جموں خطے میں ڈینگو کے کیس 441 تک پہنچ گئے

ایس ایم جی ایس ہسپتال کے امراض اطفال وارڈ میں 54 بستروں کامزید انتظام

تاریخ    22 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


سید امجد شاہ
جموں//جموں خطے میں ڈینگو کے کیس بڑھ کر 441 ہو گئے ہیں جبکہ شہر کی رہائشی کالونیوں میں 271 مثبت کیس درج ہوئے ہیں جس کے بعد ضلع کٹھوعہ کا نمبرآتا ہے۔ریاستی ملیرالوجسٹ ڈاکٹر بیلو شرما نے بتایا کہ "آج سانبہ اور راجوری اضلاع سے 7 ڈینگو مثبت کیس رپورٹ ہوئے ہیں ، یعنی سانبہ سے 6 اور ضلع راجوری سے ایک"۔ڈاکٹر شرما نے کہا کہ اب تک ان کے جموں سے 441 اور کٹھوعہ ضلع سے 84 ڈینگو کے کیس ہیں۔چونکہ صورتحال ڈینگو کے بڑھتے ہوئے کیسوں کے ساتھ خاص طور پر شہر کی رہائشی کالونیوں کے اندر سے تشویشناک ہو چکی ہے ، صحت کے حکام نے ایس ایم جی ایس ہسپتال ، شالامار میں ڈینگو کے مریضوں کے لیے خصوصی طور پر 54 بستروں پر مشتمل وارڈ قائم کیا ہے۔یہ انتظام شالامار کے ایس ایم جی ایس ہسپتال کے پیڈیاٹرک وارڈ میں کیا گیا ہے اور اس کا پرنسپل جی ایم سی جموں ڈاکٹر ششی سودھن نے جائزہ لیا۔ڈاکٹر ششی سودھن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا’’ایس ایم جی ایس ہسپتال میں ڈینگو کے 197 مشتبہ کیس داخل کیے گئے ہیں اور ان میں سے 45 ڈینگو کے لیے مثبت پائے گئے ہیں۔ ان کا یہاں علاج کیا جا رہا ہے "۔ڈینگو کیسوں میں اضافے کو تسلیم کرتے ہوئے جی ایم سی اور ہسپتال کے پرنسپل نے کہا کہ ڈینگو کے کیس بڑھ رہے ہیں جس کے بعد انہوں نے ایس ایم جی ایس ہسپتال کے پیڈیاٹرک وارڈ میں 54 بستروں کا انتظام کیا ہے۔میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ایس ایم جی ایس ہسپتال ڈاکٹر دارا سنگھ نے کہا کہ گزشتہ ایک ماہ سے ڈینگو کے کیسوں میں اضافہ ہوا ہے۔ڈینگو کے 197 مشتبہ کیس (بخار ہے) داخل کیے گئے ہیں۔ ان 197 مشتبہ کیسوں میں سے 62 مریضوں میں ڈینگو کی تصدیق ہوئی ہے۔تاہم انہوں نے کہا کہ ان میں سے 25 کو ڈینگوسے صحت یاب ہونے کے بعد ڈسچارج کر دیا گیا ہے اور باقی اب بھی زیر علاج ہیں۔انہوںنے کہا ’’ہم نے ایس ایم جی ایس ہسپتال میں ڈینگو ٹیسٹنگ کٹس بھی لائے ہیں۔ یہ کٹس 20 منٹ کے اندر ٹیسٹ رپورٹس دیتی ہیں۔ اس سے پہلے ہمیں جی ایم سی جموں کو نمونے بھیجنے تھے اور ٹیسٹوں کی تعداد میں اضافے کی وجہ سے ایس ایم جی ایس میں داخل مریضوں کے لیے یہ ایک وقت طلب عمل تھا‘‘۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے ہسپتال کے بلڈ بینک میں خون کے مناسب انتظامات بھی کئے ہیں۔قابل ذکر ہے کہ ایک مہینے میں ڈینگو کی وجہ سے ایک خاتون سمیت دو افراد اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جن میںسندربنی راجوری کا مرد (اے ٹی ایم گارڈ) اور ضلع ادھم پور کی خاتون شامل ہے۔

تازہ ترین