تازہ ترین

ایما رادوکافائنل میں لیلا فرنانڈیز کسیاتھ ہفتہ کومقابلہ ہوگا

تاریخ    12 ستمبر 2021 (00 : 01 AM)   


نیو یارک۔برطانیہ کی ایما رادوکانو نے فلشنگ میڈوز میں اپنا غالبہ جاری رکھا اور یونان کی نمبر 18 ماریا ساکاری کو سیمی فائنل میں 6-1 ، 6-4 سے ہرا کر یو ایس اوپن میں اپنے پہلے بڑے فائنل میں جگہ بنائی۔ اس کامیابی کے ذریعہ وہ مرد یا خواتین کے زمرے سے کوالیفائر کی حیثیت سے کسی بڑے فائنل میں رسائی حاصل کرنے والی پہلی کھلاڑی ہونے کا اعزاز حاصل کرلیا ہے۔نوجوان کھلاڑیوں کے درمیان یہ دوسرا فائنل ہوگا کیونکہ اس قبل سرینا ولیمز نے 1999 کے یو ایس اوپن میں مارٹینا ہنگس کو شکست دی تھی اس کے بعد رڈوکانو کا مقابلہ 19 سالہ کینیڈین لیلا فرنانڈیز کے ساتھ ہفتہ کو فائنل میں ہوگا۔صرف اپنے دوسرے گرانڈ سلام میں کھیلنا اور یو ایس اوپن میں پہلی مرتبہ شرکت کرنے کے باجود رڈوکانو چھ میچوں میں ایک سیٹ بھی ہارنے کے قریب نہیں پہنچی۔ کوارٹر فائنل میں اولمپک کی گولڈ میڈلسٹ بیلنڈا بینسک اور سیمی فائنل میں ساکاری کی جیت کے ساتھ ، 150 ویں رینک والے رڈوکانو نے اپنے کیریئر میں پہلی بار یکے بعد دیگرے سہر فہرست 20 کھلاڑیوں کے خلاف فتوحات حاصل کی ہیں۔ساکاری نے سیزن کے اپنے دوسرے بڑے سیمی فائنل میں رسائی سے قبل 2019 کی چمپئن بینکا آندریسکو اور جمہوریہ چیک کی دنیا کی نمبر 4 کیرولینا پلسکووا کو شکست دی۔ یونان سے تعلق رکھنے والی 26 سالہ کھلاڑی اعتماد سے بھرپور میچ میں آئی ، خاص طور پر کوارٹر فائنل میں پلسکووا کے خلاف راست سٹوں کی شاندار جیت کے بعد ایک ایسا میچ جس میں اسے کبھی بریک پوائنٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑا۔یادر ہے کہ کورونا اور چند اہم کھلاڑیوں کے زخمی ہوکر سیزن کے آخری گرانڈ سلام یوایس اوپن سے باہر ہونے کے بعد نوجوان کھلاڑیوں کو اپنی صلاحیتوں کو منوانا کا سنہری موقع ملا ہے جس میں خاص کر برطانیہ کی ایما نے سب سے زیادہ فائدہ اٹھایا ہے ۔ٹورنمنٹ میں اولمپک کے گولڈ میڈلسٹ ، سابق عالمی نمبر ایک ایشلی بارٹی کے علاوہ خطاب کی مضبوط دعویدار ناؤمی اوسکا بھی موجود تھی لیکن ایما اور لیلا کا فائنل ایک نئی شروعات ہے ۔