تازہ ترین

جموں وکشمیر میں چناﺅ سے قبل ریاستی درجہ کی بحالی ناگزیر: غلام نبی آزاد

تاریخ    5 دسمبر 2021 (00 : 01 AM)   


جموں//کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیراعلیٰ غلام نبی آزاد نے مرکزی حکومت پر زور دیا ہے کہ آل پارٹی میٹنگ کے دوران کئے گئے وعدوں پر فوری طورپر عملدرآمد ہونی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ سٹیٹ ہڈ کی بحالی کے بعد ہی جموں وکشمیر میں چناو کرانے کا فیصلہ لیا جانا چاہئے اورا س میں اب زیادہ دیری نہیں ہونی چاہئے۔ان باتوں کا اظہار موصوف نے رام بن میں عوامی جلسے سے خطاب کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران کیاغلام نبی آزاد نے کہا کہ ’آل پارٹی میٹنگ سے قبل بطور راجیہ سبھا لیڈر وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ ملاقات کی اور جموں وکشمیر کی صورتحال پر ا±ن سے تبادلہ خیال کیا‘۔انہوں نے کہا کہ بطور راجیہ سبھا ممبر وزیر اعظم پر زور دیا کہ جموں وکشمیر میں سٹیٹ ہڈ کی بحالی کے بعد الیکشن ہونے چاہئے۔مسٹر آزاد کے مطابق آل پارٹی میٹنگ کے دوران بھی سبھی سیاسی پارٹیوں نے سٹیٹ ہڈ کی بحالی اور چناو کا مسئلہ ا±ٹھایا اور ا±س وقت وزیر اعظم نے سیاسی پارٹیوں کے لیڈران کے ساتھ وعدہ کیا تھا کہ بہت جلد ان وعدو ں کو پورا کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ کافی عرصہ ہونے کے باوجود بھی آل پارٹی میٹنگ کے دوران کئے گئے وعدوں کو عملی جامہ نہیں پہنایا گیا ہے جو بدقسمتی ہے۔غلام نبی آزاد کا مزید کہنا تھا کہ کل جماعتی میٹنگ کے دوران سبھی سیاسی پارٹیوں کے درمیان سٹیٹ ہڈ کی بحالی پر اتفاق رائے ہوا تھا۔انہوں نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ جموں وکشمیر کو سٹیٹ ہڈ کا درجہ بحال کرنے کے بعد ہی چناو ہونے چاہئے۔ا±ن کا مزید کہنا تھا کہ حد بندی کمیشن کو بھی جلد ازجلد اپنی رپورٹ مرکز کو پیش کرنی چاہئے تاکہ چناو کیلئے راہ ہموار ہو سکے۔آزاد نے کہا کہ جموں وکشمیر کے لوگوں کو اس وقت گونا گوں مصائب و مشکلات کا سامنا ہے، بے روزگاری نے سنگین رخ اختیار کیا ہوا ہے اور اس حوالے سے مرکزی حکومت کی جانب سے کوئی قدم نہیں ا±ٹھایا جارہا ہے۔کانگریس کے سینئر لیڈر نے بتایا کہ جموں وکشمیر کے لوگوں کا دشمن غریبی اور بے روزگاری ہے جس کیلئے ہم سب کو جہاد لڑنے کی ضرورت ہے۔عمر عبدا للہ کی جانب سے دئے گئے بیان پر پوچھے گئے سوال کے جواب میں آزاد نے کہا کہ میں کسی بھی پارٹی کو اپنا حریف نہیں سمجھتا ہوں۔ 

تازہ ترین