شیوسینا کا اوپن ایئر جمنازیم میں ٹرینروں کی تقرری کا مطالبہ

تاریخ    7 دسمبر 2021 (00 : 01 AM)   


جموں//شیوسینا کی جموں و کشمیر یونٹ نے جموں میونسپل کارپوریشن کی طرف سے جموں شہر کے ہر وارڈ میں ٹرینر اور نگراں کی تقرری کے بغیر اوپن ایئر جمنازیا کھولنے پر سوال اٹھایا ہے اور اسے عوامی پیسے کا سراسر ضیاع قرار دیا ہے۔اس سلسلے میں پارٹی کے ریاستی یونٹ کے صدر منیش ساہنی کی قیادت میں درجنوں شیوسینکوں نے جموں میونسپل کارپوریشن آفس کے باہر زبردست احتجاج کیا۔ ساہنی نے کہا کہ بغیر ٹرینر کے اوپن جم کھولنا عوام کے پیسے کا ضیاع ہے۔ جموں میں 50 سے زیادہ جم کھولے گئے ہیں اور 25 مزید جم کھولے جا رہے ہیں۔ ساہنی نے کہا کہ عوام جاننا چاہتی ہے کہ کس کے حکم پر اور کس حکمت عملی کے تحت کروڑوں روپے کی سرمایہ کاری کی جا رہی ہے جو بدعنوانی کی علامت ہے اور اس کی تحقیقات ہونی چاہئے۔ ساہنی نے کہا کہ ٹرینر اور کیئر ٹیکر کی تقرری کے بغیر جم کا قیام عوام کے پیسے کا ضیاع ہے، جسے فوری طور پر روکا جانا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’’ہم نے اسکولوں کے بغیر اساتذہ یا ڈاکٹر کے بغیر ہیلتھ سینٹر کے بارے میں سنا تھا، لیکن اب ہم پہلی بار بغیر ٹرینرز کے جم کے بارے میں سن رہے ہیں‘‘۔منیش ساہنی نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا سے  اپیل کی کہ وہ جے ایم سی کے قائم کردہ تمام اوپن ایئر جموں کے لیے ٹرینرز اور نگراں کی تقرری کا حکم دینے کے علاوہ اس معاملے کو دیکھیں۔ دریں اثنا شیوسینکوں نے جے ایم سی کمشنر کو اس سلسلے میں ایک میمورنڈم بھی پیش کیا ۔
 

تازہ ترین