سنہ بنجر پلوامہ میں بجلی کی عدم دستیابی پر تشویش

تاریخ    28 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   


سید اعجاز
پلوامہ/ جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ میںکے دور افتادہ علاقے سنہ بنجر میں ایک گرام سبھا منعقد ہوئی ہے جس میں مقامی لوگوں کی بڑی تعداد گائوں کی تعمیر و ترقی کے حوالے سے منصوبے مرتب کئے ہیں ۔اس دوران مقامی سرپنچ نے بتایاکہ یہاں22محکموں کو اس حوالے سے مطلع کیا گیا تھا تاہم یہاں کل12محکوں کے ملازمین آئے تھے ۔انہوں نے بتایا اکثر ملازمین اور سربراہان ان پرواگراموں میں شمولیت نہیں کر تے ہیں جس کی وجہ سے ان پروگراموں کو منعقد کرنے کا مقصد ہی فوت ہوا ہے ۔حلقے کے سرپنچ ،جو ضلع پنچ سرنچ ایسو سی ایشن کے ضلع صدر ہے، نے کہاکہ علاقے میں بجلی کا کوئی انتظام نہیں ہے جس کی وجہ سے یہاں لوگوں کو طرح طرح کی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مقامی لوگوں نے آج تنگ آکر علاقے میں احتجاج کیا اوردونوں مسائل کے حوالے سے ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ سے مداخلت کرنے کی اپیل کی ۔ 
 
 

شانگس میں برقی رو کی آنکھ مچولی کیخلاف احتجاج

 سر ینگر / /شانگس اننت ناگ میں بجلی کی آنکھ مچولی کے خلاف لوگوںنے احتجاج کیا۔ لوگوںنے جمع ہوکرشانگس میں احتجاج کیا اور دھرنادیا۔ احتجاجی مظاہرین کاالزام ہے کہ علاقہ میں بار بار بجلی کی کٹوتی کی جارہی ہے جس سے صارفین کو سخت مشکلات کا سامنا کرناپڑرہاہے۔ مظاہرین نے کہاکہ متعدد بار متعلقہ محکمہ کو برقی رو کی آنکھ مچولی کا معاملہ نوٹس میں لایا گیا تاہم کوئی مثبت کارروائی نہیں کی گئی۔ مظاہرین نے کہاکہ متعلقہ محکمہ کی غفلت شعاری کے سبب وہ سردی میں سڑکوں پر نکلنے کیلئے مجبور ہوگئے ہیں۔ مظاہرین نے الزام عائد کیاکہ صارفین کو شیڈول کے مطابق برقی رو فراہم نہیں کی جارہی ہے۔ مظاہرین نے کہا کہ بجلی کی عدم دستیابی سے طلاب کوپڑھنے میں پریشانی ہورہی ہے۔ مظاہرین پرامن طور پر منتشر ہو گئے اور سڑک پر ٹریفک کی آمدورفت بھی بحال ہو گئی۔
 
 
 

 امرگڑھ سوپور گرڈاسٹیشن کی صلاحیت بڑھانا ناگزیر: ارشاد کار

بجلی کی ابتر صورتحال سے سوپور اور نواحی علاقوں میں صارفین برہم 

سرینگر//نیشنل کانفرنس لیڈر ارشاد رسول کار نے سوپور اور نواحی علاقوںمیں بجلی کی ابتر صورتحال پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے امرگڑھ پاور گرڈ سٹیشن کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کی مانگ کی ہے۔ ارشاد کار کاکہنا ہے کہ بجلی کی تقسیم کاری وترسیلی نظام میں موجودخامیوں کی وجہ سے نہ صرف لاکھوں صارفین بلکہ سوپور اسپتال کے منتظمین کوبھی مشکلات درپیش ہیں ۔جے کے این ایس کے مطابق ایک بیان میںارشاد کار نے کہاکہ امرگڑھ سوپورمیں قائم پائورگرڈ اسٹیشن کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کیلئے یہاں 50 ایم وی اے ٹرانسفارمر کی تنصیب عمل میں لاناتھی اورا س کومنظوری بھی دی گئی لیکن نامعلوم وجوہات کی بناء پرآج تک ٹرانسفارمر نصب نہیں کیاگیا۔ انہوںنے کہاکہ امرگڑھ سوپور پائور گرڈاسٹیشن کی صلاحیت میں اضافہ کئے بغیر شمالی کشمیر بشمول سوپور اوراسکے نواحی علاقوںمیں جاری بجلی کی ابتر صورتحال میں کوئی بہتری نہیں آئے گی ۔انہوںنے کہاکہ سوپور اورشمالی کشمیر کے دوسرے علاقوںمیں بجلی کی آنکھ مچولی ،کم وولٹیج ،گھنٹوں تک بجلی کے غائب رہنے اوراضافی بجلی کٹوتی کی بنیادی وجہ یہی ہے کہ گرڈ اسٹیشن امرگڑھ سوپور کی صلاحیت کوبڑھانے کی طرف آج تک کوئی توجہ نہیں دی گئی ۔ارشاد کار نے سوپور اوراسکے نواحی علاقوںمیں بجلی کی عدم دستیابی ،آنکھ مچولی اورغیراعلانیہ کٹوتی شیڈول کوصارفین کے حقوق کی صریحاًخلاف ورزی سے تعبیر کرتے ہوئے کہاکہ صدیق کالونی سوپورتک 33کے وی لائن بچھانامقصود تھی لیکن آج تک یہ ترسیلی لائن بھی نہیں بچھائی گئی جس کا خمیازہ عوام کے ساتھ ساتھ ضلع ہسپتال سوپور کو بھی اٹھانا پڑرہاہے۔انہوںنے محکمہ بجلی کے اعلیٰ انجینئروں سے مطالبہ کیاکہ وہ بجلی کے ترسیلی نظام میں موجود خامیوں اورکمزوریوں کودورکرنے کی جانب فوری توجہ مرکوز کریں ۔ انہوںنے کہاکہ بجلی کے ترسیلی وتقسیم کاری نظام کوبہتر بنانے کیلئے کئی مرکزی اسکیموںکے تحت کرو ڑوں روپے واگزار کئے جاتے ہیں لیکن ان رقومات کوتصرف میں نہیں لایاگیا ہے ،جسکے نتیجے میں پورے شمالی کشمیر بشمول سوپورمیں بجلی کاترسیلی نظام عملاًبے کار ہوکررہ گیاہے ۔
 

تازہ ترین