تازہ ترین

غزلیات

تاریخ    4 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


اس شہر شعلہ زار میں جلتے رہے چنار 
اس خطۂ زمیں پہ سُلگتے رہے چنار 
انساں کی بے حسی سے لرزتے رہے چنار 
کٹتے رہے چنار تڑپتے رہے چنار 
کچھ آمد بہار سے ڈرتے رہے چنار 
کچھ آمدِ خزاں سے سلگتے رہے چنار 
سرگوشیاں خزان نے کیں جب بہار میں 
موسم کے سارے راز اگلتے رہے چنار
ہر شاخ پر سلگتا ہے موسم بہار کا 
کتنے ہی حادثوں سے گزرتے رہے چنار 
آب و ہوا کی جانے وہ تاثیر کیا ہوئی 
گل کی طرح یہاں کبھی کھلتے رہے چنار 
جب موسم خزاں نے دی دستک ہراک طرف 
عادل ردائے سرخ میں جلتے رہے چنار 
 
اشرف عادل
کشمیر یونیورسٹی حضرت بل سرینگر کشمیر 
موبائل نمبر؛7780806455
 
 
 
بھائی چارے باہم کی ریت پُرانی چاہئے!
سب ٹھیک ہوگا، خُدا کی مہربانی چاہئے!
کون پروانوں سے کہے کہ رُخساروں کی شمع پر
ہرگز نہ جاں اپنی گنوانی چاہئے!
حادثہ نہ بنیں عہدِ خِزاں کے معرکے!
شاخساروں پہ صبا کی حُکمرانی چاہئے
کہیں آندھیروں کے کارواں نہ یہ مزید گُزریں!
اہلِ چمن کو لہٰذا فصیل اُٹھانی چاہئے!
یوں قفس کے عادی ہی نہ بن کے رہ جانا
درکُھلا تو اُڑنے کی آس لگانی چاہئے!
کِلّہ اُکھڑا سکتاہے اونٹ گُم ہوسکتا ہے
پِر کِلّے سے باندھنے کی ریت نبھائی چاہئے
ذہن پہ چھوڑ دینا بجا ہے فائق جی!
نہ دِل کو کبھی بات اپنی منانی چاہئے!
 
عبدالمجید فائق ؔاُودھمپوری
موبائل نمبر؛9682129775
 
 
مجھے وہ رستہ دِکھا رہی ہے
تلاشِ حق سے ملا رہی ہے
یہ دل کی دھڑکن تو کہہ رہی تھی
وہ میری غزلیں سُنا رہی ہے
تجھے نظر سی لگی ہے شاید
جو مجھ سے نظریں ملا رہی ہے
میں دل کے صحرا سے تھا پریشاں
یہاں وہ دھڑکن اُگا رہی تھی
پیاس دل کی و بارِخاطر
وہ جامِ زاہد پلا رہی ہے
 یوں بٹھکے لوگوں کو سیدھا رستہ
وہ بن کے جگنو دکھا رہی ہے
چلو تو دیکھو اُسے بھی یاورؔ
جو پاس اپنے بُلا رہی ہے
 
یاورؔ حبیب ڈار
بڈکوٹ ہندوارہ
موبائل؛ 6005929160
 
 
آئی تمہاری یاد تو میں نے کہی غزل
آنکھوں سے جانے نیند ہی کب کی گئی اُوجھل
پہلی نظر میں دید سے دِل میں اُترگئی 
صورت تمہاری دیکھ لی دِل کیا گیا مچل
خوشبو تیرے وجود کی مہکا گئی چمن
بھنورا تمہاری یاد میں گانے لگا غزل
دِل کی بہار لوٹ لی دُوری نے آپ کی
ٹھنڈی ہوا بہار کو جیسے گئی نِگل
میں نے رکھا ہے تھام کے دامن اُمید کا
آتے رہے یہی رات دِن ساون بدل بدل
یادوں نے تیری جان ہی لے لی ہے مظفرؔ
ہوگا وِصال یار بھی اے دِل ذرا سنبھل
 
حکیم مظفر حُسین
باغبانپورہ لعل بازار سرینگر
موبائل نمبر؛9622171322
 
 
محبت میں کوئی سیاست نہ کرنا
امانت میں ہرگز خیانت نہ کرنا
جواں لڑکیوں سے یہ کہتی ہے دنیا
کسی اجنبی سے محبت نہ کرنا
مجھے میرے منہ پر بُرا چاہے کہنا
مگر پیٹھ پیچھے مذمت نہ کرنا
بھٹکتے پھروگے محبت کی خاطر
مجھے چھوڑنے کی حماقت نہ کرنا
گرے لوگ رستے پر اکثر ملیں گے
تم ان پر نگاہِ عنایت نہ کرنا
سر راہ جو لُوٹ لیتے ہیں عصمت
تم ان بھیڑیوں سے مروّت نہ کرنا
ہو جتنا ضروری ثمرؔ اتنا کہنا
بہت گفتگو کی حماقت نہ کرنا
 
سحرش ثمر
فردوس نگر۔ علی گڑھ
 
 
آشکارا زلف کو جب بام پر اُس نے کیا
مجھکو اپنے آپ سے کل بے خبر اُس نے کیا
بزمِ الفت میں بلا کر مجھ کو رسوا کردیا
جو کبھی سوچا نہ تھا وہ سربہ سر ُاس نے کیا
آشنا اُس راز سے اب تک نہیں ہوپایا میں
کیا مقدر نے مجھے یا در بہ در اُس نے کیا
دل جلانے کے لیے مجھکو بلا کر، غیر کا
نام مہندی سے رقم خود ہاتھ پر اس نے کیا
میں پشیماں جب ہوا اپنی خطاؤں پر بہت
دیکھ کر میری نگاہیں در گزر اُس نے کیا
میں جسے اپنا سمجھ کرہر خوشی دیتا رہا
وار چپکے سے مری ہی جان پر اُس نے کیا
حیف و صد افسوس کا اظہار عارفؔ جابجا
قتل کرکے سر میرا پھر کاٹ کر اُس نے کیا
 
جاوید عارف
 شوپیان کشمیر
موبائل نمبر؛7006800298
 
 
 
 

تازہ ترین