تازہ ترین

ہیلی کاپٹر حادثہ: چیف آف ڈیفنس جنرل بپن راوت ، ان کی اہلیہ اوردیگر 13 لوگ ہلاک

تاریخ    8 دسمبر 2021 (28 : 02 PM)   
(ANI)

کشمیرعظمیٰ

 

 
چنئی//چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت سمیت فوج کے سینئر افسران کو لے جارہا ہیلی کاپٹر تملناڈو میں حادثے کا شکار ہو گیا ہے۔ مقامی انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ حادثے کی جگہ سے 13 لاشیں اب تک برآمد ہو چکی ہیں، جن میں جنرل بپن راوت اور ان کی اہلیہ بھی شامل ہیں، جبکہ ایک شدید زخمی اہلکار کو ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔
 
سی ڈی ایس راوت کی اہلیہ کا نام بھی مسافروں میں شامل ہے۔بھارتی فضائی نے واضح کیا ہے کہ جنرل بپن راﺅت ، ان کی اہلیہ،دفاعی معاون، سیکورٹی کمانڈوز اور فضائیہ کے پائلٹ سمیت کل 14 افراد سوار تھے۔ 
 
ہندوستانی فضائیہ نے حادثہ کے فوراً بعد ایک بیان میں کہا کہ سی ڈی ایس جنرل بپن راوت کو لے جا رہا ایک IAF Mi-17V5 ہیلی کاپٹر، تمل ناڈو کے کنور کے پاس آج حادثہ کا شکار ہوگیا۔ حادثہ کی وجوہات کا پتہ لگانے کے لئے جانچ کے احکامات دیئے گئے ہیں۔ 
 
تمل ناڈو میں ہیلی کاپٹر حادثے پر وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ کل کو پارلیمنٹ میں بیان دیں گے۔ پہلے یہ کہا جا رہا تھا کہ راج ناتھ سنگھ بدھ کو ہی پارلیمنٹ میں بیان دے سکتے ہیں لیکن اب ذرائع کے مطابق وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ جمعرات کو مرکزی حکومت کی جانب سے سی ڈی ایس بپن راوت اور ہیلی کاپٹر حادثے کے بارے میں پارلیمنٹ میں بیان جاری کریں گے۔
 
خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے مطابق ایم آئی سیریز کے ہیلی کاپٹر میں بپن راوت کے ساتھ ان کا کچھ عملہ اور خاندان کے افراد بھی موجود تھے۔ حادثے کی اطلاع ملتے ہی امدادی کام شروع کر دیا گیا ہے۔
 
واقعے کی تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔ یہ معلومات ہندوستانی فضائیہ نے دی ہے۔ معلومات کے مطابق، بپن راوت، مدھولیکا راوت، بریگیڈیئر ایل ایس لڈر، لیفٹیننٹ کرنل ہرجیندر سنگھ، این کے گرو سیوک سنگھ، این کے جتیندر کمار، وویک کمار، بی سائی تیجا، ہاو¿ ستپال موجود تھے۔ ہیلی کاپٹر سے دہلی سے سلور جا رہے تھے۔