سرینگر میں خواتین اور بچیوں کی تلاشی لینے پر محبوبہ برہم

تاریخ    22 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


 سری نگر//گزشتہ کئی روز سے سرینگر میں خواتین فورسز اہلکاروں کی جانب سے لڑکیوں اور بچیوں کی تلاشی لینے کے تصاویر وائرل ہونے کے بعد پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ کشمیر میں اب خواتین بلکہ بچوں پر بھی شک کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ سب بی جے پی کی پالیسیوں کا نتیجہ ہے جن سے ہم دہائیاں پیچھے چلے گئے ہیں۔ کے این ایس کے مطابق جمعرات کو سوشل میڈیا پر گردش کر رہی اس تصویر کے رد عمل میں اپنے ایک ٹویٹ میں محبوبہ مفتی نے کہا جس میں سی آر پی ایف کی خواتین ونگ کی اہلکار ایک نو دس سالہ بچی کے بیگ کی تلاشی کرتی ہیں۔محبوبہ مفتی کا ٹویٹ میں مزید کہا کہ ’یہ کشمیر کی موجودہ صورتحال کا لب لباب ہے جہاں اب خواتین یہاں تک بچوں کو بھی شک کی نظروں سے دیکھا جا رہا ہے، جموں و کشمیر کو اس ڈگر پر بی جے پی نے لایا ہے ان کی پالیسوں نے ہمیں دہائیاں پیچھے دھکیل دیا ہے‘۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ وادی کشمیر میں حالیہ شہری ہلاکتوں کے بعد شہر سرینگر میں سیکورٹی ہائی الرٹ کیا گیا ہے جہاں سرینگر کے قلب لالچوک میں خواتین سی آر پی ایف اہلکاروں کو خواتین راہگیروں کی تلاشی کا کام سونپا گیا ہے۔ اس دوران بچیوں کی کتابوں تک کی تلاشیاں لی جا رہی ہے جس پر سماج کے مختلف حلقوں نے ناراضگی کا اظہار کیا ہے جبکہ مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارموں پر ان تصاویر کو اپلوڈ کیا گیا ہے ۔ 
 

تازہ ترین