فاروق، عمر،بخاری، تاریگامی وحکیم کی مذمت

تاریخ    18 اکتوبر 2021 (02 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// دوغیرمقامی مزدوروں کوہلاک اورایک کوشدیدزخمی کرنے کے واقعہ کی سیاسی جماعتوں نے شدیدالفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ا ن ہلاکتوں میں ملوث عناصر کشمیریوں کے خیرخواہ نہیں ہوسکتے ۔نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور نائب صدر عمر عبداللہ نے غیر کشمیری مزدوروں کی بیہمانہ ہلاکتوں کی شدید مذمت کی ہے۔متاثرہ لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ تشدد ہر طرح سے لوگوں کیلئے مصیبتیں لیکر آتا ہے، اور اس طرح کی ہلاتوں کی مہذب معاشرے میں کوئی جگہ نہیں ہے۔عمر عبداللہ نے کہا ’’ میں اس واقعہ کی مذمت کرتا ہوں،۔ یہ ناقابل معافی گھناونا جرم ہے، تشدد کا جاری سلسلہ رک جانا چاہیے، ملوثین کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے‘‘۔اپنی پارٹی صدر سید الطاف بخاری نے اس واقعہ کو انتہائی بہیمانہ قرار دیا ۔الطاف بخاری نے کہا، ’’بے حس قتل انتہائی قابل مذمت ہے جس کی مہذب معاشرے میں کوئی جگہ نہیں ۔بخاری نے زور دیا کہ انتظامیہ کو چاہیے کہ تحقیقاتی عمل میں تیزی لائی جائے اور وادی میں دہشت کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کرنے والے مجرموں کو پکڑنے کے لیے سنجیدہ کوششیں ہوں۔ انہوں نے کہا، ’’یہ شیطانی قوتیں، جو جموں و کشمیر میں امن کو خراب کرنا چاہتی ہیں، دراصل خوفزدہ ہیں۔ ِاس اشتعال انگیز قتل کی کوئی جوازیت نہیں ہے جہاں بے گناہ ، غیر مسلح مزدور وںکونشانہ بناکر شکارکیاجائے۔ پیپلزڈیموکریٹک فرنٹ چیئرمین حکیم یاسین نے کہا کہ ان ہلاکتوں کے پیچھے عناصر کبھی کشمیریوں کے خیرخواہ نہیں ہوسکتے۔ غیرکشمیری مزدور وں،کی ہلاکتیں تمام مذاہب خاص طور اسلام کی تعلیمات کے خلاف ہیں اور کشمیریوں کو بدنام کرنے کی کسی گہری سازش کی بوآتی ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیری امن پسند ہیں اوروہ کبھی بھی خون انسانی کے روادار نہیں رہے ہیں۔ کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا(مارکسسٹ)کے رہنما یوسف تاریگامی نے کہا کہ یہ معصوم مزدور یہاں اپناروزگار کمانے کیلئے آتے ہیں۔ان ہلاکتوں کا مقصد کشمیریوں کے مفادات کو زک پہنچانا ہے اوریہ سب فصل کی کٹائی کے ایام میں ہورہا ہے۔انہوں نے مزیدکہا کہ زبانی جمع خرچ کافی نہیں ہے ۔ہم سب کو ان ہلاکتوں کے خلاف آگے آنا چاہیے اورمتحد ہوکراس کے خلاف آوازبلند کرنی چاہیے ۔
 

تازہ ترین