تازہ ترین

مزید خبریں

تاریخ    27 جولائی 2021 (00 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک

ڈوڈہ میں کووڈ 19 کے 3 نئے مثبت معاملات | 13 مریض شفایاب ،188324 افراد نے ٹیکے لگوائے 

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع میں پیر کے روز صرف 3 نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیں اور 13 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق پیر کو ڈوڈہ، بھدرواہ، ٹھاٹھری ،گندوہ و عسر میں ہوئی کوؤڈ جانچ کے دوران تین افراد کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے جنہیں ہوم قرنطینہ میں رکھا گیا ہے اور تیرہ مریض شفایاب ہوئے ہیں اور اس طرح سے ضلع میں فعال کیسوں کی تعداد سمٹ کر 68 رہ گئی ہے جبکہ شفایاب ہوئے مریضوں کی مجموعی تعداد 6997 پہنچ گئی ہے۔ وہیں ضلع میں کورونا وائرس سے اب تک 124 افراد فوت ہوئے ہیں اور 188324 افراد کو ٹیکے لگائے گئے ہیں۔
 
 

ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ نے ٹھاٹھری کا کیا دورہ | عوامی مسائل کا لیا جائزہ، اے ای ای و جی آر ایس معطل 

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ وکاس شرما نے پیر کے روز ٹھاٹھری کا دورہ کیا جس دوران انہوں نے مقامی ڈی ڈی سی و بی ڈی سی ممبران، پنچائتی و بلدیا کے نمائندوں و سیول سوسائٹی کے وفود سے ملاقات کرکے عوامی مسائل کا جائزہ لیا۔ ڈی سی نے ایس ڈی ایم ٹھاٹھری اطہر آمین زرگر کی موجودگی میں آفیسروں کی میٹنگ بھی طلب کی اور علاقہ میں تعمیری سرگرمیوں سے متعلق جانکاری حاصل کی۔ وفود نے مختلف مسائل سے ڈی سی کو آگاہ کیا جن میں سڑکوں کی خستہ حالی، پینے کے پانی کی کمی، بجلی کی ناقص کارکردگی، ڈگری کالج کی تعمیر میں تاخیر، خوبصورت مقامات کو سیاحتی نقشہ پر لانے، بہتر ٹریفک نظام بنانا شامل ہے۔ڈی سی نے انہیں یقین دلایا کہ ان مسائل کا ترجیح بنیادوں پر ازالہ کیا جائے گا۔بجلی، جل شکتی و تعمیرات عامہ کے انتظامی یونٹ کشتواڑ کے ساتھ منسلک ہونے پر ڈی سی نے ایس ڈی ایم اے تفصیلی رپورٹ طلب کی تاکہ اعلیٰ حکام کے ساتھ اس معاملے پر مشاورت کی جا سکے۔ڈی سی نے اے ای ای جل شکتی کو دچھن کے اضافی چارج سے فارغ کیا۔اس دوران ڈپٹی کمشنر نے ڈیوٹی سے غیر حاضر رہنے کی پاداش میں محکمہ آبپاشی و فلڈ کنٹرول کے اے ای ای کو معطل کر کے آفیسروں و ملازمین کو ڈیوٹی کا پابند رہنے پر زور دیاوہیں پی ایم اے وائی میں ہیرا پھیری کرنے کی پاداش میں پنچایت باتھری کے جی آر ایس کو بھی معطل کرنے کے احکامات جاری کئے۔ ڈی سی نے لوگوں سے ایس او پیز پر عمل درآمد کرنے کی بھی اپیل کی۔
 

جموں و کشمیر کے نجی سیکٹر ملازمین کو بھی اب پنشن ملے گی: ایمپلائز پروویڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن

جموں// ایمپلائز پروویڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن (ای پی ایف او) کا کہنا ہے کہ اب مرکز کا پروویڈنٹ فنڈ ایکٹ جموں و کشمیر اور لداخ میں بھی لاگو ہو چکا ہے جس کے تحت ان یونین ٹریٹریوں میں نجی سیکٹر میں کام کرنے والے ملازموں کو بھی پنشن ملے گی۔یہ باتیں آرگنائزیشن کے ایک عہدیدار رضوان الدین نے پیر کے روز یہاں نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرنے کے دوران کہیں۔انہوں نے کہا: 'پہلے جموں و کشمیر اور لداخ کے پرائیویٹ ملازموں کا پروویڈنٹ فنڈ جموں و کشمیر ایمپلائز پروویڈنٹ فنڈ میں ہی جمع ہوتا تھا لیکن اب جموں و کشمیر اور لداخ یونین ٹریٹریز بن گئی ہیں لہٰذا اب دونوں یونین ٹریٹریوں میں مرکزی پروویڈنٹ فنڈ ایکٹ لاگو ہوا ہے'۔ان کا کہنا تھا: 'اس ایکٹ کے تحت اب ان یونین ٹریٹریوں کی نجی کمپنیوں میں کام کرنے والے ملازمین جنہوں نے دس برسوں تک پروویڈنٹ فنڈ بھرا ہو، کو پنشن ملے گی'۔موصوف نے کہا کہ اگر کسی ملازم کی دوران ملازمت کسی وجہ سے موت واقع ہوجائے تو اس کے لواحقین کو ایک سال تک پنشن ملے گی۔انہوں نے کہا کہ ہم نے سری نگر اور لداخ میں بھی اپنے دفتر کھولے ہیں۔
 

جموں میں یوم آزادی کی تقریبات | صوبائی کمشنر جموں نے اعلیٰ سطحی اجلاس میں انتظامات کا جائزہ لیا

 جموں// صوبائی کمشنر جموں ڈاکٹر راگھو لنگر نے پیر کو یوم آزادی 2021 کے جشن کے انتظامات کا جائزہ لینے کے لئے محکمہ کے سربراہان کے ایک اجلاس کی صدارت کی۔اجلاس کو بتایا گیا کہ پریڈ گراؤنڈ جموں میں جاری ترقیاتی کاموں کی وجہ سے مرکزی تقریب ایم اے اسٹیڈیم میں ہوگی ، جہاں مہمان خصوصی قومی پرچم لہراینگے۔افسران کو ان کے کردار اور ذمہ داری کے بارے میں حساس کرتے ہوئے صوبائی کمشنر نے ہدایت کی کہ وہ تمام اضلاع میں تقریبات کے انعقاد کو آسانی سے انجام دینے کے لئے پہلے سے ہی تمام انتظامات کو یقینی بنائے۔انہوں نے فول پروف انتظامات کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی طرح کی نرمی یا خامی برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا "یہ ہمارا اخلاقی فریضہ ہے کہ قومی تقریب کو روایتی جوش و خروش کے ساتھ منایا جائے اور تمام افسران کو یوم آزادی کی تقریبات کو ہموار اور کامیاب انعقاد کے لئے جوش و جذبے اور جذبے کے ساتھ کام کرنا چاہئے" ۔سیکورٹی انتظامات ، ٹریفک ، سکیورٹی پاس ، بیٹھنے کے انتظامات ، سجاوٹ ، دفاتر کی روشنی ، بجلی اور پانی کی فراہمی ، صفائی ستھرائی ، طبی سہولیات ، ثقافتی سرگرمیاں جیسے مختلف اہم امور پرمفصل بحث ہوئی۔ متعلقہ افسران کو ہدایات دی گئیں کہ وہ یقینی بنائیں کہ متعلقہ انتظامات مناسب طریقے سے اور پیشگی طور پر قومی تقریب کے انعقاد کے لئے انجام دیئے جائیں۔ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن اور جوائنٹ ڈائریکٹر انفارمیشن کو بتایا گیا کہ وہ پینٹنگ ، مضمون نویسی مقابلہ جات اور طلباء کے لئے مباحثے جیسے آن لائن مقابلے جیسی  سرگرمیاں کریں ۔متعلقہ افسران کو مزید ہدایت کی گئی کہ وہ یوم آزادی کی تقریبات کے موقع پر سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر مختلف سرگرمیوں کے ذریعے عوام کے درمیان آتم نربھر بھارت اور دیگر اسکیموں کے موضوع کو وسیع پیمانے پر پھیلائیں۔ ڈیو کام نے شجرکاری مہم کے انعقاد پر بھی زور دیا۔ڈیو کام نے تمام مدعو افراد کے لئے کوویڈ پروٹوکول کے مطابق بیٹھنے کے مناسب انتظامات کرنے اور جاری بارشوں کے موسم کو مدنظر رکھنے پر زور دیا۔متعلقہ محکمہ کو ہدایت کی گئی کہ وہ مختلف مقامات پر ایل ای ڈی اسکرینوں کے ذریعے مرکزی افعال کا براہ راست ٹیلی کاسٹ کو یقینی بنائے۔محکمہ صحت کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ تقریبات میں پیش کیے جانے والے ثقافتی پروگراموں کی ریہرسل کے آغاز سے ہی تھرمل چیکنگ اور وقتا فوقتا شرکاء کی RAT جانچ کے لئے ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکس کی ایک ٹیم کو تعینات کریں۔دریں اثنا ، جموں و کشمیر پولیس ، مسلح ، سی آر پی ایف ، لیڈی کنٹیجینٹ ، ہوم گارڈ ، فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز اور جنگل پروٹیکشن فورس سمیت دستے مارچ مارچ میں حصہ لیں گے اور ماضی کے طریقوں کے مطابق بینڈ انتظامات کریں گے۔ڈی سی جموں سے کہا گیا تھا کہ وہ اس موقع پر تشریف لے جائیں تاکہ ٹی کی تیاری کا جائزہ لیا جاسکے اور وقوعہ کو آسانی سے انجام دینے کے لئے مرمت اور تزئین و آرائش کے کاموں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنایا جاسکے۔
 

کووڈ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر41ہزار کا جرمانہ | رام بن میں2337 ٹیکے لگائے گئے ، 1583 نمونے جمع

رام بن//ضلع رام بن میں کووڈ پروٹوکول کے نفاذ کے لئے مہم کو جاری رکھتے ہوئے انفورسمنٹ ٹیموں نے چہرے کے ماسک پہنے بغیر گھومنے اور جسمانی فاصلہ برقرار نہ رکھنے پر متعدد خلاف ورزی کرنے والوں پر جرمانہ عائد کیا۔نفاذ کرنے والی ٹیموں نے اپنے اپنے دائرہ اختیار میں معائنہ کے دوران 41ہزار200 روپے جرمانہ وصول کیا۔انفورسمنٹ افسران نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ چہرے کے ماسک پہنیں اور جسمانی فاصلہ برقرار رکھیں اس کے علاوہ وہ اپنے قریبی سی وی سی میں کوویڈ ویکسی نیشن کی خوراکیں لیں۔ ڈسٹرکٹ امیونائزیشن آفیسر ڈاکٹر سریش نے بتایا کہ پیر کو ضلع رام بن میں 2337 افراد کو پہلی اور دوسری کوویڈ ویکسین کی خوراکیں فراہم کی گئیں۔چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر محمد فرید بھٹ کے جاری کردہ روزانہ بلیٹن کے مطابق محکمہ صحت نے 1583 نمونے جمع کیے ہیں جن میں 362 آر ٹی-پی سی آر اور 1221 آر اے ٹی نمونے شامل ہیں ، اس کے علاوہ ضلع میں ویکسی نیشن مراکز میں 2337 افراد کو کوڈ ویکسین فراہم کی گئی ہے۔
 

مہاجر قبائلی آبادی کا سروے اور مردم شماری |  کٹھوعہ میں ڈپٹی کمشنر نے پیشرفت کا جائیزہ لیا

 کٹھوعہ//ڈپٹی کمشنر کٹھوعہ راہول یادو نے ڈی سی آفس کمپلیکس میں منعقدہ ایک میٹنگ میں ضلع میں خانہ بدوش / مہاجر قبائلی آبادی کی گنتی اور سروے کی پیشرفت کا جائزہ لیا۔اجلاس کے آغاز میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کٹھوعہ اتول گپتا (ڈسٹرکٹ نوڈل آفیسر) نے گنتی کی پیشرفت کے بارے میں ڈی سی کو آگاہ کیا۔اسی طرح ایس ڈی ایم بنی ، تحصیلدار بسوہلی اور تحصیلدار لوہائی ملہار نے بھی ڈی سی کو اپنے اپنے دائرہ اختیار میں گنتی کی پیشرفت سے آگاہ کیا۔گنتی کی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے ڈی سی نے متعلقہ تحصیل سے پوچھا کہ اس پیشرفت میں تیزی لانے اور 28 جولائی 2021 تک یا اس سے پہلے سروے کو مکمل کرنے اور ڈی سی کتھوعہ کے دفتر کے ذریعہ قائم کردہ سب ڈسٹرکٹ / سب ڈویڑن سطح کی کمیٹیوں کی طرف سے جانچنے والے پْر ان نظام الاوقات / فارمیٹس کو پیش کریں تاکہ سروے کیا جاسکے۔ رپورٹ کو حتمی شکل دی گئی ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ محکمہ قبائلی امور ، جموں و کشمیر کو پیش کی گئی ہے۔ڈویژنل فارسٹ آفیسر (ٹی) کٹھوعہ ، بلاور اور بسوہلی ، چیف پلاننگ آفیسر کٹھوعہ ، ڈسٹرکٹ شماریات و تشخیص افسر کٹھوعہ ، چیف انیمل ہسبنڈری آفیسر کٹھوعہ ، ڈسٹرکٹ شیپ افسر کٹھوعہ اور تحصیلدار بنی بھی اس میٹنگ میں موجود تھے۔
 

 کشتواڑمیں قدرتی آبی ذخائر کے گرد صفائی مہم کا اہتمام

کشتواڑ // محکمہ یوتھ سروسز اینڈسپورٹس کشتواڑ نے ضلع کے مختلف علاقوں میں قدرتی آبی ذخائر کے گرد صفائی مہم چلائی۔محکمہ کھیل کود کشتواڑ نے ابتدائی طور پر کشتواڑ ٹاؤن شپ سے 3 کلومیٹر دور ناگنی کے علاقے کا دورہ کیا اور سات چشموں (اسپرنگس) کے جھرمٹ کے گرد صفائی مہم چلائی اور اس کے بعد مشہور کارتک سوامی مندر کا دورہ کیا اور وہاں موسم بہار کی صفائی کی۔شاہنواز احمد قاضی کی سربراہی میں کھیل کے تمام ملازمین نے پورے جوش و خروش سے علاقے اور آس پاس کی صفائی کا کام شروع کیا اور عام لوگوں کے استعمال کیلئے قدرتی آبی ذخائر کو بحال کیا۔ ٹیم ممبروں کے ذریعہ جانوروں ، گردونواح کے علاقوں ، گلیوں اور بذریعہ گلیوں کے پینے کے تالابوں کی بھی صفائی کی گئی۔اس موقع پر ڈسٹرکٹ یوتھ سروسز اینڈ اسپورٹس آفیسر کھارتی لال شرما نے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل یوتھ سروسز اینڈ اسپورٹس کو جموں و کشمیر کے سب سے بڑا علاقہ میں قدرتی آبی ذخائر کی صفائی میں گہری دلچسپی لینے پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے مقامی لوگوں پر بھی زور دیا کہ وہ ان قدرتی وسائل کا خیال رکھیں اور ان کی حفاظت اور صفائی کی عادت بنائیں
 

ڈی سی کشتواڑ کا مچیل ،پاڈر علاقوں میں ترقیاتی کاموں کا معائنہ | مچیل ماتا مندر میں سالانہ پوجا میں شرکت بھی کی

کشتواڑ// ڈپٹی کمشنر کشتواڑ اشوک شرما نے مچیل سب ڈویڑن کے دور دراز علاقوں کے تین روزہ دورے کے دوران مچیل ماتا مندر میں سالانہ پوجا (ہون) میں شریک ہونے کے علاوہ عوامی ترقیاتی کاموں کا معائنہ کیا اور عوامی وفد سے بات چیت کی۔ان کے ہمراہ اے ڈی ڈی سی شام لال ، ایس ڈی ایم پاڈر ورونجیت سنگھ چرک کے علاوہ متعدد دیگر متعلقہ افسران اور فیلڈ افسران بھی موجود تھے۔اپنے دورے کے دوران ، ڈی سی نے تحصیل مچیل کے دور دراز گاؤں ہلوتی کے ترقیاتی منظرنامے کا معائنہ کیا اور ترقیاتی کاموں اور موجودہ انفراسٹرکچر کا جائزہ لیا۔معائنہ کے دوران ، انہوں نے ہالوتی ، ہنگو مچیل ، چشوتی اور گلاب گڑھ دیہات میں عوامی وفود سے بھی ملاقات کی اور لوگوں کی شکایات سنیں۔ہنگو اور ہالوتی کے مقامی لوگوں نے ہلوتی کے مقام پر آب پاشی نہر کی تعمیر ، ہر گھر کو نلکے پانی کی فراہمی ، ٹیلی مواصلات کی سہولت ، بجلی اور مقدس گومپا کے ٹائل کام کا مطالبہ کیا۔ پی ایچ ای اور پی ڈی ڈی محکموں سے لوگوں کی شکایات کے فوری ازالے کے لئے ٹھوس اقدامات کرنے کو کہا گیا ، اس کے علاوہ سردیوں کے موسم سے قبل ان منصوبوں کی تکمیل کو یقینی بنانے کے لئے علاقے میں ڈبل شفٹ دوبارہ شروع کرکے کام کی رفتار کو تیز کرنے پر زور دیا گیا۔ دریں اثناء ڈی سی نے ایس ڈی ایم پاڈر کے ساتھ ساتھ مچیل ماتا مندرپاڈر میں ماضی کے طریقوں کے مطابق پہلی پوجا (ہون) میں بھی حصہ لیا۔ پوجا کووڈ 19 کے مناسب طرز عمل کی مناسب پابندی کے ساتھ منعقد کیا گیا تھا۔ امن ، ہم آہنگی اور پوری دنیا سے کوویڈ 19 وبائی بیماری کے خاتمہ کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ 25 جولائی 2021 سے شروع ہونے والی سالانہ شری مچیل ماتا یاترا کووڈ 19 وبائی بیماری کے پیش نظر منسوخ کردی گئی ہے۔راستہ میں ڈی سی کشتواڑ نے چشوتی اور گلاب گڑھ علاقے کے لوگوں سے بھی ملاقات کی اور ان کے مسائل سنے۔
 

 ضلعی اسپتال ر ام بن میںڈائلیسس یونٹ کا افتتاح

رام بن// مقامی مریضوں کے لئے ایک بڑی راحت کے طور پرڈائلیسس یونٹ کا پہلا افتتاح وزیر اعظم قومی ڈائلیسس پروگرام کے تحت ضلع ہسپتال رام بن میں کیا گیا۔اس یونٹ کا افتتاح گاندھری گاؤں کی 56 درجے کے درج ذیل مریضہ مریمہ بیگم نے چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر فرید بھٹ اور میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈی ایچ ڈاکٹر حمید زرگر کی موجودگی میں کیا۔افتتاح کے فورا بعد ہی ماریہامہ نے ڈائلیسس کرایا اور وہ ضلعی اسپتال رام بن میں صحت کی اس اہم سہولت سے فائدہ اٹھانے والی پہلی مریضہ بن گئیں۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے سی ایم او نے بتایا کہ یہ سہولت مقامی مریضوں کو راحت فراہم کرنے کے لئے ایڈیشنل چیف سکریٹری صحت اور میڈیکل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اٹل دلو کی ہدایت پر تیار کی گئی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا ، "ڈسٹرکٹ ہسپتال رام بن میں ڈالیسیز یونٹ کی ایک لمبے عرصے سے ضرورت محسوس ہوئی تھی اور اس سے ایسے مریضوں کو کافی امداد ملے گی جنھیں ایسے علاج کے لئے جموں یا سری نگر جانا پڑا تھا جس میں کافی رقم اور وقت خرچ ہوتا تھا۔"انہوں نے مزید کہاکہ یہ ڈائلیسس یونٹ 25.45 لاکھ روپے کی لاگت سے سامنے آیا ہے اور اس میں جے کے ایم ایس سی ایل (جے اینڈ کے میڈیکل سپلائی کارپوریشن لمیٹڈ) کے ذریعہ فراہم کردہ 5 ڈالیسیز مشینیں ہیں جن میں سے 1 مشین ہیپاٹائٹس اور ایچ آئی وی مریضوں کے لئے مخصوص رکھی گئی ہے۔
 

 ماجھین گائوںمیں 3 کنال جے ڈی اے زمین بازیاب

جموں // جموں ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے پیر کو جموں شہر کے مضافات میں واقع گاؤں ماجھین میں انسداد تجاوزات مہم چلائی۔جے ڈی اے نے متعدد انتباہات اور نوٹسز دینے کے بعد زمین پر قبضہ کرنے والوں پر سخت کارروائی کرتے ہوئے آخر کار اس مہم کا آغاز کیا جس میں دو ٹھوس ڈھانچے اور دو پلنتھ اور حدود کو مسمار کردیا گیا اور جے ڈی اے کی خسرہ نمبر 119 ، 168 اور 171میں پڑنے والی زمین بازیاب کی گئی۔انسداد تجاوزات مہم کے ذریعے لینڈ مافیا کو ایک سخت پیغام بھیجا گیا ہے جس نے جے ڈی اے کی زمین کو غیرقانونی اور جعلسازانہ طریقے سے تجاوزات یا بیچ دیا ہے۔جے ڈی اے حکام نے لینڈ مافیا اور غیر قانونی تجاوزات کے خلاف صفر رواداری کی پالیسی اپنائی ہے اور کسی تجاوزات کو بھی بخشا نہیں جائے گا۔ موقع پر موجود جے ڈی اے افسران نے یہ اشارہ بھی کیا کہ تجاوزات شدہ جے ڈی اے اراضی کی بازیافت کے لئے مزید بڑی مہمیں مستقبل قریب میں کی جائیں گی۔عام لوگوں سے یہ بھی اپیل کی گئی کہ وہ قانون کے مطابق عمل کئے بغیر محض حلف ناموں پر زمینیں نہ خریدیں کیونکہ ضلع کے باہر سے آنے والے متعدد تجاوزات نے جے ڈی اے کی اراضی پر مافیا سے خریداری کے بعد جن لوگوں نے غیر قانونی طور پر زمینیں بیچی ہیں ، پر پکے ڈھانچے بنائے ہیں۔
 

 کووڈ متاثرین کی امداد میں توسیع، متاثرہ خاندانوں میں راشن تقسیم  

جمو//نیشنل کرپشن کنٹرول اینڈ ہیومن ویلفیئر آرگنائزیشن (این سی سی ایچ ڈبلیو او) نے عالمی وبائی مرض کووڈ 19 کے متاثرین کو مطلوبہ امداد کی فراہمی کے لئے متعدد اقدامات شروع کیے ہیں جس نے پوری دنیا میں متعدد جانوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔اس سلسلے میں این سی سی ایچ ڈبلیو او نے کووڈ 19 سے متاثرہ خاندانوں میں تقسیم کے لئے چائلڈ ویلفیئر کمیٹی (سی ڈبلیو سی) کو راشن اسٹاک حوالے کیا۔اس تنظیم نے موجودہ وبا کی وجہ سے پریشان حال لوگوں کو ہر ممکن مدد فراہم کرنے کی کوشش میں ، ان خاندانوں کی فہرست طلب کی جو چیئرپرسن سی ڈبلیو سی سے کوویڈ کی وجہ سے اپنا کمائی کا واحد رکن گنوا بیٹھے ہیں تاکہ وائرس کے شکار افراد کو بنیادی سہولیات فراہم کی جائیں۔ اگرچہ حکومت نے کووڈ متاثرہ لوگوں کو ہر طرح کی مدد فراہم کرنے کے لئے متعدد دفعات رکھی ہیں لیکن ضرورت مندوں کو راشن اور دیگر ضروریات تقسیم کرنا ہمارے حصے کا ایک بہت چھوٹا اقدام ہے۔این سی سی ایچ ڈبلیو او کے ممبران نے روٹری کلب جموں ایلیٹ اور روٹری کلب ، جموں توی کے ساتھ مل کر ان خاندانوں کو مدد فراہم کی۔ یہ تنظیم اس وقت تک کوویڈ متاثرہ لوگوں کے لئے اس طرح کی امداد جاری رکھے گی جب تک کہ ان خاندانوں کو اس اکاؤنٹ پر حکومت کی طرف سے منظور شدہ امداد ملنا شروع ہوجائے۔ این سی سی ڈبلیو او نے بھی متاثرہ خاندانوں کو راشن کی گھر پہنچانے کو یقینی بنایا۔تنظیم نے باقی خاندانوں میں تقسیم کے لئے راشن کے پیکٹ بچوں کی فلاح و بہبود کمیٹی کی چیئرپرسن شالنی شرما کے حوالے کردیئے۔