تازہ ترین

ضلع کشتواڑ میں منریگا کے نفاذ پر تشویش

تاریخ    24 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


کشتواڑ // سینئر سماجی کارکن اجیت بھگت نے مہاتما گاندھی قومی دیہی روزگار گارنٹی ایکٹ کے نفاذ پر تشویش کا اظہار کیا۔ انہوںنے کہا کہ ضلع 
 کشتواڑ میںجاب کارڈ جاری کئے گئے ہیں لیکن کام کو الاٹ نہیں کیا گیا ہے۔ اس کے نتیجے میں غریب تعلیم یافتہ بیروزگار نوجوانوں کے لئے جاب کارڈ کی کوئی ضمانت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ باغبانی اور محکمہ زراعت کی حالت بھی ایسی ہی ہے،بہت سارے کاشتکار ہیں جو اپنے علاقے میں باغات تیار کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں لیکن کوئی امداد فراہم نہیں کی جارہی ہے۔ باڑ لگانے کے لئے کوئی خاردار تار نہیں ، پولی تھین کے احاطے / گرین ہاؤسز ان لوگوں کو مہیا کیے گئے ہیں ، جن کے اپنے باغات ہیں جس کا کوئی نتیجہ نہیں نکلا ہے۔ بھگت نے منریگاکے تحت اجرت میں 204 سے بڑھا کر 500 روپے روزانہ کرنے اور غربت کی لکیرکے نیچے رہنے والوں کے جاب کارڈ تیار کرنے کا مطالبہ بھی کیا تاکہ معاشرے کا ناقص طبقہ بہتر طور پر اس مرکزی تعاون سے چلنے والی اس اسکیم سے فائدہ اٹھاسکے۔اجیت بھگت نے جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر ، چیف سکریٹری جموں و کشمیر ، ڈویژنل کمشنر جموں ، ڈائریکٹر رورل ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ جموں اور ڈسٹرکٹ ڈیولپمنٹ کمشنر کشتواڑ سے اپیل کی کہ وہ اس معاملے کو دیکھیں ۔