تازہ ترین

جے کے بینک اور پی این بی میٹ لائف کی20برس کی شراکت داری | گاہکوں کوبہترین اورمناسب مصنوعات فراہم کرنے کاعزم

تاریخ    29 جولائی 2021 (25 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک
سری نگر // دو دہائیوں کے باہمی تعلقات مکمل ہونے کے موقع پر ، جموں وکشمیر بینک اور پی این بی میٹ لائف کے مابین 20 ویں گورننگ کونسل کا اجلاس  بینک کے کارپوریٹ ہیڈکوارٹر میں ہوا۔اس میٹنگ میں بینک کے چیئرمین اور ایم ڈی آر کے چھبر نے پریذیڈینٹ نارجے گپتا ، وائس پریزیڈینٹ سجاد حسین ملک اور دیگر عہدیداروں کے ہمراہ جے اینڈ کے بینک کی ٹیم کی قیادت کی ، جبکہ بطور ایم ڈی اور سی ای او آشیش کمار سریواستو نے ڈائریکٹر پی این بی میٹ لائف سنجے وجے ، بزنس ہیڈ بینکا انشورنس اور ریٹیل ذیشان عندلیب اور پروجیکٹ ہیڈ جے اینڈ کے مختار احمد ڈار کے ہمراہ پی این بی میٹ لائف گروپ کی سربراہی کی ۔آر کے چھبر کی متحرک قیادت میں حالیہ مالی سال2020-21کے حوصلہ افزا ء نتائج حاصل کرنے پر جے اینڈ کے بینک کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے ، آشیش کمار سریواستو نے کہا کہ جے اینڈ کے بینک کا اپنے صارفین کے مفادات کے تحفظ کے لئے مشنری جوش پی این بی میٹ لائف کے لئے بھی بہت نتیجہ خیز ثابت ہواہے۔انہوں نے کہا ،’’جے اینڈ کے بینک جیسے پارٹنر کے ساتھ ، جو خطے میں ایک واضح موجودگی رکھتا ہے ، ہم خطے کے لوگوں کی ضروریات کے مطابق بہترین پروڈکٹس اور خدمات فراہم کرتے رہے ہیں۔‘‘انہوں نے کہا،’’یہاں جے اینڈ کے بینک جیسے بزنس پارٹنر کا ہونا ایک حقیقی اعزاز کی بات ہے ، کیونکہ اس مالیاتی ادارے کی ایک بہت بڑی اہمیت ہے جو کہ خطے کی مجموعی معیشت میں اہم کردار ادا کرتا رہا ہے۔ شراکت داری صحیح سمت میں آگے بڑھ رہی ہے اور میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ ہم آپ کے صارفین کو بہترین اور مناسب مصنوعات فراہم کرتے رہیں گے اور اپنے عمل کو آسان اور تیز تر بنائیں گے۔ ‘‘اس موقع پر سی ایم ڈی آر کے چھیبر نے پی این بی میٹلائف کے ساتھ بینک کی طویل وابستگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے بینک کے صارفین اور خاص طور پر عام لوگوں کی خدمت کے لئے اس رشتے کو مزید مستحکم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔سی ایم ڈی نے کہا ، ’’اس طویل المدتی شراکت داری کا مقصد اپنے صارفین کے مالی استحکام کو محفوظ بنانا ہے جبکہ انہیں ایک ہی چھت کے نیچے عالمی معیار کے فائنانشل پروڈکٹس فراہم کرنا ہے۔ اب تک ہم اپنے مقصد کو اچھی طرح سے پورا کرنے میں کامیاب ہوچکے ہیں لیکن اس خطے میں انشورینس سیکٹر کے دائرہ کارکو دیکھتے ہوئے ہمیں  بہت سے اور اہداف کو پورا کرنا ہے۔سی ایم ڈی نے انشورنس دعوئوں کے حل کے لئے آسان اور وقت کے مطابق نظاموں کو تیار کرتے ہوئے پروڈکٹس کی غلط فروخت سے بچنے کی ضرورت پر زور دیا۔انہوں نے مزید کہا ، ’’ہمیں صرف ملک میں تیزی سے بدلتے ہوئے مالیاتی شعبے کے ساتھ ہم آہنگی پیدا کرنے کی ضرورت ہے اور ہمیں اپنی مصنوعات اور خدمات کو ان کی فراہمی کے نظام کے ساتھ ساتھ تیار کرنا ہوگا جو نہ صرف ہمارے کسٹمر بیس کو برقرار رکھے بلکہ ان کی تعداد میں کئی گنا اضافہ کرے گا۔‘‘