تازہ ترین

مانسون اجلاس کے پہلے 2 ہفتے اپوزیشن کے ہنگامے کی نذر

تاریخ    31 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


 نئی دہلی// پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس کے پہلے دو ہفتے پیگاسز۔ جاسوسی معاملے ، کسان تحریک اور مہنگائی کے سلسلے میں کئے گئے اپوزیشن کانگریس، ترنمول کانگریس اور بائیں بازو سمیت متعدد دیگر پارٹیوں کے ہنگامے کی نذر رہے ۔ اگرچہ حکومت لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں اس دوران شور و غل کے درمیان ہی کووڈ پر بحث کرانے ، کچھ ضروری بل منظور کرانے اور وزیروں کے بیان ایوان میں پیش کرنے میں کامیاب رہی۔پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس 19 جولائی کو شروع ہوا تھا اور اپوزیشن پہلے دن سے پیگاسز۔ جاسوسی معاملے کی جانچ کرانے کی مانگ، کسان تحریک کی حمایت اورمہنگائی کے خلاف ہنگامہ کررہی ہے ۔ اس سے دونوں ایوان میں تعطل برقرار ہے ۔ سیشن کے دوسرے ہفتے کے آخری دن کل بھی دونوں ایوانوں میں پیگاسز جاسوسی، مہنگائی اور زرعی قوانین سمیت دیگر امور کے تعلق سے اپوزیشن پارٹیوں کے ارکان کا ہنگامہ جاری رہا۔ جس سے دونوں ایوانوں کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کردی گئی۔ دونوں ایوانوں میں نجی ارکان کا کام کاج نہیں ہوا۔اگرچہ لوک سبھا میں پریذائیڈنگ آفیسر راجندر اگروال نے قومی دارالحکومت خطہ اور ملحقہ علاقوں میں ایئر کوالٹی مینجمنٹ کمیشن بل 2021 اور جنرل انشورنس بزنس (نیشنلائزیشن) ترمیمی بل 2021 پیش کرائے اور ایوان کی کارروائی پیر تک ملتوی کردیا۔ ہنگاموں کے درمیان ، راجیہ سبھا کے ڈپٹی چیئرمین ہری ونش نے محدود ذمہ داری شراکت داری (ترمیمی) بل 2021 اور مطلق انشورنس اور کریڈٹ گارنٹی کارپوریشن (ترمیمی) بل 2021 پیش کرائے ۔ اس کے بعد ، وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر نے بحث کے لئے ناریل ڈیولپمنٹ بورڈ (ترمیمی) بل 2021 متعارف کرایا اور بحث کیے بغیر ایوان نے اسے صوتی ووٹ کے ذریعہ منظور کیا۔ اس کے بعد ڈپٹی چیئرمین نے ایوان کی کارروائی پیر تک ملتوی کرنے کا اعلان کیا۔ گذشتہ ہفتے دونوں ایوانوں میں ان لینڈ شپ بل ، 2021، ایئر پورٹ اکنامک ریگولیٹری اتھارٹی آف انڈیا (ترمیمی) بل 2021 ، فیکٹرس ریگولیشن بل 2021 ، انسالوینسسی اور دیوالیہ پن کوڈ (ترمیمی) بل 2021 ، جوینائل جسٹس (تحفظ اور دیکھ بھال) بل۔ 2021 ، نیوی گیشن میری ٹائم اسسٹنس بل 2021 ، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف فوڈ ٹیکنالوجی انٹرپرینیورشپ اینڈ مینجمنٹ بل 2021 منظور کیے گئے ۔اس سے قبل کے ہفتے اسی لوک سبھا میں ، اپوزیشن جماعتوں نے ہنگامہ کرتے ہوئے لوک سبھا اسپیکر کے پوڈیم کی طرف کاغذات پھاڑ کر پھینکے ۔ اس سے قبل راجیہ سبھا میں وزیر اطلاعات و ٹیکنالوجی اشونی وشنو کے ہاتھوں سے کاغذ چھیننے پر ترنمول کانگریس کے شانتو سین کوپورے اجلاس کے لیے ایوان کی کارروائی سے معطل کردیا گیا تھا۔ اس ہفتے ترنمول کانگریس کی شانتا چھتری ایوان میں احتجاج کرتے ہوئے بیہوش ہو گئیں۔