بھٹہ دھوریاں میں فائرنگ رُک گئی، رفیع آباد میں بارودی مواد ناکارہ

چھانہ پورہ میں گولیوں کا زوردار تبادلہ

تاریخ    22 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی +سمت بھارگو+فیاض بخاری
 سرینگر + بارہمولہ +راجوری//چھانہ پورہ سرینگر میں جمعرات شب سیکورٹی فورسز اور ملی ٹینٹوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا جبکہ رفیع آباد میں فورسز نے بارودی مواد ناکارہ بنا کر ایک بہت بڑے حادثے کو ٹال دیا۔اس دوران بھٹہ دھوریاں مینڈھر میں 8روز بعد فائرنگ کا تبادلہ رک گیا ۔سیکورٹی فورسز کو روز لین کالونی چھانہ پورہ میں جنگجوئوں کی موجودگی کا علم ہوا جس کے فوراً بعد یہاں محاصرہ کرنے کی کوشش کی گئی۔مقامی لوگوں کے مطابق قریب 8بجے فورسز اہلکار جونہی کالونی میں گھس گئے تو یہاں فائرنگ کا تبادلہ ہوا جو کچھ دیر تک جاری رہا۔ پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ یہاں تین جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع تھی۔ تاہم فائرنگ کے تبادلے کے بعد خاموشی چھا گئی ، جس کے بعد تلاشی کارروائی کا آغاز کیا گیا۔رات دیر گئے تک علاقہ مکمل محاصرے میں تھا۔ادھرپونچھ کے مینڈھر سب ڈویژن میں بھٹہ دھوریاں کے نار جنگلاتی علاقے میں جاری عسکریت پسندوں کیخلاف آپریشن جمعرات مسلسل آٹھویں دن میں داخل ہوا۔ تاہم گزشتہ 36 گھنٹوں سے مقابلے کی جگہ سے کوئی فائرنگ کی آواز نہیں آئیں۔اس علاقے میں گزشتہ ہفتے جمعرات کو انکائونٹر شروع ہوا تھا جس میں اب تک چار فوجی جوان اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔جمعرات کو آٹھویں دن بھی نار اور بھاٹا دھوریاں کا پورا علاقہ محاصرے میں رہا اور فورسز نے علاقے میں تلاشی آپریشن جاری رکھا۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ انکائونٹر کے مقام  پر جنگلاتی علاقے سے بدھ کی شب 10بجے سے جمعرات کی شب تک36 گھنٹوں سے کوئی تازہ گولیوں کی آواز نہیں سنی گئی ۔ تاہم جنگلاتی علاقے میں صرف آگ کے شعلے اور کئی جگہوں سے دھواںنظر آیا۔ادھر 32 آر آر نے جمعرات کی صبح  سید پورہ رفیع آباد میں بارہمولہ ہند وارہ شاہراہ پر ایک پسنجر شیڈ کیساتھ نصب کیا گیا دھماکہ خیز مواد برآمد کیا ۔ جس کے بعد فوری طور بم ڈسپوزل اسکوا ڈ طلب کیا گیا جنہوں نے بارودی مواد کو ناکارہ بنایا۔ الرٹ سیکورٹی فورسز کی بروقت کارروائی نے ایک بڑے خطرے کو ٹالا ، کیونکہ پسنجر شیڈ کے ارد گرد اکثر سیکورٹی فورسز موجود رہتی ہے ۔
 

تازہ ترین