تازہ ترین

بھاٹا دھوریاں انکاونٹر، چھٹے روز میں فائرنگ و شلنگ

مقامی لوگوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایات

تاریخ    20 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


سمیت بھارگو
راجوری//منگل کو مسلسل چھٹے دن ، مینڈھر سب ڈویژن کے بھاٹا دھوریاں گا ئوں کے نزدیک گھنے جنگلات میں انکانٹر جاری رہا ۔جہاں سے شدید دھماکے سنے گئے جبکہ پولیس نے لوگوں سے دروازوں کے اندر رہنے کی اپیل کی اور اس حوالے سے پبلک ایڈرس سسٹم سے کیا جاتا رہا۔بھاٹا دھوریان اور سنگیوٹ علاقوں میں رہنے والے لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے گھروں سے باہر آنے سے گریز کریں اور اپنے گھروں کے اندر رہیں۔منگل کی شام نار اور بھاٹا دھوریاں کی مقامی مساجد سے اعلانات کیے گئے جب پولیس نے مذہبی مبلغین اور رہنما ئوں سے رابطہ کیا۔ان اعلانات کے دوران ، مذہبی مبلغین کو لوگوں سے گھروں سے باہر آنے سے بچنے اور بھاٹا دھوریاں اور نار کے جنگلاتی علاقے میں منتقل نہ ہونے کو کہاگیا۔تمام دیہاتیوں سے درخواست کی جارہی تھی کہ وہ اپنے گھروں سے باہر نہ نکلیں اور  نار بھاٹا جنگلات کی طرف نہ جائیں۔ان سے یہ بھی کہا گیا کہ وہ اپنے مویشیوں کو شیڈ وںکے اندر رکھیں اور جانوروں کو چرانے کے لیے جنگل کی طرف نہ دھکیلیں۔اس علاقے میں جمعرات کی شام انکانٹر شروع ہوا تھا جس میں ایک جونیئر کمیشنڈ آفیسر سمیت فوج کے چار جوان اب تک جانیں گنوا چکے ہیں۔عہدیداروں نے بتایا کہ منگل کو سنجیوٹ ، بھاٹا دھوریان اور نار کے علاقے سخت محاصرے میں رہے۔منگل کو پورے دن کے لیے ، وقفے وقفے سے فائرنگ جاری رہی اور یہاں تک کہ بھاری دھماکے بھی سنے گئے جو کہ بھاٹا دھوریان کی پوری پہاڑی پٹی کو ہلاتے رہے۔حکام نے کہا.6 ویں دن شاہراہ پر گاڑیوں کی نقل و حرکت نہیں رہی۔منگل کو مسلسل چھٹے دن کوئی بھی ٹریفک بھمبر گلی سے جڑان والی گلی کے درمیان ہائی وے پر ٹریفک بند رہا۔جمعرات کی شام عسکریت پسندوں اور فورسز کے درمیان جھڑپ کے بعد بند کر دیا گیا تھا جس میں اب تک ایک جے سی او سمیت فوج کے چار اہلکار جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔جڑان والی گلی سے بھمبر گلی کے درمیان واقع بیشتر دکانیں بھی ٹریفک کی بندش کی وجہ سے بند پڑی ہیں۔