے موقف کی عالمی عدالت انصاف (آئی سی جے ) نے تائید کردی۔ خیال رہے کہ قطر کی ایئر لائن کو 3 سال سے اپنے چاروں پڑوسی ممالک کی فضائی حدود میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہے ۔الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق عالمی عدالت انصاف کے صدر نے کہا کہ 'بین الاقوامی سول ایوی ایشن کے فیصلے کے خلاف بحرین، مصر، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی اپیل مسترد کی جاتی ہے '۔عدالت نے کہا’’یہ معاملہ انٹرنیشنل سول ایوی ایشن آرگنائزیشن (آئی سی اے او) کے دائرہ اختیار میں آتا ہے‘‘۔خیال رہے کہ آئی سی اے او نے 2018 میں فیصلہ دیا تھا کہ فضائی خودمختاری کے معاملہ پر قطر اور دیگر فریقین کے مابین جھگڑا ختم کرنا آئی سی اے او کے دائرہ اختیار میں آتا ہے ۔دوسری جانب چاروں اتحادی ممالک نے آئی سی ا