سرینگر میں آبی ذخائر کی بحالی کا عمل

ترقیاتی کمشنر کاجاری کاموں کا معائنہ ، گلسر اور بابہ ڈیمب کا دورہ کیا

تاریخ    18 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر// ضلع میں آبی ذخائر کی بحالی کے جاری عمل کو تیز کرنے کے لئے ، ضلعی ترقیاتی کمشنر سرینگر محمد اعجاز اسد نے گلسر جھیل اور بابہ دیمب کا دورہ کیا۔انہوں نے ان آبی ذخائر کی صفائی ستھرائی کیلئے بحالی کے کاموں کا معائنہ کیا جو ان کی دہائیوں پرانی شان کو بحال کرنے کے لئے ہیں۔اس موقع پر بتایا گیا کہ گلسر کا ایک بڑا حصہ صاف اور بحال کردیا گیا ہے جس کی وجہ سے دہائیوں کے بعداس جھیل میں مہاجرپرندے دکھائی دینگے۔افسروں کی ٹیم کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے ڈی ڈی سی نے انہیں ہدایت کی کہ وہ سرینگر ضلع میں تاریخی آبی ذخائر کی بحالی کے مکمل اہداف کو حاصل کرنے کے لئے مربوط انداز میں مزید جوش اور لگن کے ساتھ کام کریں۔انہوں نے انہیں علاقے میں بحالی کے کاموں کو جلد سے جلد تیز کرنے کی ہدایت بھی دی۔اس موقع پراعجاز اسد نے کہا کہ سرینگر میں تاریخی آبی ذخائر کی بحالی کے لئے تمام ممکنہ اقدامات کئے جارہے ہیں تاکہ زمین پر اثرات مرتب ہوں۔انہوں نے مزید کہا کہ ان آبی ذخائر کی بحالی سے نہ صرف علاقوں کے قدرتی خوبصورتی اور ماحول میں اضافہ ہوگا بلکہ مقامی نوجوانوں کے لئے روزگار کے وسیع مواقع بھی پیدا ہوں گے۔انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ آبی خانے میں کچرا پھینکنا اور کوڑا کرکٹ پھینکنا بند کردیں جس کی وجہ سے ان کی بدنامی ہورہی ہے جس سے انسانی وجود کو بہت خطرہ لاحق ہے۔ انہوں نے متعلقہ افسران سے بھی کہا کہ وہ نگرانی کی ٹیموں کو تیار کریں اور تمام آبی اداروں کے ساتھ مل کر انسداد تجاوزات مہم کو تیز کریں اور ان قدرتی وسائل میں کچرا کچرا کرنے اور گندگی پھیلانے والے افراد کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی کریں۔اسی طرح خوشحال سر کا بنیادی حصہ بھی کئی دہائیوں سے پلاسٹک کے کچرے اور ماتمی لباس کی جمع کو ختم کرکے صاف کیا گیا ہے۔گل سر پر بحالی کا کام مکمل ہونے کے قریب ہے اور نالہ امر خان اور خوشحال سر کے بعد ضلع سرینگر میں بحال ہونے والا تیسرا آبی ذخیرہ ہوگا۔
 

تازہ ترین