دفعہ 370کی بحالی ناگزیر

فیصلہ لوگوں کو قبول نہیں: محبوبہ مفتی

تاریخ    25 جون 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دہلی //پی ڈی پی  صدر محبوبہ مفتی نے اجلاس کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بہت ہی اچھے ماحول میں بات ہوئی،کشمیر کے حوالے سے بات ہوئی،جموں کشمیر کے لوگ کئی طرح کی مصیبتیں سہہ رہے ہیں،وہ مشکل میں ہیں،5اگست 2019 سے لوگ بہت تکلیف میں ہیں،غصے میں ہیں ، ناراض ہیں،جذباتی طور ٹوٹ گئے ہیں،وہ تنہا محسوس کرتے ہیں‘‘۔انہوں نے مزید کہا’’ میں نے میٹنگ میں کہا کہ 5اگست 2019کو جس غیر آئینی اور غیر قانونی، غیر اخلاقی طریقے سے 370کو ہٹایا گیا، یہ جموں کشمیر کے لوگوں کو قبول نہیں ہے ،جس طرح بی جے پی نے 70سال کوشش کی 370ہٹانے کیلئے،جو غیرآئینی طور ہٹایا گیا، ہماری جماعت، جموں کشمیر کے لوگ، آئینی ،سیاسی اور جمہوری طریقے سے جدوجہد کریں گے، چاہیے مہینے لگیں یا سال، دفعہ370کو بحال کیا جائیگا، یہ شناخت پاکستان نے نہیں بلکہ بھارت نے دی تھی‘‘۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ انہوں نے آر پار تجارت کی بحالی اور پاکستان سے بات چیت کرنے کی وکالت کی۔انکا کہنا تھا کہ اجلاس میں انہوں نیپکڑ دھکڑ بند کرنے پر زور دیکر کہا کہ کوئی بات کرے تو ملک دشمنی کے کیس درج کئے جاتے ہیں، زور سے سانس لینے پر بھی گرفتار کر کے جیلوں میں ڈالا جاتا ہے،روز کوئی نہ کوئی قانون جاری ہوتا ہے۔

تازہ ترین