تازہ ترین

نستہ چھن گلی پر ٹنل کی تعمیرکو ہری جھنڈی

مارچ میں ڈی پی آر تیار ہوگا،1300کروڑ روپے مختص

تاریخ    26 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   
(File Photo)

اشفاق سعید
سرینگر //مرکزی سرکار نے 12ہزار فٹ بلندی پر واقع نستہ چھن گلی پر 6.5کلو میٹر ٹنل کی تعمیر کو ہری جھنڈی دیدی ہے ۔ مارچ 2022میں اسکے ڈی پی آر کو مکمل کر کے 1300کروڑ روپے کی لاگت سے ٹنل تعمیر ہو گا ۔مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ نتن گڈکری نے جموں وکشمیر کے دورے کے دوران ایل جی منوج سہنا کی موجودگی میں یہ ا علان کیا۔انہوں نے کہا کہ یہ مطالبہ کافی پرانا ہے، اس لئے سرکار نے 1300کروڑ روپے مختص رکھے ہیں اور اس کا ڈی پی آر مارچ 2022میں مکمل کیا جائے گا ۔اس فیصلے کے بعد پورے کرناہ میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے اور لوگوں کو بھنگڑا کرتے ہوئے دیکھا  ہے۔ ٹنل کی تعمیر سے کرناہ اور کپوارہ کے درمیان سفر تین گھنٹے کے بجائے ڈیڑھ گھنٹہ رہ جائے گا ۔ برفباری کا موسم شروع ہوتے ہی کرناہ اور کیرن کے علاقے وادی کیساتھ کٹ کر رہ جاتے ہیں۔ حتیٰ کہ درد زہ میں مبتلا خواتین کو کئی کئی کلو میٹر پرانے زمانے کی طرح چارپائیوں کے ذریعہ کپوارہ پہنچایا جاتا ہے۔کرناہ کپوارہ شاہراہ پر واقع نستہ چھن گلی 12ہزار فٹ کی بلندی پر ہے اور سرما کے موسم میں اس درے پر 12سے15فٹ برف جمع ہو جاتی ہے جس کے نتیجے میں علاقے کے لوگ سرما کے دوران پوری دنیا سے کٹ کر رہ جاتے ہیں۔نستہ چھن گلی،جسے سادھنا ٹاپ بھی کہا جاتا ہے ، کے خطرناک درے سے گذرنے کے دوران ابھی تک کرناہ کے قریب 300افراد برفانی تودوںاور سڑک حادثات کی زد میں آکر لقمہ اجل بن چکے ہیں اور ہر سال یہ شاہراہ کرناہ کے لوگوں سے قربانی مانگتی ہے۔مقامی لوگوں کا مطالبہ 20برسوں سے تھا کہ شاہراہ پر ٹنل تعمیر کیا جائے کیونکہ اس کی تعمیر سے یہاں نہ صرف تعمیر وترقی ہو گی بلکہ پورے سال لوگوں کی آمد ورفت بھی آسان ہو گی۔ ادھر کرناہ ٹنل کوڈی نیشن کمیٹی نے مرکزی سرکار کا  شکریہ ادا کیا ہے ۔کمیٹی کے جنرل سکریٹری محمد آصف میرنے کہا کہ ایسے وعدے پہلے بھی کئے گئے پھر ان پر عمل نہیں کیا گیا۔ لہٰذا مرکزی سرکار کو اس حوالے سے ایک آڈر بھی جاری کر دینا چاہئے ۔یاد رہے کہ  بارڈر روڑ آرگنائنزیشن نے سال2019میں ایک مفصل پروجیکٹ رپورٹ تیار کی تھی لیکن اس پر کوئی بھی عمل درآمد نہیں ہو سکا ۔سابق ایم ایل اے کرناہ راجہ منظور نے اعلان کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم نے کئی بار سابق سرکار میں رہ کر مرکز کو اس ٹنل کے حوالے سے خط لکھے اور ٹنل کی افادیت بتائی۔انہوں نے کہا کہ یو ٹی بننے سے پہلے بھی ہمارا مطالبہ یہی تھا اور یوٹی کے بعد بھی ہم اس کی  تعمیر کی مانگ کر رہے ہیں ۔کرناہ سیول سوسائٹی نے بھی اس علان پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔
 

تازہ ترین