اشموجی کولگام میں مسلح معرکہ آرائی | ملی ٹینٹکمانڈر جاں بحق

۔3روز کے دوران ضلع میں تیسرا آپریشن،سکولی بچوں سمیت60افراد کو نکالا گیا

تاریخ    21 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   


خالد جاوید
کولگام //جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں دو روز بعدایک اور مسلح تصادم آرائی ہوئی ، جس میںایک عسکریت پسند جاں بحق ہوا۔مذکورہ گائوں میں تلاشی کارروائی جاری ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ مذکورہ جنگجو پچھلے 4سال سے سرگرم تھا اور ضلع کمانڈر کے عہدے پر تھا۔ پولیس نے بتایاکہ جھڑپ کی جگہ سے سکولی بچوں سمیت60افراد کو بحفاظت نکالا گیا ۔پچھلے 3روز کے دوران ضلع کولگام میں یہ تیسری معرکہ آرائی ہے جس میں ابتک 6جنگجوئوں کی ہلاکت ہوئی ہے جس میں کئی اعلیٰ کمانڈر شامل ہیں۔پولیس بیان کے مطابق’’سنیچردوپہر بعد تقریبا ً ایک بجے اشموجی کولگام نامی گائوں میںشدت پسندوں کی موجودگی کے بارے میں مصدقہ اطلاعات کی بنیاد پر، کولگام پولیس، 9آر آراور  18بٹالین سی آر پی ایف نے محاصرے اور تلاشی کی کارروائی شروع کی۔ پولیس بیان میں کہا گیا ہے’’آپریشن کے دوران ملی ٹینٹ کی موجودگی کا پتہ چلنے کے بعد شہریوں کو نکالنے کی کوشش کی گئی اور ملی ٹینٹ کو پیغام دیا گیا کہ وہ ہتھیار ڈال دے تاہم اس نے انکار کر دیا اور سیکورٹی فورسز پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی جس پر جوابی کارروائی کی گئی جس کے نتیجے میں تصادم شروع ہو گیا۔اس کے بعد ہونے والے انکائونٹر میں ایک جنگجومدثر احمد وگے ولد محمد جمال وگے ساکن مالون دیوسرمارا گیا۔ وہ (A+)درجہ کا جنگجو تھا اور اس وقت کالعدم حزب المجاہدین کا ڈسٹرکٹ کمانڈرتھا۔ وہ 2018 سے سرگرم تھا‘‘۔پولیس کے مطابق جائے وقوعہ سے اسلحہ اور گولہ بارود سمیت مجرمانہ مواد برآمد کیا گیا، برآمد کیے گئے تمام مواد کو مزید تفتیش اور دہشت گردی کے دیگر جرائم میں ملوث ہونے کی تحقیقات کے لیے تحویل میں لے لیا گیا ہے۔اس سلسلے میں، قانون کی متعلقہ دفعات کے تحت ایف آئی آر نمبر 242/2021 کے ساتھ پولیس تھانہ کولگام میں مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کیا گیا ہے۔لوگوں سے درخواست کی جاتی ہے کہ وہ انکانٹر زون کے اندر جانے سے گریز کریں کیونکہ ایسا علاقہ خطرناک ثابت ہوسکتا ہے اور اس علاقے کو مکمل طور پر  صاف کرنے تک پولیس کے ساتھ تعاون کریں۔ادھرپولیس ترجمان نے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پرکہا کہ جنگجو مخالف آپریشن جاری ہے اور اس دوران کولگام پولیس نے جھڑپ کی جگہ سے سکولی بچوں سمیت60افراد کو بحفاظت نکالا گیا جہاں انکوئونٹر اور تلاشی آپریشن جاری ہے۔خیال رہے علاقے میں دو روز قبل بھی دو الگ الگ مقامات پر تصادم آرائیوں میں ایک کمانڈر سمیت5جنگجو مارے گئے ۔ 
 
 

پلوامہ میں 5نوجوان گرفتار

نیوز ڈیسک
پلوامہ//پولیس نے اس بات کا دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے پلوامہ ضلع میں جنگجوئوں کے ایک نیٹ ورک کو بے نقاب کرکے اس میں کام کرنے والے 5نوجوانوں کو حراست میں لیا۔ پولیس نے کہا ہے کہ شوکت اسلام ، اعجاز احمد ، اعجاز گلزار، منظور احمد اور نصیر احمد ساکنان لیلہ ہار کاکہ پورہ کو گرفتار کیا گیا اور اُن کے خلاف کیس زیر نمبر 139/2021  درج کیا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ یہ پانچوں افراد ملی ٹینٹوں کے اعانت کار تھے جو کئی مقامات پر گرینیڈ پھینکنے میں بھی ملوث پائے گئے ہیں۔ ان کی تحویل سے اسلحہ برآمد کیا گیا۔ 
 

تازہ ترین