تازہ ترین

اقلیتوں کے تحفظ کی ذمہ داری حکومت پر

صورتحال سے نمٹنے کیلئے حکمت عملی تیار، عنقریب عملائی جائیگی:لیفٹیننٹ گورنر

تاریخ    16 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا ہے کہ وادی کشمیر میں اقلیتوں کے تحفظ کی ذمہ داری حکومت کی ہے اور مرکزی حکومت نے خفیہ ایجنسیوں اور سیکورٹی فورسز کی مدد سے صورتحال سے نمٹنے کے لیے حکمت عملی تیار کی ہے ، جس پر زمینی سطح پر جلد عمل کیا جائے گا۔انہوں نے کہا ’’ میں حالیہ بد قسمت ہلاکتوں کی ذمہ داری لیتا ہوں، یہ یقینی بنانے کیلئے کہ ایسے قتل دوبارہ نہ ہوں، کیونکہ بالآخر لوگوں کو تحفظ فراہم کرنا حکومتوں کا کام ہوتا ہے‘‘۔نیوز 18کیساتھ بات چیت کرتے ہوئے’’ میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ ہماری سکیورٹی فورسز نے خفیہ اداروں کے ساتھ مل کر ایک مضبوط حکمت عملی تیار کی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا’’ امن ا مان کو ختم کرنے کیلئے اس طرح کے حادثات کو انجا دیا گیا ہے اور جو بھی لوگ مارے گئے انکی موت کا بدلہ لیا جائیگا اور جنگجویانہ سسٹم اور نظام تباہ ہوجائیگا‘‘۔انکا کہنا تھا کہ اقلیتوں کے تحفظ کی زمہ داری حکومت وقت کی ہوتی ہے اورجو ہوگیا ، وہ ہوگیا، آگے نہیں ہوگا، کی ذمہ داری حکومت لیتی ہے۔ سنہا نے کہا ’’ یہ حقیقت ہے کہ اب کشمیر میں کوئی پتھرائو نہیں ہورہا ہے، سیاحت مین اضافہ ہوا ہے، پورے ملک کے لوگ یہاں آنے میں محفوظ محسوس کرتے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ حالات کا غلط فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ حالیہ ہلاکتوں کو انتظامیہ کی ناکامی کہنے کے بجائے ان پر بحث کی جانی چاہیے،ملک کے سبھی حلقوں کی ان ہلاکتوں کی مذمت کرنی چاہیے، جو لوگ جان بوجھ کر ان موضوعات کو پٹری سے اتاررہے ہیں، انکے جھانسے میں نہ آئیں۔ پچھلے دو سالوں میں جموں و کشمیر میں سیاحت ، خوشحالی اور ترقی میں اضافہ ہوا ہے ، جو لوگ اسے برداشت نہیں کر سکتے ہیں انہوں نے امن خراب کرنے کے لیے ایسے واقعات کو انجام دیا ہے۔  خصوصی گفتگو میں سنہا نے کہا ، ہم قومی ٹیلی ویژن پر سیکورٹی اقدامات پر بحث نہیں کر سکتے، میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ ہماری سکیورٹی فورسز نے خفیہ اداروں کے ساتھ مل کر ایک مضبوط حکمت عملی تیار کی ہے۔ سیکورٹی فورسز کو ہماری طرف سے مکمل آزادی ہے کہ وہ جہاں چاہیں کارروائی کریں، کچھ لوگ اس طرح کے بیانات دے رہے ہیں جو کہ یہاں کی سکیورٹی صورتحال کو خراب کر رہے ہیں۔ انہیں بولنے سے پہلے سوچنا چاہیے۔ سکیورٹی فورس بھرپور جوابی حملے کے لیے تیار ہے۔اس بات کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہ جلد ہی حکومت کا وادی میں حالات پر مکمل کنٹرول ہو جائے گا ، سنہا نے کہا ، یہ سچ ہے کہ سماج کے مختلف طبقات کے لوگوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ جیسے سیاسی جماعتوں کے کارکنان ، ہمارے مسلمان بھائی ، اقلیتی برادری کے لوگ ، ہمیں قاتلوں کی ذہنیت کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔
 

تازہ ترین