تازہ ترین

جموں کشمیر میں سرمایہ کاری کیلئے دبئی اور حکومت کے درمیان مفاہمت نامے پر دستخط

مرکزی وزیر پیوش گوئل، لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا اور دبئی پی ڈی ورلڈ چیئر مین سلطان احمد بن سلیم تقریب میں موجود

تاریخ    19 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//ایک تاریخی تقریب میں دبئی سرکاراور حکومت جموں وکشمیر نے ایک مفاہمت کی یاداشت پر دستخط کئے جس کا مقصد صنعتی شعبے اور مختلف کاروباری اداروں کو ترقی دینا ہے ۔ اس موقع پر مرکزی وزیر تجارت و صنعت ، امور صارفین ، خوراک اور عوامی تقسیم کاری اور ٹیکسٹائل  پیوش گوئل، جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا اور ڈی پی ورلڈ کے چیئرمین سلطان احمد بن سلیم نے میڈیا سے خطاب کیا ۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پیوش گوئل نے کہا کہ دبئی حکومت کے ساتھ مفاہمت نامہ پر دستخط کے ساتھ دُنیا نے اس رفتار کو پہچاننا شروع کر دیا ہے جس کے ساتھ جموں و کشمیر ترقی کی راہ پر گامزن ہے ۔ یہ مفاہمت نامہ پوری دُنیا کو ایک مضبوط اشارہ دیتا ہے کہ جس طرح ہندوستان عالمی طاقت میں تبدیل ہو رہا ہے جموں و کشمیر اس میں بھی اہم کردار ادا کر رہا ہے ۔ یہ مفاہمت نامہ جموں و کشمیر میں تیزی سے صنعتی ترقی کی طرف ایک اہم پیش رفت ہے ۔
یہ ایک سنگ میل ہے جس کے بعد پوری دُنیا سے سرمایہ کاری کی جائے گی اور یہ ایک بڑا ترقیاتی قدم ہے ۔ دبئی سے مختلف اداروں نے سرمایہ کاری میں گہری دلچسپی ظاہر کی ہے ۔ تمام محاذوں پر ترقی کی خواہش ہے اور ہم ٹریک پر ہیں ۔ مرکزی وزیر نے مزید کہا کہ 28.400 کروڑ روپے کا حالیہ صنعتی پیکیج جموں و کشمیر کی یقینی ترقی کی گواہی ہے ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے اس موقعہ کو دبئی ، جموں و کشمیر دوستی اور جموں و کشمیر یونین ٹیر ٹری کے ترقیاتی سفر کیلئے ایک تاریخی دن قرار دیا ۔ انہوںنے کہا کہ مفاہمت نامہ حکومت دبئی اور جموں و کشمیر کے مابین ایک نئی شراکت داری کا آغاز ہے جس سے یوٹی کو صنعتکاری اور پائیدار ترقی میں نئی بلندیوں کو طے کرنے میں مدد ملے گی ۔ اِس کا مقصد مختلف اِقتصادی سرگرمیوں کو ترقی دینا ہے جن میں صنعتی پارکوں ، آئی ٹی ٹاروں، کثیر المقصد ٹاوروں ، لاجسٹکس ، میڈیکل کالج ، سپر سپیشلٹی ہسپتال اور بہت سے دیگر منصوبے شامل ہیں ۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ 28,400 کروڑ روپے کی صنعتی ترقیاتی سکیم پہلے ہی یوٹی میں صنعتی سرمایہ کاری کو راغب کر رہی ہے۔اُنہوں نے مزید کہا کہ جموںوکشمیر کو کووِڈ وبا کی دوسری لہر کے بعد صرف چند مہینوں میں 30,000 کروڑ روپے کی تجویز موصول ہوئی ہے اور ہمیں اُمید ہے کہ آنے والے وقتوں میں تقریباً 60,000 کروڑ روپے کی تجاویز ملیں گی۔
اُنہوں نے کہا کہ یہ مفاہمت نامہ جموںوکشمیر کے اِمکانات کے بارے میں ہے اور مجھے یقین ہے کہ یہ مستقبل کے کاروباری شعبے میں وہ رفتار طے کرے گا جو لوگوں خی خوشحالی کی کلید ہے ۔لیفٹیننٹ گورنر نے جموںوکشمیر اور دبئی کے مشترکہ اقدار ، باہمی اعتماد ، احترام اور مقبو ل مصنوعات کی منصفانہ تجارت پر مبنی گہرے تعلقات پر بھی بات کی۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ آج کی کانفرنس میں سلطان احمد بن سلیم کی موجودگی اور 23؍ اکتوبر سے شارجہ کے لئے پہلی بین الاقوامی پرواز شروع کرنے کا ہمارا اقدام مضبوط کاروباری تعاون کو فروغ دینے کے ہمارے عزم کی عکاسی کرتا ہے۔ ڈی پی ورلڈ ،دبئی کے گروپ چیئرمین اور سی اِی او سلطان احمد بن سلیم نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ مفاہمت نامہ جموںوکشمیر میں صنعتی شعبے کو تبدیل کرنے کے کئی مواقع لائے گا۔اُنہوں نے آگاہ کیا کہ ڈی پی ورلڈ سمارٹ لاجسٹک حل فراہم کرنے والا ایک معروف فراہم کنندہ ہے جو پوری دنیا میں تجارت کو فعال کرتا ہے۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ جموںوکشمیر ملک اور دُنیا بھر میں منفرد مصنوعات او رزراعت ، باغبانی پیداوار کی نقل و حمل کے لئے ہندوستان کی تمام بڑی بندر گاہوں سے منسلک ہوں گے۔