تازہ ترین

سرکاری ملازمین کے مہنگائی الائونس میں 11فیصد کااضافہ

اطلاق یکم جولائی سے ہوگا، محکمہ خزانہ کی جانب سے تحریری احکامات صادر

تاریخ    3 اگست 2021 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر //حکومت نے جموں و کشمیر کے تمام سرکاری ملازمین اورپنشنروںکودئیے جانے والا مہنگائی بھتہ یا ڈی اے17 فیصد سے بڑھا کر28 فیصد کر دیاہے ،اور اس طرح  ملازمین اورپنشنروں کے مہنگائی بھتے میں 11فیصد کااضافہ کیاگیا ہے۔پچھلے ہفتے مرکزی سرکار نے ملازمین کے واجب الادا مہنگائی الاونس کو واگذار کرنے کے احکامات دیئے تھے جو پچھلے سال مارچ میں منجمند رکھا گیا تھا۔ پیر کے روزفائنانشل کمشنر فائنانس ڈاکٹرارون کمار مہتا، جو جموں وکشمیرکے چیف سیکریٹری بھی ہیں ،کی جانب سے جاری ایک سرکاری آرڈرزیرنمبر204-Fآف 2021 جاری کیا گیاجس کے تحت محکمہ خزانہ نے 7 ویں پے کمیشن کے تحت باقاعدہ تنخواہ کی سطح پر کام کرنے والے تمام سرکاری ملازمین کیلئے یکم جولائی2021 سے مہنگائی الائونس میں تبدیلی کو منظوری دی۔سرکاری آرڈرکے مطابق جون 2021 تک17 فیصد کے مقابلے میں ڈی اے یعنی مہنگائی بھتے کا حساب اب ملازمین کی بنیادی تنخواہ کے 28 فیصد کی بنیاد پر کیا جائے گا ۔اسی طرح محکمہ خزانہ نے دوسرے آرڈر میں پینشروں کو دئیے جانے والے مہنگائی بھتے کی شرح میں تبدیلی کومنظوری دی ۔17 فیصد بنیادی پنشن سے ، اب پنشنرز کو 28 فیصد بنیادی پنشن بطور ڈی اے ملے گا۔نظر ثانی شدہ تنخواہ کے ڈھانچے میں ’بنیادی تنخواہ‘کی اصطلاح کا مطلب ہے کہ ساتویں تنخواہ کمیشن کی سفارشات کے مطابق تنخواہ میٹرکس میں مقررہ سطح پر دی گئی تنخواہ ، لیکن اس میں کسی اور قسم کی تنخواہ شامل نہیں ہے۔ اضافہ یکم جنوری2020،یکم جولائی2020اوریکم جنوری2021 کو پیدا ہونے والی اضافی قسطوں کو شامل کرتا ہے۔ مہنگائی الاؤنس کی شرح یکم جنوری2020 سے30جون2021 تک17 فیصد رہے گی۔
 

تازہ ترین