تازہ ترین

مزید خبریں

تاریخ    12 ستمبر 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک

وزیر مملکت برائے دفاع و سیاحت نے جموں و کشمیر کے سیاحتی منظر کا جائیزہ لیا 

سرینگر//جموں و کشمیر کیلئے مرکزی حکومت کے عوامی آؤٹ ریچ پروگرام کے ایک حصے کے طور پر مرکزی وزیر مملکت برائے دفاع اور سیاحت اجے بھٹ نے جموں و کشمیر سیاحت کے عہدیداروں کے ساتھ سرینگر کے رائل اسپرنگز گالف کورس میں تفصیلی بات چیت کی ۔ اس کے علاوہ اجے بھٹ نے جموں و کشمیر یو ٹی کے سیاحت کے شعبے سے وابستہ مختلف اسٹیک ہولڈرز سے ملاقات کی ۔ اس موقعہ پر مرکزی وزیر نے جموں و کشمیر کے سیاحتی منظر کا جائیزہ لیا ۔ ایک تفصیلی جائیزہ سیکرٹری جموں و کشمیر سیاحت سرمد حفیظ ، ڈائریکٹر سیاحت کشمیر ڈاکٹر غلام نبی ایتو اور محکمہ کے دیگر عہدیداروں نے پیش کیا ۔ اجے بھٹ نے انفراسٹرکچر اور اقدامات کے ساتھ ساتھ ممکنہ طور پر دستیاب ہونے پر بھی زور دیا ۔ انہوں نے مرکزی سرزمین کے سیاحتی منظر کو فروغ دینے کیلئے مجموعی طور پر زمین کی تزئین کی ترقی اور بہتری کیلئے مرکزی حکومت کے عزم کو اجاگر کیا ۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت اجے بھٹ نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی سربراہی میں حکومت خطے کی جامع ترقی کو یقینی بناتے ہوئے جموں و کشمیر کے جوہر کو برقرار رکھنے کی ہر ممکن کوشش کر رہی ہے ۔ انہوں نے یقین دلایا کہ خطے میں سیاحت سے متعلقہ موجودہ راستوں کے علاوہ سرحدی سیاحت ، ماحولیاتی سیاحت اور باغبانی سیاحت کو ترجیح دی جائے گی ۔ اس موقع پر مرکزی وزیر نے جموں و کشمیر یو ٹی کے سیاحت کے شعبے سے وابستہ سٹیک ہولڈرز کے ساتھ ایک انٹریکٹو میٹنگ کی ۔ ٹریول اینڈ ٹور اپریٹرز اور ہوٹل والوں پر مشتمل نمائندے بات چیت کے دوران موجود تھے ۔ ایک میٹنگ کے دوران انڈسٹری کو درپیش مختلف چیلنجز اور مسائل پیش کئے گئے ۔اجے بھٹ نے مرکزی حکومت کی مدد کو یقینی بنایا جو علاقے کی بہتری کیلئے پُر عزم ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ سیاحت کے شعبے کو فروغ دینے کیلئے تمام اقدامات کئے جا رہے ہیں ۔ اس سے قبل وزیر نے ایک ماؤنٹین بائیک مہم کو جھنڈی دکھا کر مختلف سیاحت کے اختیارات اور اس شعبے میں پہلے سے موجود صلاحیتوں کو شامل کیا ۔ 
 
 
 

 بٹھناگر نے آئی ٹی آئی سیر ،ہائر سکینڈری سکول پہلگام کا دورہ کیا  | ونوں اداروں کے کام کا جائیزہ لیا ، دیگر سہولیات کا معائینہ کیا 

اننت ناگ //لیفٹینٹ گورنر کے مشیر راجیو رائے بٹھناگر نے آئی ٹی آئی وومن سیر کا اچانک دورہ کیا اور انسٹی ٹیوٹ کے کام کاج کا جائیزہ لیا ۔ دورے کے دوران مشیر نے انسٹی ٹیوٹ کا تفصیلی چکر لگایا اور کلاس رومز ، لیبز ، ٹیلرنگ لیبز اور دیگر تجارتی بلاکس کا معائینہ کرنے کے علاوہ انسٹی ٹیوٹ کی دیگر سہولیات کا جائیزہ لیا ۔ اس موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے مشیر بٹھناگر نے انسٹی ٹیوٹ کے فیکلٹی ممبران کو ہدایت دی کہ وہ طلبا کو تربیت دیتے ہوئے اپنی بہترین صلاحیت کا مظاہرہ کریں اور انہیں جدید صنعتی ضروریات کے مطابق ہنر مند بنائیں تا کہ یہ روز گار کے قابل بن سکیں ۔ انہوں نے ان سے کہا کہ وہ طلباء کو علم اور جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ کریں تا کہ وہ پورے معاشرے کیلئے نتیجہ خیز بنیں ۔ مشیر نے انہیں کورس کی پری ٹریننگ ، داخلہ سے پہلے طلباء کی ہینڈ ہولڈنگ کی ہدایت دی تا کہ زیادہ طلباء ادارے کی طرف راغب ہوں ۔ انہوں نے افسران پر زور دیا کہ وہ آئی ٹی آئی میں پیش کئے جانے والے اسکل ڈیولپمنٹ کورسز کے حوالے سے سکولوں اور کالجوں میں واقفیت شروع کریں تا کہ زیادہ سے زیادہ طلباء ان کورسز کی طرف راغب ہوں ۔ اس موقعہ پر مشیر نے کہا کہ جموں و کشمیر میں بے روز گاری کے مسئلے پر قابو پانے کیلئے ہُنر مندی کی فراہمی میں مہارت کی ترقی کے شعبے کا اہم کردار ہے ۔ اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ تعلیم اور مہارت کی تعمیر نوجوانوں کو بااختیار بنانے کا بنیادی ذریعہ ہے مشیر بٹھناگر نے متعلقہ افسران کو ہدایت دی کہ وہ ضروری مہارت فراہم کرنے کے ذریعے نوجوانوں کو بااختیار بنانے کو یقینی بنانے کیلئے بھر پور کوششیں کریں ۔ دورے کے دوران مشیر کو بتایا گیا کہ یہ انسٹی ٹیوٹ وزیر اعظم کے تعمیر نو پروگرام کے تحت قائم کیا گیا ہے اور نو ٹریڈز میں طلباء کو تربیت دے رہا ہے ۔ دورے کے دوران کئی مقامی لوگوں نے مشیر سے ملاقات کی اور کئی ترقیاتی مسائل ان کے نوٹس میں لائے ۔ مشیر نے ان سے بات چیت کرتے ہوئے انہیں یقین دلایا کہ ان کے تمام جائیز مسائل اور مطالبات کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا ۔ بعد میں بٹھناگر نے ہائیر سکینڈری سکول ( ایچ ایس ایس ) پہلگام کا دورہ کیا اور اس کے کام کاج کا جائیزہ لیا ۔ انہوں نے سکول کے کلاس رومز ، لیبارٹریز ، لائیبریری اور دیگر سہولیات کا معائینہ کیا ۔ انہوں نے متعلقہ افسران کو ہدایت دی کہ وہ آن لائین موڈ کے ذریعے تعلیم حاصل کرنے والے طلباء کو ہر ممکن مدد فراہم کریں ۔ مشیر نے سکول کے پرنسپل کو 100 فیصد ویکسی نیشن کے ساتھ ساتھ طلبا کو سکول میں کلاس ورک دوبارہ شروع کرنے کی بھی ہدایت دی ۔ 
 
 
 

بانڈی پورہ لوک عدالت میںمنفرد مقدمہ کامفاہمانہ حل | 16برس بعد میاں بیوی اکھٹے رہنے پر راضی

عازم جان 
بانڈی پورہ //ضلع بانڈی پورہ میں 16برسوں سے علیحدہ رہ رہے میاں بیوی نے منعقدہ لوک عدالت میں باہمی افہام و تفہیم کے ذریعہ اختلافات کو ختم کرکے دوبارہ اکھٹے زندگی بسر کرنے کیلئے راضی ہوگئے ہیں۔ سنیچرکو لوک عدالت کا انعقاد کیاگیا جس میں 16برسوں سے زیر سماعت مقدمہ کو حل کرنے کی کارروائی شروع ہوئی۔ سارہ بیگم نے شوہر نذیر احمد ساکنہ فقیر پورہ گریز، جو بی ایس ایف میں تعینات تھا، کیخلاف چیف جوڈیشل مجسٹریٹ عدالت میںمقدمہ دائر کیا تھا جو 16برسوں تک زیر سماعت رہا۔ چنانچہ میاں بیوی کے علیحدہ طور زندگی گزارنا بچوں کیلئے دردِ سربنا ۔ سیکریٹری ڈسٹرکٹ لیگل سروسز بانڈی پورہ جج فاریقہ نذیر نے منعقد ہونے والی قومی لوک عدالت میں مقدمہ کی سماعت سنیچر کو رکھی۔ چیف جوڈیشل مجسٹریٹ بانڈی پورہ عبدالقوم میر کی عدالت میں 16سال بعد لوک عدالت کے دوران روبرو ہوئے میاں بیوی کے وکلا ء بھی پیش ہوئے ۔ اس موقعہ پر سی جے ایم نے میاں بیوی کو مفید مشورہ دیتے ہوئے آپسی اختلاف کوختم کرنے کی تلقین کی ۔ اس دوران 55سالہ سارہ بیگم کے وکیل ایڈووکیٹ صوفی فیروز اور شوہر نذیر احمد (سبکدوش بی ایس ایف اہلکار)کے وکیل ایڈوکیٹ خان عبدالرشید نے افہام و تفہیم کیلئے کلیدی کردار ادا کرکے بالآخر سی جے ایم کے سامنے اختلاف ختم کرنے کے لئے راضی ہوگئے ۔ درالعلوم رحیمہ کے صدرمفتی ، مفتی نذیر احمد قاسمی بھی ممبر کی حیثیت سے سی جے ایم کے ہمراہ موجود تھے ۔دونوں میاں بیوی نے اختلاف کو پس پشت ڈال کر اکٹھے رہنے کیلئے اتفاق کرلیا ۔سی جے ایم نے دونوں میاں بیوی کو دوبارہ اکٹھے رہنے کے لیے مبارک باد دی ۔بانڈی پورہ عدالت میں موجود ان کے بچوں خوشی سے پھولے نہ سماتے ہوئے کہا کہ ماں باپ کے جدا رہنے سے ہماری زندگیاں تاریک ہوئی تھیں اب پھر ہماری زندگیوں میں اجالا آگیا ہے ۔
 
 
 

’کشمیر فائٹ بلاگ‘‘ معاملہ | 2ملزمان کی ضمانت منظور 

بلال فرقانی
سرینگر//سری نگر کی ایک خصوصی عدالت نے ہفتہ کو ایک اہم کیس ’’کشمیر فائٹ‘‘ بلاگ کیس کے دو ملزمان کی ضمانت منظور کرلی۔استغاثہ اور دفاعی وکیل کی دلائل سننے کے بعد بعد ، اسپیشل ایڈیشنل اینڈ سیشن جج ٹاڈاوپوٹا سرینگر منجیت سنگھ منہاس کی عدالت نے کہا کہ ضمانتی درخواست میں ملزمان کی طرف سے پیش کی گئی بنیادیں انہیں ضمانت کے حقدار بناتی ہیں۔ ٹاڈاوپوٹا کی خصوصی عدالت نے کہا کہ ایڈوکیٹ نازش یصرب رحمانی دختر صوفی اکبر اور جاوید خالد ساکن پونچھ کو ضمانت دی جاتی ہے تاہم ان پر شرائط عائد کی جاتی ہیں۔ عدالت نے انچارج سنٹرل جیل سرینگر کو ہدایت دی ہے کہ وہ ایف آئی آر نمبر 82/2020 میں سیکشن 13،16،18،20 یو ایل اے پی ایکٹ کے تحت  ملزمان کو رہا کرے۔ جموں و کشمیر پولیس نے دعویٰ کیا تھا کہ ایک آن لائن بلاگ سائٹ چلانے والے پانچ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ، جنہوں نے مہم چلائی اور کشمیر کی ممتاز شخصیات کی ہٹ لسٹ تیار کی۔انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے جولائی 2021 میں کہا تھا ’’دہشت گردی اور دھمکی دینے والی مشینری کے پیچھے مجرموں ، kashmirfight.wordpress.com کو ایک بڑی پیش رفت میں گرفتار کیا گیا۔‘‘پولیس نے کہا تھا کہ انہوں نے مرکز کے زیر انتظام علاقہ میں چھاپے مارے اورپانچ گھروں سے مجرمانہ ڈیجیٹل آلات برآمد کیے۔
 
 
 
 

حکومتی فیصلہ افسوسناک: تاریگامی 

 سرینگر// سی پی آئی (ایم)کے رہنما محمد یوسف تاریگامی نے کہا ہے کہ جموں و کشمیر انتظامیہ کا سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کی انٹیگریٹڈ چائلڈ ڈیولپمنٹ سروسز (ICDS) اسکیم میں کام کررہے 918 ہیلپروں کو بر طرف کرنے کا فیصلہ افسوسناک ہے کیونکہ روزگار فراہم کرنے کے بجائے ان لوگوں کی روزی بھی چھینی جا رہی ہے جو برسوں سے حکومت کی خدمت کر رہے ہیں۔ اپنے ایک بیان میں تاریگامی نے کہا کہ یہ ہیلپر محکمے میں محنت کر کے سرکاری اسکیموں کو کامیاب بنا کر اپنی روزی روٹی کما رہے تھے۔ انہوںنے کہا کہ پچھلے ڈیڑھ برس سے کوویڈ 19 وبائی امراض کے خلاف لڑائی میں سب سے آگے رہے ہیں اور ان کو بر طرف کرنے کی کوئی حقیقی وجہ نہیں ہے۔ تاریگامی نے کہاکہ ایک ایسے وقت میں جب جموں و کشمیر میں بے روزگاری کی سطح بڑھ رہی ہے کیونکہ تعلیم یافتہ نوجوان نظرانداز اور ملازمتیں پیدا کرنے کی پالیسی کے فقدان کے ساتھ جدوجہد کر رہے ہیں ، ایسے لوگوں کو بے روزگار کرنے کا فیصلہ ، جو پہلے ہی ملازمت میں تھے ، تباہ کن ثابت ہو سکتے ہیں۔ تاریگامی نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے دعوی کیا تھا کہ دفعہ 370 جموں و کشمیر کی ترقی میں رکاوٹ ہے اور اس کی منسوخی سے خطے میں سرمایہ کاری ، روزگار اور خوشحالی آئے گی۔ حکومت کی طرف سے جو کہا جارہا ہے وہ حقیقت سے مختلف ہے۔ اگست 2019 کے بندش کے بعد ، جموں و کشمیر کی معیشت عملی طور پر تباہ ہو گئی ہے کیونکہ سیاحت ، تجارت اور دیگر اہم شعبے بری طرح متاثر ہوئے ہیں اور پورا کاروبار تباہ ہو گیا ہے۔ جو پہلے ہی اپنی روزی کما رہے تھے وہ اس سے محروم ہو رہے ہیں۔ ہزاروں مزدور ،ڈیلی ویجر، ضرورت پر مبنی  مزدور ، سکیم کارکن ک مہینوں سے بغیر تنخواہ کے ہیں۔ تاریگامی نے جموں و کشمیر کے لیفٹنٹ گورنر اور چیف سکریٹری سے گزارش کی کہ وہ ان ہیلپروں کی برطرفی کے معاملے کو ہمدردی سے دیکھیں ۔
 
 
 

روزگار چھیننے کے مترادف: سول سوسائٹی/ایجیک

سرینگر// سول سوسائٹی فورم اور ایجیک کے ایک دھڑے نے محکمہ سماجی بہبود کی’آئی سی ڈی ایس‘ اسکیم میں سپر وائزروںکے 918 ہیلپروںکو بے دخل کرنے کے حکومتی فیصلے پر تنقید کی ہے اور اسے سراسر بدقسمتی قرار دیا ہے۔سول سوسائٹی فورم نے محکمہ سماجی بہبود کی’آئی سی ڈی ایس‘ اسکیم میں 918 ہیلپروںکو بے دخل کرنے کے حکومتی فیصلے پر تنقید کی ہے اور اسے سراسر بدقسمتی قرار دیا ہے۔ فورم کے چیئرمین عبدالقیوم وانی نے کہا کہ ان ہیلپروں کو بے دخل کرنا ان لوگوں کی روزی چھیننے کے مترادف ہے جو برسوں سے حکومت کی خدمت کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا’’ یہ ملازمین اپنے بنیادی فرائض انجام دینے کے علاوہ وہ وبائی مرض کویڈ کے ظہور کے بعد سے اس بیماری کے خلاف حکومت کی لڑائی میں سب سے آگے رہے ہیں اور انہیں الگ کرنے کی کوئی حقیقی وجہ نہیں ہے کیونکہ یہ ہلپر زمینی سطح پر کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک یسے وقت میں جب زیادہ سے زیادہ نوجوانوں کو جموں و کشمیر میں محکمہ سماجی بہبود میں تعینات کرنے کی ضرورت ہے اس طرح کا فیصلہ ناقابل قبول ہے۔ وانی نے سوال کیا سیول سوسائٹی فورم نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ ہمدردی کے ساتھ ان  ہلپروں کو بے دخل کرنے کے مسئلے کو دیکھیں اور متعلقہ محکمہ سے اس پر عمل درآمد نہ کرنے کی ہدایت دیں۔اس دوران ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے آئی سی ڈی ایس میں کام کرنے والے 918 ہیلپرز کو چھٹی دینے کے فیصلے پرناراضگی کا اظہار کیا ۔ایجیک صد محمد رفیق راتھر نے بیان میں کہا کہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ غریب ملازمین کی روزی چھین لی گئی ہے جو اپنے خاندانوں کے پیٹ پالنے کے لیے کم تنخواہ پر کام کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ یہ سپر وائزر سالوں سے مربوط چائلڈ ڈیولپمنٹ اسکیم میں کام کر رہے ہیں اور ان کی اجرت بڑھانے کے بجائے حکومت نے بدقسمتی سے ان کی خدمات کو ختم کر دیا ہے جس کی وجہ سے وہ بھوک  مری کا شکار ہونگے۔رفیق راتھر نے کہا کہ یہ  سپر وائزار ، محکمہ میں محنت کر کے اور حکومتی اسکیموں کو کامیاب بنا کر اپنی روزی روٹی کما رہے تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے اپنی ذاتی صحت اور اپنے خاندانوں کی صحت کی پرواہ کیے بغیر کویڈکے دوران جوش اور ولولے سے کام کیا ہے ،  اوراس طرح ان کو بے دخل کرنا بلاجواز اور غیر منطقی لگتا ہے۔
 
 
 
 
 
 

اقتدار میںآئے توبجلی کے 300 یونٹ مفت فراہم کرینگے : الطاف بخاری 

سرینگر//اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے جموں و کشمیر کے خراب معاشی منظر نامے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ لوگ اب موجودہ صورتحال میں مزید ابتری کے متحمل نہیں ہوسکے۔ ضلع بڈگام کے اسمبلی حلقہ چرار شریف میں منعقدہ پارٹی کے یک روزہ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے الطاف بخاری نے کہاکہ جموں وکشمیر میں قدرتی آبی وسائل کا خزانہ ہے جس سے چوبیس گھنٹے ہزاروں میگا واٹ بجلی پیدا ہوتی ہے لیکن جموں وکشمیر میں دونوں صوبوں کے اندر لوگوں کو بجلی کٹوتی کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔ انہوں نے کہا’’یہ دیکھ کر دُکھ ہوتا ہے کہ جموں وکشمیر میں پن بجلی پیدا کرنے کی بھر پور صلاحیت موجود ہونے کے باوجود سال بھر یہاں کے لوگوں کو بجلی قلت کا سامنا رہتا ہے۔ گرمائی ایام کے دوران جموں میں بجلی کٹوتی اور سرمائی ایام میں کشمیر صوبہ کے اندر بجلی شٹ ڈاؤن معمول بن چکا ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ بجلی کٹوتی کا متعلقہ محکمہ سے ایک ہی جواب ملتا ہے کہ ’بجلی لوڈ شیڈنگ‘ہے لیکن انہوں نے پوچھا کہ آخرکب تک مابعد جدیدیت میں بھی فلاحی ریاست کے ذریعے شہریوں کو اِس طرح کی صورتحال کو بردداشت کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا’’ جموں وکشمیر بجلی پیداوار کی جنت ہے لیکن اِس کے متضاد حکومت ہمیشہ بجلی خرید میں بھاری نقصانات کا رونا روتی رہتی ہے جس میں چند اطلاعات کے مطابق سالانہ 6000کروڑ سے زائد کا نقصان ہوتا ہے۔ یہ جموں وکشمیر کے لوگوں پر کوئی احسان نہیں ، اگر حکومت سالانہ اتنی رقم بجلی خرید پر خرچ کرتی ہے،یہ 1.35کروڑلوگوں کو سبسڈی دی جاتی ہے جن کے قدرتی وسائل کا استعمال کر کے ملک بھر کے لئے تیار کردہ بجلی کی کھپت ہوتی ہے۔ ایک فلاحی ریاست کی جانب سے اس طرح کے غیر ضروری تبصرے کارپوریٹ کاروباری ماڈل کی طرف سے عوام نواز اقدامات کے مترادف ہے۔  الطاف بخاری نے یہ عہد کیاکہ اگر آنے والے اسمبلی انتخابات میں اپنی پارٹی اقتدار میں آتی ہے تو ہر گھرکو ماہانہ 300یونٹ بجلی مفت فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے زور دیتے ہوئے کہاکہ ’’چاہئے 5 اگست2019کے بعد کی صورتحال ہو یا کویڈ بحران، پچھلے چند برس سے جموں وکشمیر کے لوگ منتخب حکومت کی عدم موجودگی میں اقتصادی بحران کا شکارہیں۔ اپنی پارٹی معیشت کو واپس پٹری پر لانے کے لئے انتھک کوششیں کرے گی اور جہاں ضرورت ہوگی رعایت بھی دی جائے گی۔ اس موقعہ پر اپنی پارٹی سینئر نائب صدر غلام حسن میر نے کہاکہ اپنی پارٹی کا ایجنڈہ جموں وکشمیر کے لوگوں کی ترقی اور خوشحالی پر مرکوز ہے ، جس کوبدقسمتی سے ماضی نظر انداز کیاگیا۔ میر نے کہا’’ جب تلک باصلاحیت نوجوانوں کو اُن کی خواہش کے مطابق متعلقہ شعبوں میں مواقعے فراہم کر کے زمینی سطح پر معاشی خوشحالی یقینی نہیں بنائی جاسکتی ، تب تلک لوگ لگاتار مایوسی کا شکار ہی رہیں گے۔ حکومت کو لوگوں پر مرکوز اسکیموں کو متعارف کرنا ہوگا جہاں ہر لحاظ سے اُن کی فلاح کا تحفظ ہو‘‘انہوں نے کہاکہ مفلوج ومنجمدانتظامیہ کی وجہ سے جموں وکشمیر میں رہ رہے لوگوں کی اقتصادی حالت بہت کمزور ہے اور ترقیاتی عمل ٹھپ پڑاہے۔ اس موقع پر اپنی پارٹی ریاستی سیکریٹری منتظر محی الدین، میڈیا ایڈوائزر فاروق اندرابی، ضلع صدر سرینگر نور محمد شیخ، صوبائی کارڈی نیٹر ماسٹر مقبول، انچارج چرار شریف حلقہ مشتاق زخومی، شبیر احمد، عبدالغنی سوداگر، شکیلہ، عبدلقیوم بھٹ، گلزار احمد واگے، عبدالمجید بھٹ، فاروق احمد نجار، محمد رفیع نجار، منیر احمد، غلام محمد پال اور طارق احمد بھٹ وغیرہ بھی موجود تھے۔
 
 
 
 

نیشنل کانفرنس کے تنظیمی چنائو جاری | 22بلاکوںکے صدور منتخب 

سرینگر//نیشنل کانفرنس تنظیمی الیکشن کے سلسلے میں اننت ناگ اورپلوامہ ضلع صدور کے علاوہ 13بلاک صدور اور ضلع بڈگام کے 7بلاکوں کا انتخاب عمل میں لایا گیا۔ ضلع پلوامہ میں پارٹی کے سینئر لیڈر اور سابق ایم ایل اے راج پورہ خواجہ غلام محی الدین میر بلا مقابلہ دوبارہ ضلع صدر پلوامہ منتخب ہوئے جبکہ ضلع پلوامہ کے 11بلاکوں ، ترال، ڈاڈسرہ، آری پارہ، پانپور، کاکہ پورہ، نیوہ، پلوامہ، شادی مرگ، لیتر، اچھہ گوزہ اور اونتی پورہ کا الیکشن انچارج کشمیر غلام نبی بٹ کی نگرانی میں منعقد ہوئے جبکہ اس موقعے پر سید رفیق شاہ ،محمد امین بانڈے اور ماسٹر عبدالعزیز بھی موجود تھے۔ ضلع اننت ناگ کیلئے سینئر پارٹی لیڈر اور سابق ایم ایل اے پہلگام الطاف احمد کلو دوبارہ ضلع صدر منتخب ہوئے جبکہ ضلع کے 2بلاکوں دھچنی پورہ اے اور دھچنی پوہ بی کا چنائو بھی عمل میں لایا گیا۔ ضلع اننت ناگ کا انتخاب پارٹی کے وسطی زون صدر علی محمد ڈار کی نگرانی میں منعقد ہوئے جبکہ اس موقعے پر سینئر پارٹی لیڈر عرفان احمد شاہ، خواتین ونگ کی ریاستی صدر شمیمہ فردوس، صوبائی صدر انجینئر صبیہ قادری اور ایڈوکیٹ ریاض احمد خان بھی موجود تھے۔ ادھر ضلع بڈگام کے 7بلاکوں چرار شریف، پکھر پورہ، ناگام، چاڈورہ رورل، ہفرو بٹہ پورہ اور رٹھہ سونہ کے بلاک صدور کا انتخاب سینئر پارٹی لیڈر ایڈوکیٹ عبدالمجید لارمی کی نگرانی میں منعقد ہوا جبکہ اس موقعے پر سینئر پارٹی لیڈران عبدالرحیم راتھر، ڈاکٹر بشیر احمد ویری ،میر غلام رسول ناز،  اور ضلع صدر حاجی عبدالاحد ڈار بھی موجود تھے۔ ادھر ضلع گاندربل کے حلقہ انتخاب کنگن کے 2بلاکوں گنڈ اور کنگن کا انتخاب پارٹی کے جنوبی زون صدر ڈاکٹر بشیر احمد ویری کی نگرانی میں منعقد ہوا جبکہ اس موقعے پر پارٹی کے ضلع صدر شیخ اشفاق جبار اور پارٹی لیڈر ایڈوکیٹ سلیم پرے بھی موجود تھے۔ 
 
 
 
 

بانڈی پورہ میںشہری حرکت قلب بند ہونے سے فوت

عازم جان 
بانڈی پورہ//بانڈی پورہ نبرپورہ میں تیس سال کا جوان اچانک حرکت قلب بند ہونے سے فوت ہوا۔  بتایا جاتا ہے کہ اشفاق مشتاق میر ولد مشتاق احمد میر کو گھر پر دل کا دورہ پڑا، اگرچہ اُسے فوری طور ضلع ہسپتال بانڈی پورہ پہنچایا گیا لیکن ڈاکٹروں نے اُسے  وہاںمردہ قرار دیا۔ 
 
 
 

ریاستی درجہ کی بحالی ناگزیر: حکیم 

سرینگر//پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم محمدیاسین نے مرکزی حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ جموں وکشمیر میں فوری طور  اسمبلی انتخابات منعقد کرانے کے ساتھ ساتھ اسکے ریاستی تشخص کو بحال کریں۔ضلع بڈگام کے خانصاحب حلقہ انتخاب میں عوامی رابطہ مہم کے تحت مختلف مقامات پر لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے حکیم یاسین نے کہا کہ جموں وکشمیر کے لوگ اپنی منتخبہ عوامی حکومت نہ ہونے کی وجہ سے گوناگوں مشکلات سے دوچار ہیں اور وہ اپنے روزانہ مسائل کو حل کرنے سے قاصر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوامی حکومت کے نہ ہونے کی وجہ سے پورے جموں وکشمیر میں ترقیاتی اور سماجی ترقی کی رفتار پوری طرح اٹک کے رہ گئی ہے جبکہ  انتظامیہ لوگوں کے مسائل کے تئیں بے حس اور غیر سنجیدہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ میں جوابدہی کا فقدان ہے جبکہ عام لوگوں اور افسر شاہی کے درمیان کوئی رابطہ موجود نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر میں سماجی، سیاسی اور ترقیاتی سرگرمیوں میں جان ڈالنے کے لئے یہاں فوری طور اسمبلی انتخابات کا انعقاد کرانا بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔حکیم یاسین نے ضلع بڈگام میںدودھ پتھری، یوسمرگ اور توسہ میدان کے سیاحتی مقامات کو نظر انداز کرنے پر بھی حکومت اور متعلقہ حکام کو ہدف تنقید بناتے ہوئے مطالبہ کیا کہ مذکورہ جگہوں میں بنیادی سیاحتی ڈھانچے کو تعمیر کرنے کے لئے معقول بندوبست کیا جائے۔
 

فلو اورکووڈ ویکسین بیک وقت دی جا سکتی ہے : ڈاک

سرینگر//ڈاکٹر ایسوسی ایشن کشمیر نے کہا ہے کہ لوگ ایک ہی وقت میں کووڈ اور فلو کی ویکسین لے سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ویکسین لینے میں کوئی پریشانی نہیں ہے اور اس سے مدافتی ردعمل پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کشمیر کے صدر ڈاکٹر نثارالحسن نے کہا ہے کہ کووڈ مخالف ویکسین اور فلو ویکسین لوگ ایک ساتھ لے سکتے ہیں اس میں کوئی قباحت نہیں ہے اور ناہی اس میں کوئی خطرہ ہے ۔ انہوںنے کہا کہ کووڈ19 ویکسین اور فلو کا ایک ساتھ ملنا محفوظ ہے اور آپ کے مدافعتی ردعمل کو متاثر نہیں کرے گا۔ڈاکٹرنثارالحسن نے کہا کہ یہ ایک ہی وقت میں کوویڈ شاٹ اور فلو کا شاٹ لینا اتنا ہی محفوظ اور موثر ہے جتنا کہ انہیں کئی دن یا ہفتوں کے فاصلے پر رکھنا ہے۔انہوں نے کہا کہ آپ دونوں ویکسین ایک ہی بازو سے لے سکتے ہیں ، لیکن فراہم کرنے والوں کو کم از کم ایک انچ تک انجیکشن سائٹس کو الگ کرنا چاہیے۔پہلے سی ڈی سی نے سفارش کی تھی کہ لوگوں کو اپنی کوویڈ 19 ویکسینیشن اعلیحدہ لینی چاہیے اور کووڈ 19 ویکسینیشن سے کم از کم 2 ہفتے پہلے یا بعد میں کوئی دوسری ویکسینیشن شیڈول کرنی چاہیے۔انہوںنے کہا کہ تاہم یہ احتیاط اس لئے رکھی گئی تھی کیوںکہ ہم کووڈ ویکسین کے رد عمل سے ناآشنا تھے تاہم اب وہ بات نہیں رہی ہے اور اب اس کووڈ بحران میں فلو ویکسین لیناانتہائی ضرور ی بن گیا ہے ۔ انہوں نے کہا بیک وقت دونوں وائرس سے متاثر ہونا ممکن ہے اور شدید بیمار ہونے کے امکانات کو بڑھا سکتا ہے۔انہوںنے کہا کہ رواں برس فلو کا زیادہ اثر ہوسکتا ہے کیوں کہ گزشتہ برس کوو ڈ کی وجہ سے ماسک کا استعمال ، سماجی دوری اور احتیاط لوگ برت رہے تھے اور اس سال اس میں تخفیف دیکھنے کو مل رہی ہے ۔
 
 
 

شاہراہ پر 2مسافر گاڑیاں ملبے تل دب گئیں،مسافر بچ گئے

محمد تسکین
بانہال// سنیچروار کی صبح گیارہ بجے سے شروع ہوئی ہلکی ہلکی بارشوں کا سلسلہ شام چھ بجے تک جاری رہا ۔ رامبن کے علاقے میں تیز بارشوں کی وجہ سے جموں سرینگر شاہراہ پر سیتارام پسی ماروگ رامبن کے قریب ملبے کی بھاری تعداد میںپسی کی صورت میں شاہراہ پر گر آئی جس کی وجہ سے وہاں گزر رہی دو مسافر گاڑیاں ملبے میں پھنس گئیں تاہم تمام مسافر بچ نکلے اور بعد میں دونوں مسافر بردار گاڑیوں ٹاویرا اور نجی کار کو اس ملبے سے باہر نکالا گیا۔ ٹریفک کنٹرول یونٹ رامبن نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ بارشوں کی وجہ سے رامبن کے نزدیک کیلا موڑ اور ماروگ کے درمیان سیتارام پسی سنیچر کے روز ایکٹیو رہی اور وقفے وقفے سے ملبہ گرتا رہا تاہم ملبے کو ساتھ ساتھ ہٹاکر ٹریفک متاثر ٹریفک کو بحال کیا جاتا رہا ۔ انہوں نے کہا سنیچروار کے روز شاہراہ مجموعی طور ٹریفک کیلئے بحال رہی اور کئی مقامات پر شاہراہ پر  پتھر اور پسیاں بھی گرتی رہیں ۔ انہوں نے کہا کہ فورلین شاہراہ کی کشادگی کی وجہ سے گرتے ملبے سے ٹریفک کی نقل وحرکت پر کوئی خاص اثر نہیں پڑا اور  ملبے کو ساتھ ساتھ صاف کرکے سڑک کو قابل امدورفت بنایا گیا ۔ اس دوران ٹریفک ایڈوائزری کے مطابق اتوار کے روز موسم اور سڑک کی بہتر صورتحال کے پیش نظر مسافر گاڑیوں کو دونوں طرف سے چلنے کی اجازت ہوگی البتہ مال بردار ٹرکوں کو ادہمپور سے وادی کشمیر کی طرف چلنے کی اجازت دی جائے گی۔
 
 
 

راہل گاندھی کا کشمیری پنڈتوں کا دیاگیا بیان حوصلہ افزا:ستیش محلدار

 سرینگر //مہاجر کشمیری پنڈتوں کی مصالحت ، واپسی اور بحالی تنظیم کے چیئرمین ستیش محلدار نے کانگریس لیڈر راہل گاندھی کے اس بیان کا خیر مقدم کیاہے، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ وہ کشمیری پنڈتوں کیلئے کچھ کریں گے۔کے این ایس کے مطابق Reconciliation, Return and Rehabilitation of Migrant Kashmiri Pandits  کے چیئرمین ستیش محلدار نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ’ ہم کشمیری پنڈت برادری راہل گاندھنی کے اپنی برادری کے بھائیوں کے بارے میں خدشات کی تعریف کرتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ راہل گاندھی ایک کشمیری پنڈت ہیں ، اندرا گاندھی کے پوتے ، جن کی پنڈت برادری نے تعریف کی اور پورے دل سے ہمیشہ کشمیر میں ووٹ دیا۔ اس نے اپنی کشمیری پنڈت ہونے کی شناخت کو تقویت دی ہے جس سے پریشان پنڈت برادری کو ایک نئی توانائی ملی ہے۔ستیش محلدارنے کہاکہ راہول گاندھی کشمیری پنڈت برادری کا لیڈر ہے۔اس نے کشمیری پنڈت برادری سے وعدہ کیا ہے جو ان کی اپنی ہے۔انہوںنے کہاکہ ہم امید کرتے ہیں کہ وہ اپنی کمیونٹی کا مقصد اٹھائے گا اور انصاف کے حصول میں مدد کرے گا جو کہ گزشتہ تین دہائیوں سے کشمیری پنڈتوںکو چھوڑ رہا ہے۔آرآرآرایم کے چیئرمین ستیش محلدارنے اپنے بیان میں کہاکہ اپنی کشمیری پنڈت شناخت کی تصدیق کرتے ہوئے ، پوری کمیونٹی اب راہل گاندھی کی طرف دیکھ رہی ہے کہ وہ ہمارے مسائل حل کریں، وادی میں ہماری باعزت واپسی میں ہماری مدد کریں اور انصاف حاصل کریں۔انہوںنے کہاکہ ہم امید کرتے ہیں اور دعا کرتے ہیں کہ کشمیری پنڈت برادری ، کانگریس اور نہرو گاندھی خاندان کے درمیان جو رشتہ تھا وہ جاری رہے گا۔ نوے کی دہائی کا آغاز کمیونٹی ، جموں و کشمیر اور ملک کے لئے بہت برا مرحلہ تھا۔ کشمیری پنڈتوں کو بہت تکلیف پہنچی ہے اور ہم امید کرتے ہیں کہ راہل گاندھی کمیونٹی کے لیڈر کی حیثیت سے وادی میں امن اور ہم آہنگی لانے کے لیے کے پی اور کشمیریوں کی مدد کریں گے۔
 
 
 
 

بانڈی پورہ میں تعینات24پولیس اہلکار ترقیاب

سرینگر//ڈی پی سی کی سفارشات کی بنیاد پر ایس ایس پی بانڈی پورہ محمد زاہد جے کے پی ایس نے22کانسٹیبلوں کے حق میں انسٹیو پروموشن سے نوازا ہے۔ترقی پانے والے تمام پولیس اہلکارایگزیکٹو ونگ سے تعلق رکھتے ہیں اور ضلع بانڈی پورہ میں اپنی ڈیوٹی کے فرائض سر انجام دے رہیں ہیں۔ایس ایس پی بانڈی پورہ نے انسیٹو پرموشن حاصل کرنے والے پولیس اہلکاروں اور ان کے خاندان کے افراد کو اس کامیابی پر مبارکباد دی۔ امید ظاہر کی مذکوریان مستقبل میں بھی جوش اور ولولے کیساتھ عوام الناس کی خد مت سرانجام دیتے رہیں گے۔(جے کے این ایس)
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

کورونا رہنما خطوط پر عمل درآمد | ڈپٹی کمشنر سرینگر نے بازاروں کا اچانک معائنہ کیا

سرینگر// سرینگر میں کوویڈ 19 کے مناسب روئے کی پابندی کو یقینی بنانے کیلئے ڈپٹی کمشنر سرینگر محمد اعجاز اسد نے ہفتہ کو سرینگر شہر کے مختلف بازاروں کا اچانک معائنہ کیا۔بڑھتے ہوئے کووڈ کیسز کے تناظر میں یہ معائنہ کیا گیا اور اس بات کا پہلے سے جائزہ لیا گیا کہ کس طرح تاجر ، دکاندار اور عام طور پر لوگ بازاروں میں کوویڈ ایس او پیز کی پیروی کر رہے ہیں۔ اس کے علاوہ کاروباری برادری کو وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سی اے بی کو سختی سے اپنانے کے بارے میں آگاہی دی جا رہی ہے۔معائنہ کے دوران ، ڈی سی نے کوویڈ 19 ہدایات اور ایس او پیز کی خلاف ورزی پر کچھ کاروباری اداروں/شاپنگ کمپلیکس کو سیل کرنے کا حکم دیا۔شہر کے مختلف بازاروں بشمول پولو ویو ، ریگل چوک ، ریذیڈنسی روڈ ، گھنٹہ گھر ، امیرا کدل اور دیگر ملحقہ علاقوں کے معائنے کے دوران ڈپٹی کمشنر نے مختلف گاہکوں اور سیلز مین کو بغیر ماسک کے پایا۔انہوں نے دیگر افسران کے ساتھ مل کر گاہکوں اور کاروباری برادری کے ارکان کی مشاورت کی اور سیلز مین اور دیگر ورک فورس میں ماسک تقسیم کیے۔انہوں نے ان پر زور دیا کہ وہ کوویڈ ایس او پیز پر عمل کریں اور ماسک پہننا ، سماجی فاصلہ برقرار رکھنا اور دیگر طریقوں پر عمل کریں۔ایس ایس پی سرینگر سندیپ چوہدری ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر سرینگر ڈاکٹر سید حنیف بلخی ، اسسٹنٹ کمشنر ریونیو ، تحصیلدار ساؤتھ ، اور دیگر متعلقہ افسران ڈی سی کے ہمراہ تھے۔
 
 
 

حضرت بابا داؤد خاکی ؒ کے عرس پر تقریب 

سرینگر// حضرت بابا داؤد خاکیؒ کے عرس پر اُن کے آستان عالیہ واقع کوہ ماران پر منعقد ہوئی جہاں صبح سویرے ہی قرآن خوانی، ختمات المعظمات، دورد ازکار اور نعت منقبت کی روح پرور مجلس آراستہ ہوئی۔ جس کی پیشوائی پیرزادہ عبدالمجید مخدومی نے کی۔ وادی کے اطراف و اکناف سے آئے ہوئے عقیدت مندوں نے اس مجلس میں شرکت کی۔ اس موقعے پر حضرت بابا داود خاکیؒ کے علمی اور روحامی کمالات پر بھی روشنی ڈالی گئی۔ تقریب پر عالم الدین علامہ مولانا شوکت حسین کینگ، جمعیت ہمدانیہ کے جنرل سکریٹری پیرزادہ محمد اشرف عنایتی ،مخدوم ٹرسٹ کے چیئرمین شاہد جیلانی مخدومی اور پیرزادہ عبدالرشید مخدومی نعت خواں، حاجی محمد یوسف مخدومی اور امام جمعہ پیرزادہ حاجی علی محمد رینا مخدومی کے ساتھ ساتھ بقعہ عالیہ کے خدامان بھی تھے۔ حضرت شیخ سید شاہ ناصر الدین بنگالیؒ(سہروردی) کا عرس مبارک بھی عقیدت و احترا  کے ساتھ منایا گیا۔ اُن کے آستانِ عالیہ واقعہ سعدہ کدل میں صبح سویرے ہی قرآن خوانی، درود ازکار اور مولود خوانی کی مجلس آراستہ ہوئی ۔
 
 
 

تعلیم کے معاملات میںاجتماعی کوششوں کی ضرورت | پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن کی جانب سے کانفرنس 

سرینگر//پرائیویٹ سکولوںکو چاہئے کہ وہ معیاری تعلیم کو اپناتے ہوئے وادی کشمیر کو ایک ایجوکیشنل ہب میں تبدیل کریں اور درس و تدریس میں نئے چلینجوں کو قبول کرتے ہوئے طلبہ کے بہتر مستقبل کیلئے کام کریں ۔ ان باتوںکااظہار کشمیرڈویژن کے پرائیویٹ سکولوں کی ایک اہم کانفرنس میں مقررین نے کیا ۔ پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن کی جانب سے منعقدہ اس تقریب میں سینئر ایڈوکیٹ ظفر شاہ بطور مہمان خصوصی شامل تھے جبکہ ڈی پی سکول کے چیرمین وجے دھر مہمان ذی وقار کے تقریب میں شامل تھے ۔ کانفرنس کی صدار ت پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن کے صدرجی این وار نے کی جبکہ وادی کے نامور سکولوں کے ماہرین تعلیم اور مندوبین نے اس کانفرنس میں شرکت کی ۔ تقریب پر بولتے ہوئے ایڈوکیٹ ظفر شاہ نے بتایا کہ سکول مالکان کو قانونی طور پر کافی مواقعے فراہم کئے جارہے ہیں تاکہ سکولی بچوں کو معیاری تعلیم فراہم کرسکیں۔ انہوںنے سکول منتظمین پر زور دیاکہ وہ قواعد وضوابط پر عمل کرکے بہترطریقہ سے درس و تدریس کا عمل جاری رکھیں۔ تقریب پر اپنے خطاب میں دلی پبلک سکول کے چیئرمین وجے دھر نے بتایا کہ پرائیویٹ سکولوں کو آپسی اتحاد اور یکجہتی کا مظاہرہ کرکے پرائیویٹ سکولوں کی بہبود کیلئے کام کرنا چاہئے ۔ اس موقع پر ایسوسی ایشن کے چیئرمین جی این وار نے بتایا کہ پرائیویٹ سکولوں کے تمام زمہ داروں اور ممبران کو چاہئے کوہ وہ پرائیویٹ سکولوںکودرپیش مسائل کے ازالہ کیلئے اجتماعی کوششیں بروئے کار لائیں۔ انہوںنے کہاکہ وادی میں پرائیویٹ سکولوں پر عام لوگوں کی امیدیں جڑی ہوئی ہیں جن پر کھرا اترنے کیلئے ہمیں معیاری تعلیم کی طرف توجہ مرکوز کرنی چاہئے ۔ انہوںنے کہاکہ درس و تدریس ایک عبادت ہے جو ایک استاد کیلئے ایک بڑی نعت ہے ۔
 
 
 

چاڈورہ کرالواری میں پینے کے پانی کی عدم دستیابی

 
سرینگر//چاڈورہ کرالواری میں پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی کے نتیجے میں لوگ مشکلات سے دوچار ہیں ۔مقامی لوگوں نے کہا کہ انہیں آلودہ پانی استعمال کرنا پڑتا ہے جس کی وجہ سے بیماریاں پوٹھنے کا خطرہ لاحق رہتا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ اگر چہ انہوں نے کئی بار متعلقہ محکمہ کی نوٹس میں یہ بات لائی ہے لیکن کوئی سدباب نہیں ہوا۔مقامی لوگوں نے ڈپٹی کمشنر بڈگام سے اس سلسلے میںمداخلت کی اپیل کی ہے۔سی این آئی
 
 

پولیس لائنز کولگام میں ’پائپنگ ‘تقریب

کولگام//ضلع پولیس لائنز میںحال ہی میں ترقی پانے والے3ایس آئی ،5اے ایس آئی ،10ہیڈکانسٹیبلوں ، 11سلیکشن گریڈ کانسٹیبلوں کی پائپنگ کیلئے تقریب منعقد ہوئی۔ایس پی کولگام گریندرپال سنگھ نے ترقی پانے والے افسران و اہلکاروں کے کندوں پر بیچ لگائے ۔تقریب کے دوان ضلع کولگام کے ایڈیشنل ایس پی کولگام ذوالفقار احمد(جے کے پی ایس )کے علاوہ کولگام کے دیگر افسران و اہلکاروں نے شرکت کی۔تقریب کے دوران خطاب کرتے ہوئے ایس پی کولگام نے ترقی پانے والے افسران اورعہدیداروں کو مبارکباد دی۔ انہوں نے کہا کہ ہر کامیابی کے ساتھ زیادہ ذمہ داری بنتی ہے اور ہرپولیس اہلکارکو اپنا وقت اور توانائی عوام الناس کی فلاح و بہبود کیلئے وقف کرنا چاہئے۔اس کے علاوہ ایس پی کولگام نے انہیں اپنے فرائض کیلئے پرعزم رہنے کا مشورہ دیا اور اس امید کا اظہار کیا کہ وہ مستقبل میں بھی اپنے فرائض کی انجام دہی لگن کے ساتھ جاری وساری رکھیں گے۔
 
 

غلام محمد میر ٹورسٹ گائیڈ ایسوسی ایشن گلمرگ منتخب

مشتاق الحسن 
ٹنگمرگ //سیاحتی مقام گلمرگ میں ٹورسٹ گائیڈ ایسوسی ایشن کا صدراتی چناو عمل میں لایا گیا جس میں 326ٹورسٹ گائیڈوں نے حصہ لیکر ووٹ ڈالے ۔ووٹنگ صبح دس بجے شروع ہوکر سہہ پہر تین بجے اختتام پذیر ہوئی۔ معروف ٹورسٹ گائیڈ غلام محمد میرنے 242ووٹ حاصل کرکے جیت درج کی ۔ اس موقع پر ٹورسٹ گائیڈوں نے غلام محمد میر کی جیت پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے پٹاخے سرکے ۔نو منتخب صدر نے سیاحت کو فروخت دینے کے لیے محکمہ سیاحت کی کاوششوں کی سرہنا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ماہ اکتوبر سے ملکی سیاحوں کی خاصی تعداد وارد کشمیر ہونے سے گلمرگ کی رونق بحال ہوگی ۔
 

حقانی ٹرسٹ کااظہار تعزیت 

 
نیوذ ڈیسک
سرینگر//حقانی میموریل ٹرسٹ نے مولانا سید ریاض ہمدانی کی قریبی رشتہ دار اور سید محمدشفیع کی بہو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ ٹرسٹ کے سرپرست اعلیٰ سید حمیداللہ حقانی اور جنرل سکریٹری بشیر احمدڈار نے مرحومہ کی مغفرت اور پسماندگان کیلئے صبر جمیل کی دعا کی ہے ۔
 
 
 

ایڈوکیٹ مزمل ٹنگمرگ بار کے صدر منتخب

مشتاق الحسن
 ٹنگمرگ //ٹنگمرگ بار ایسوسی ایشن کا صدراتی چناو ایڈوکیٹ مزمل جان نے دوسری بار جیت لیاہے۔منصف کورٹ کمپلیکس ٹنگمرگ میں بار ایسوسی ایشن کا چناو عمل میں لایا گیاجس میں ایڈوکیٹ مزمل جان نے اپنے مدمابل ایڈوکیٹ رفیق زمان کرمانی کو شکست دیکر دوسری مرتبہ صدارتی عہدے پر جیت درج کی۔ ٹنگمرگ کے وکلاء نے ایڈوکیٹ مزمل جان کو مبارک باد دی ہے۔
 
 
 

 ضلع بارہمولہ کے کئی سیاسی اراکین کی پیپلز کانفرنس میں شمولیت 

سرینگر//ضلع بارہمولہ میں اپنی پارٹی اور دیگر جماعتوں کے سیاسی کارکنوں نے ہفتہ کے روزپیپلز کانفرنس میں شمولیت اختیار کی ۔ایک بیان کے مطابق پارٹی صدر سجاد لون نے پارٹی میں شامل ہونے والے نئے کا رکنوں کی پارٹی میں شمولیت کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ان کی شمولیت سے پی سی کو ایک مضبوط سیاسی قوت کے طور پر ابھرنے میںبہت زیادہ مدد ملے گی۔ اس موقع پر پارٹی کے نائب صدر عبدالغنی وکیل ، سینئر قائدین فیاض احمد میر اور بشیر احمد ڈار بھی موجود تھے۔پارٹی میں شامل ہونے والوں میں بی ڈی سی چیر مین رفیع آ باد بارہمولہ غلام محمد میر ، تسلیمہ اختر اورڈ نگی وچھہ رفیع آباد اور زینہ گیر سوپور سے ڈی ڈی سی انتخا بات میں حصہ لینے والے امیدواروں کے علاوہ ان کے ساتھ درجنوں کارکن اور حامی بھی تھے۔پارٹی میں شامل ہونے والے چہروں کا خیرمقدم کرتے ہوئے سجادغنی لون نے کہا ’’ میں آپ سب کا دل سے خیر مقدم کرتا ہوں آپ کی شمولیت سے پیپلز کانفرنس کو ایک مضبوط سیاسی قوت کے طور پر ابھرنے میں اور زیادہ مدد ملے گی‘‘۔لون نے دعویٰ کیا کہ مختلف سیاسی رہنما اور کارکنان پیپلز کانفرنس میں شمولیت اختیار کر رہے ہیں اور وہ عنقریب ہی ایک بڑی سیاسی جماعت طور پر سامنے آئیں گے۔ انہوںنے کہا کہ پیپلز کانفرنس جموں و کشمیر کی سیاست ، ترقی اور فلاح و بہبود میں بھرپور روال ادا کرنا چاہتی ہے۔ ہم پہلے ہی ایک مضبوط سیاسی قوت کے طور پر ابھر چکے ہیں اور جموں و کشمیر کے عوام کو موجودہ تعطل سے نکالنے کے لیے ہر ممکن کوشش کریں گے۔ 
 
 

آلوسہ بانڈی پورہ میں غیر قانونی عمارٹی لکڑی ضبط

 
عازم جان 
بانڈی پورہ//بانڈی پورہ پولیس نے آلوسہ میں غیر قانونی طورکاٹی گئی عمارتی لکڑی ضبط کر کے ایک شہری کو گرفتار کرنے کا دعوی کیا ہے ۔اس سلسلے میں ایف آئی نمبر 152/2021زیر فارسٹ ایکٹ ایک کیس درج کیا گیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق بانڈی پورہ پولیس نے مصدقہ اطلاع ملنے پر ڈی ایس پی ہیڈکواٹر ڈاکٹر محمد ادریس کی نگرانی میں چوکی افسر آلوسہ سب انسپکٹر شکیل احمد کی قیادت میں 10اور 11ستمبر کی درمیانی شب کو گنائی محلہ آلوسہ میں عادل مجید گنائی کے گھر پر چھاپہ مارااور عمارتی لکڑی موقع پر برآمد کر کے ملزم کی گرفتاری عمل میں لائی۔بانڈی پورہ پولیس نے ایس ایس پی بانڈی پورہ محمد زاہد کی ہدایت پر یہ کارروائی انجام دی ہے۔ادھر کھویہامہ رینج کے رینج افسر محمد مقبول لون نے دعویٰ کیا ہے کہ پولیس کے ساتھ مشترکہ کارروائی عمل میں لائی گئی ہے جس میںآلوسہ کا بیٹ فارسٹربھی شامل تھا۔ 
 

ترقیاتی کمشنر بڈگام کا پنڈت کالونی شیخ پورہ میں عوامی دربار

 
بڈگام//ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزا نے سنیچر کوپنڈت کالونی شیخ پورہ میںایک عوامی دربار کی صدارت کی۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ’’ایسے پروگرامات عوام اور انتظامیہ کے درمیان فاصلے کو ختم کرنے کا ایک پلیٹ فارم ہے ، عام طور پر عوام نے ایسے اقدامات کو نیک نیتی کے ساتھ قبول کیا ہے۔‘‘انہوں نے کشمیری پنڈت مہاجروں پر زور دیا کہ وہ حقیقی مطالبات اور شکایات درج کریں اور انہیں تمام حقیقی مسائل اور مطالبات کے فوری حل کی یقین دہانی کرائی۔انہوں نے تمام ضلعی اوردیگرافسران کو ہدایت دی  کہ تمام حقیقی مطالبات اور شکایات درج کی جائیں جو کہ آگے کی کارروائی کے لیے عمل میں لائی جائیں۔کالونی کے باشندوں نے جو مسائل اٹھائے اُن رابطہ سڑک اور کالونی کی اندرونی گلیوں کی بہتری ، بلا تعطل پانی اور بجلی کی فراہمی ، پارک کی دیکھ بھال ، مزید کوڑے دان اور اسٹریٹ لائٹس کی تنصیب ، لائبریری کی تعمیر ، عمارتوں کے مواد کا ملبہ ہٹانا ، پسماندہ باشندوں کے لیے راشن کارڈ کا اجراء اور نکاسی آب کا مضبوط نظام شامل تھا۔ان مطالبات کا جواب دیتے ہوئے ڈی سی نے یقین دلایا کہ انتظامیہ کو عوام کے دروازوں تک پہنچانے کا مقصد اور مقصد یہ ہے کہ کالونی میں ضروریات اور دیگر بنیادی ضروریات کا موقع پر جائزہ لیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ افسران پہلے ہی اس طرح کے تمام حقیقی مطالبات درج کر چکے ہیں اور ان میں سے بہت سے مطالبات جلد حل کر لیے جائیں گے۔
 
 

نیشنل کانفرنس کا مشتاق لون کو برسی پر خراج عقیدت

سرینگر//نیشنل کانفرنس نے لولاب میں مشتاق احمد لون کی 19ویں برسی پر مرحوم کے قبرستان پر گلباری اور فاتحہ خوانی انجام دی جبکہ اس کے بعد ایک تقریب پر وہاں موجود عہدیداران اور معزز شہریوں نے مرحوم کوخراج عقیدت پیش کیا ۔ تقریب سے پارٹی کے سینئر لیڈران قیصر جمشید لون اور نذیر احمد خان گریزی نے خطاب کرتے ہوئے ان کی عوامی خدمات کو ناقابل فراموش قرار دیا۔ انہوں نے پارٹی سے وابستہ افراد پر زور دیا کہ وہ پارٹی کی مضبوطی کیلئے کام کریں کیونکہ پارٹی کی مضبوطی کی صورت میں ہی ہر ایک چیلنج میں سرخرو ہوسکتے ہیں۔ دونوں لیڈران نے کہا کہ عوام اس وقت انتظامی ناکامی کی چکی میں پس رہے ہیں۔ ادھر پارٹی ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس پر بھی خراج عقیدت کی تقریب منعقد ہوئی ۔ جس میں پارٹی کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے مشتاق احمد لون کو خراج عقیدت پیش کیا۔ 
 

ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا تنویر صادق سے اظہارِ تعزیت

سرینگر// نیشنل کانفرنس صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے مولوی محمد امین ساکن حسن آباد رعناواری کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے اس سانحہ ارتحال پر مرحوم کے جملہ سوگواران خصوصاً مرحوم کے برادرزادہ تنویر صادق کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا اور مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔ انہوں نے اس سانحہ پر تنویر صادق کے ساتھ ٹیلی فون پر رابطہ کرکے تعزیت کی ۔ پارٹی کے نائب صدرعمر عبداللہ اورجنرل سکریٹری علی محمد ساگرسمیت دیگر لیڈران نے بھی تعزیت کا اظہار کیا ۔
 
 
 
 

انجمن علماء کامولانا حبیب الرحمان کے انتقال پر اظہاررنج

سرینگر// انجمن علما وائمہ مساجدجموں وکشمیر کے امیر حافظ عبد الرحمن اشرفی نے مولانا حبیب الرحمن لدھیانوی (پنجاب)کے ا نتقال پردکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مولانا مرحوم عالم اسلام کا ایک بہت بڑا سرمایہ تھا ۔انہوں نے کہا کہ موصوف نہ صرف پنجاب بلکہ برصغیر میں  مسلمانوں کی ایک معتبرآواز تھے ۔انجمن نے مولانا مرحوم کے پسماندگان کے ساتھ تعزیت کا اظہارکیا اور مرحوم کے بلند درجات کیلئے دعا کی۔
 
 

تازہ ترین