تازہ ترین

مزید خبریں

تاریخ    29 نومبر 2021 (00 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک

نوشہرہ میں فوج نے طبی سہولیات شروع کیں 

رمیش کیسر 
نوشہرہ //آزادی کا امرت مہا اتسو کی مناسبت سے نوشہرہ میں فوج کی جانب سے عوام کیلئے طبی سہولیات شروع کی گئی ۔اس موقعہ پر فوج کی جانب سے مکینوں کو بنیادی سہولیات فراہم کرتے ہوئے کہاکہ فوج عوام کو ہر وقت میں معیاری سہولیات فراہم کرنے کیلئے تیار ہے ۔فوج کی جانب سے اس سلسلہ میں ایک موبائل میڈیکل یونٹ ٹیم کا انعقاد کیا گیا تھا جس نے گھروں میں جاکر مریضوں کو طبی معائینہ کرکے ادویات فراہم کی ۔غور طلب ہے کہ فوج کی جانب سے خطہ پیر پنچال میں کئی ایک مقامات پر طبی سہولیات فراہم کرنے کیلئے کیمپوں کا اہتمام کیا جارہا ہے ۔ڈاکٹروں نے مریضوں کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہاکہ کووڈ کو روکنے کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں تاکہ وائرس کی روکتھام کر کے لوگوں کو بچایا جائے ۔
 
 

جنگلاتی وماحولیاتی تحفظ پر بیداری پروگرام 

راجوری //فوج کی جانب سے راجوری ضلع کے پتراڑہ و دھیری رلیوٹ گائوں میں مکینوں کیلئے ’جنگلاتی وماحولیاتی تحفظ‘پر ایک بیداری پروگرام کا اہتمام کیا گیا ۔اس پروگرام میں مکینوں و فوجی آفیسران نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔سکول اور گاؤںکی ماحولیاتی ٹیم کے ارکان نے لگائے گئے پودوں اور نرسریوں کی دیکھ ریکھ کرتے ہوئے اس سلسلہ میں طلباء و مکینوں کو جنگلات کی اہمیت کے سلسلہ میں تفصیلی جانکاری فراہم کی ۔ماہرین نے ماحولیاتی تحفظ کے سلسلہ میں لوگوں کو بیدار کرتے ہوئے کہاکہ جنگلات انسانی زندگی کیلئے انتہائی اہم ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہر ایک فرد کو چاہئے کہ وہ جنگلات کے تحفظ کیلئے اہم رول ادا کرنے کیساتھ ساتھ لوگوں کو جنگلات کے فائدکے سلسلہ میں زمینی سطح پر بیدار کریں تاکہ خطہ میں آنے والے جنگلات کو زیادہ سے زیادہ بچایا جاسکے ۔
 
 

ڈی سی کا پولیس سٹیشن کے باہر انتظار کرنے کا معاملہ 

آفیسر موصوف کا انسداد انسانی سمگلنگ یونٹ کا دورہ کرنے کا ارادہ تھا؛پولیس 

سمت بھارگو 
راجوری //ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری کی جانب سے پولیس سٹیشن راجوری کے باہر کئی عرصہ تک انتظار کرنے کے معاملے کو لے کر جموں و کشمیر پولیس کی جانب سے واقعہ کے پسر منظر میں سرکاری طورپر بیان جاری کیا گیا ہے ۔ایڈیشنل ایس پی راجوری وویک شیکھر شرما کے ذریعہ جاری کردہ ایک سرکاری بیان میں، جو ہفتہ کے روز انچارج ایس ایس پی بھی تھے، یہ ذکر کیا گیا ہے کہ ڈپٹی کمشنر راجوری نے پولیس اسٹیشن میں انسانی اسمگلنگ کے انسداد کے یونٹ میں کام کاج اور سہولیات کا جائزہ لینے کیلئے  پولیس اسٹیشن کا دورہ کرنے کا ارادہ کیا اور پولیس اہلکاروں کی خیریت دریافت کی جبکہ پولیس سٹیشن پر پہنچنے کے دوران مین گیٹ اندر سے بند تھا ۔پولیس نے بتایا کہ چونکہ ضلع کے ایس ایس پی چھٹی پر تھے اور ڈی آئی جی اسٹیشن سے باہر تھیاس لئے انہوں نے ایڈیشنل ایس پی وویک شیکھر (انچارج ایس ایس پی راجوری) کو فون کیا اور معاملہ ان کے نوٹس میں لایاچونکہ ایڈیشنل ایس پی فیلڈ میں تھے اسے پہنچنے میں تقریباً 20-25 منٹ لگے اور ڈی سی کو ان کے آنے تک انتظار کرنا پڑا۔اس کے بعد افسر موصوف نے نے پولیس سٹیشن کا دورہ کیا۔ڈی سی نے اے ڈی ایم اور ایڈیشنل ایس پی کو احاطے کا چکر لگانے اور جوانوں کی فلاح و بہبود کے لئے بہترین ممکنہ اقدامات کرنے کی ہدایت دی ۔ڈی سی نے ماضی میں انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں میں پولیس کے کردار اور حال ہی میں دراندازی کرنے والے گروہ کا سراغ لگانے کیلئے ان کی مسلسل کوششوں کو بھی سراہا۔
 
 
 
 

کئی ماہ سے نصب اے ٹی ایم عوام کیلئے درد سر 

جاوید اقبال 
مینڈھر // مینڈھر قصبہ کے سنگالہ چوک میں نصب کر دہ اے ٹی ایم مشینوں کئی ماہ بعد بھی چلائی نہیں جاسکی جس کی وجہ سے ملحقہ علاقہ میں رہائش پذیر صارفین شدید مشکلات کا سامناکررہے ہیں ۔صارفین نے بتایا کہ گزشتہ کئی برسوں سے جموں وکشمیر بینک کی جانب سے مینڈھر قصبہ کے سنگالہ چوک میں بینک کی ایک شاخ کھولی گئی تھی لیکن اس کے بعد اے ٹیم ایم مشین نصب کرکے اس کو یوں ہی چھوڑ دیا گیا جس کی وجہ سے ملحقہ گلیوں و محلوں میں رہائش پذیر صارفین کو کئی طرح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔غور طلب ہے کہ مذکورہ علاقہ میں نجی ڈگر ی کالج ،آئی ٹی آئی ،2ہائر سکینڈری سکول اورکئی دیگر نجی سکول بھی موجود ہیں لیکن اس کے باوجود بھی جموں وکشمیر بینک حکام کی جانب سے نصب کردہ اے ٹی ایم کو چلایا ہی نہیں گیا ۔صارفین نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ مینڈھر قصبہ میں نصب کر دہ اے ٹی ایم کو جلدازجلد چلایا جائے تاکہ صارفین کو معیاری سہولیات مل سکیں ۔
 
 

مینڈھر سڑک حادثے میں 3زخمی 

جاوید اقبال 
مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن میں ہوئے ایک سڑک حادثے میں تین افراد زخمی ہوگئے جبکہ مقامی لوگوں نے زخمیوں کو ہسپتال منتقل کر دیا جہاں پر ان کا علاج معالجہ کیا جارہا ہے ۔سب ڈویژن کے ہرنی علاقہ میں موٹر سائیکل اور الٹو کار کے مابین ہوئے تصادم میں تین افراد کو چوٹیں آئی ۔بلاک میڈیکل آفیسر مینڈھر ڈاکٹر پرویز احمد خان نے بتایا کہ زخمیوں کی شناخت ظفر اقبال ولد محمد حسین سکنہ اڑی ،محمد حفیظ ولد معروف حسین سکنہ اڑی اور شراف حسین ولد صدیق حسین سکنہ گھانی منکوٹ کے طورپر ہوئی ہے ۔بلاک میڈیکل آفیسر نے بتایا کہ سبھی زخمیوں کو زیر علاج رکھا گیا ہے جبکہ ایک زخمی کی حالت تشویش ناک بنی ہوئی ہے ۔
 
 
 

راجوری میں انجمن اردو صحافت کی جانب سے تربیتی ورکشاپ کا انعقاد 

 ذمہ دار صحافت بہتر معاشرے کی تشکیل کیلئے اہم :یوسف جمیل 

راجوری // راجوری انجمن اردو صحافت جموں وکشمیر کی جانب سے اتوار کو ایوان ِ صحافت راجوری (پریس کلب راجوری ) میں خطہ پیر پنچال کے عامل صحافیوں کے لئے’’دور ِجدید میں صحافت کے بدلتے تقاضے ‘ ‘ کے موضوع پر ایک تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔دونشستوں پر مشتمل ورکشاپ کے دوران عالمی شہر ت یافتہ اور کہنہ مشق صحافی یوسف جمیل نے ’’صحافتی اخلاقیات اور ذمہ داریاں ‘ کے موضوع پرتفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ذمہ دار صحافت ہی ایک بہتر معاشرے کی تشکیل میں صحت مند رول ادا کرسکتی ہے۔انہوں نے اپنے تجربات اور مشاہدات کی روشنی میں عامل صحافیوں پر زورد یا کہ وہ معیاری صحافت یقینی بنانے کے لئے غیر جانبداری ،احساس ذمہ داری ،برد باری اور تحمل مزاجی کا مظاہرہ کریں اور خبروں کو اپنے قارین ،ناظرین اور سامعین تک پہنچانے کے عمل میں اپنی پسند اور ناپسند کو درکنار رکھ کر صرف حقائق بیان کرنے تک ہی اپنے رول کو محدود رکھیں۔سرکردہ صحافی ریاض مسرور نے عملی مشق کے ذریعے عامل صحافیوں کو جدید صحافت کے تقاضوں سے روشناس کرایا۔انہوں نے ڈیجیٹل صحافت کو صحافت کا مستقبل قرار دیتے ہوئے کہا کہ عامل صحافیوں کو اپنے آپ کو آج سے ہی خود کو اس کے لئے تیار کرنا چاہیے۔ریاض مسرور نے ویڈیو جرنلزم کے فارمیٹ انتہائی سلیس انداز میں بیان کرتے ہوئے معیاری صحافت کی صحت برقرار رکھنے کے پیمانے مدلل انداز میں بیان کئے۔سینئر صحافی ہارون ریشی نے ’’خبر نگاری کا صحافتی اسلوب ‘‘ کے موضوع پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اگرچہ صحافت کے بنیادی اصول تبدیل نہیں ہوتے ہیں ،تاہم بدلتے وقت کے ساتھ خبر نگاری کے تقاضے بدلتے رہتے ہیں اور ہمیں اپنے آپ کو ان تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا چاہیے ،تاکہ ہمارا صحافتی سفر جمود کا شکار نہ ہو۔ورکشاپ میں خطہ پیر پنچال اور جموں کے کم وبیش 60عامل صحافیوں نے شرکت کی۔ورکشاپ کے نظامت کے فرائض حسین محتشم نے انجام دیے جبکہ پریس کلب راجوری کی طرف سے ایڈوکیٹ تعظیم ڈار اور عمر ارشد ملک نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔انجمن کے نائب صدر عشرت حسین بٹ نے ورکشاپ کے مقصد پر تفصیلی روشنی ڈالی جبکہ تقریب کے آخر پر صدر ِ انجمن ریاض ملک نے تمام مہمانوں اور شرکاء کے علاوہ راجوری پریس کلب شکریہ ادا کرتے ہوئے اعلان کیا کہ جنوری میں انجمن تنظیمی انتخابات سے قبل خطہ چناب کے لئے بٹوت رام بن میں تربیتی ورکشاپ منعقد کرے گی۔ شرکاء کو انجمن اردو صحافت جموں وکشمیرکی جانب سے سندِ شرکت سے نوازا گیا۔
 
 
 

منجا کوٹ کی اکثر رابطہ سڑکیں بدحالی کا شکار 

راجوری //تحصیل منجا کوٹ کے مختلف دیہات میں رابطہ سڑکیں کئی برسوں سے مکمل نہیں ہو سکی جس کی وجہ سے مکینوں کو دوران آمد ورفت شدید مشکلات کا سا مناکرناپڑرہا ہے ۔مقامی لوگوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ کئی محکموں کی جانب سے تعمیرات کو مکمل ہی نہیں کیاجارہا ہے جس کی وجہ سے جہاں سڑکوں کے قریب آباد لوگوں کی زارعی اراضی کو نقصان پہنچ رہا ہے وہائیں رہائشی مکانات بھی تباہ ہو رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ کئی ٹرانسپورٹروں نے قرض لے کر گاڑیاں لی ہوئی ہیں لیکن رابطہ سڑکوں کی خراب حالت کی وجہ سے مذکورہ گاڑیاں بھی تباہ ہو رہی ہیں ۔مکینوں نے بتایا کہ دھیری رلیوٹ تا کوٹلی کالابن سڑک کیساتھ ساتھ بھمبر گلی تا منگل ناڑ رابطہ سڑک گزشتہ کئی عرصہ سے زیر تعمیر ہیں ۔
 
 

ساتھرہ میں ای شرم پورٹل پر رجسٹریشن کیلئے بیداری کیمپ کا انعقاد 

حسین محتشم
پونچھ// سرحدی ضلع پونچھ کے بلاک ساتھرہ میں ضلع انتظامیہ کے زیر اہتمام غیر منظم مزدوروں کی رجسٹریشن کیلئے ایک میگا آگاہی اور رجسٹریشن کیمپ کا انعقاد کیا گیا، جس کی صدارت ڈی ڈی سی کی چیئرمین تعظیم اختر نے کی۔ اس موقع پراضافی ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ عبدالستار مہمان خصوصی تھے۔ اس پروگرام کا مقصد کارکنوں کے درمیان ای شرم پورٹل پر رجسٹریشن کے بارے میں معلومات فراہم کرناتھا۔ اسسٹنٹ لیبر کمشنر پونچھ عابد حسین شاہ نے شرکاء کو مطلع کرتے ہوئے ای شرم پورٹل پر رجسٹریشن کے عمل اور مختلف فوائد کے بارے میں تفصیلات بتائیں۔ انہوں نے کہا کہ ای شرم روم پورٹل پر رجسٹریشن کیلئے آدھار تفصیلات فعال بینک اکاؤنٹ اور موبائل نمبرکی ضرورت ہوگی۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ سماجی تحفظ کی مختلف سکیموں کے تحت فوائد حاصل کرنے کیلئے زیادہ سے زیادہ تعداد میں اندراج کریں۔ بیداری رجسٹریشن کیمپ میں بلاک ساتھرا اور ملحقہ علاقہ کے لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور ای شرم پر اپنا رجسٹریشن کرایا اور دور دراز کے علاقوں میں اس طرح کے بیداری کیمپ کے انعقاد پر انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے اضافی ضلع ترقیاتی کمشنر عبدالستار نے شرکاء کو بتایا کہ یہ غیر منظم مزدوروں کا پہلا قومی ڈیٹا بیس ہے جو وزارت محنت و روزگار کی طرف سے بنایا گیا ہے جس میں غیر منظم مزدوروں بشمول مہاجر مزدوروں، تعمیراتی کارکنوں، گھریلو ملازموں کو رجسٹر کی جاتی ہے، آشا اور آنگن واڑی کارکنان، اسٹریٹ فروش، رکشہ چلانے والے، کسان، زرعی مزدور، مویشی پالنے والے کارکن، حجام، بْنکر، بڑھئی، اینٹوں کے بھٹے، کان کے کارکن، آرا مل کارکن، سبزی اور پھل فروش، اخبار فروش، کار ڈرائیور، گھریلو ملازم اور اس طرح کے دیگر ورکرز کو سرکاری سکیموں کا فائدہ پہنچانے کیلئے ہی یہ پروگرام چلائے جاتے ہیں۔ انھوں نے متعلقہ افسران کو یہ بھی ہدایت دی کہ وہ دور دراز کے علاقوں میں گھر گھر جا کر مستحقین کو ای شرم پر رجسٹر کریں۔ ڈی ڈی سی چیئرپرسن تعظیم اختر نے عوام کو سرکاری اسکیموں اور روزی روٹی کے زیادہ سے زیادہ فوائد حاصل کرنے کی اپیل کی۔ انہوں نے متعلقہ محکموں سے تمام پنچایتوں میں اس طرح کے بیداری کیمپ کا انعقاد کرنے کو بھی کہا۔ انہوں نے پنچوں اور سرپنچوں سے مزید کہا کہ وہ گھر گھر جاکر لوگوں کو اسکیموں کے بارے میں آگاہ کریں تاکہ وہ سرکاری اسکیموں کا فائدہ حاصل کرسکیں۔ دریں اثنا، مقامی لوگوں نے اپنے اپنے علاقوں کے مطالبات اٹھائے جن میں میڈیکیئر کی سہولت، پانی اور روشنی کی بلاتعطل فراہمی، اور دیگر مخصوص مسائل بشمول ساتھرا کے لیے کمیونٹی ہال، فتح پور سے کینو تک پل، معذور افراد کی پنشن میں اضافہ، ندی کے کنارے پر حفاظتی دیوار۔ بلاک ستھرا، ہائی اسکول ستھرا کی اپ گریڈیشن اور دیگر ترقیاتی مسائل کو اٹھایا گیا۔ اس موقع پر موجود تمام لائن ڈپارٹمنٹس کے افسران/ اہلکاروں نے مقامی لوگوں کے مطالبات اور شکایات کو نوٹ کیا جس کا مقصد کم سے کم وقت میں شکایات کے ازالے کو یقینی بنانا ہے۔