ڈل جھیل کی بڑے پیمانے پرصفائی مہم جاری

سیلانیوں کوبدبواوربیماریوں سے محفوظ رکھنا لازمی:لائوڈا

تاریخ    18 جون 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//اگرچہ سونہ لنک اورروپ لنک پرمشتمل ڈل جھیل کارقبہ سکڑکرمحض 18مربع کلومیٹر تک رہ گیا ہے لیکن ابھی بھی جھیل کی شان وشوکت اوراہمیت باقی ہے ۔ ڈل کی سیروتفریح کیلئے آنے والے سیلانیوں کاایک اہم مقام ڈل کے وسط میں واقع چارچناری میں موجود چار چناروںمیں دوسوکھ گئے ہیںاوراب قلیل تعدادمیں ہی سیاح یہاں آتے ہیں ۔ڈل جھیل میں موجودہائوس بوٹ اورشکارے اپنی منفردتعمیر وآرائش کی وجہ سے ڈل کی دلکشی میں اضافے کاموجب رہے ہیں لیکن ڈل کے اندرکوڑا کرکٹ اورنزدیکی ڈرینوںسے ڈالے جانے والی گندگی نے اس کی نچلی تہہ کوبھردیا اوریہاں مختلف اقسام کی گھاس پھوس اورپودے اُگنے لگے ۔اس گھاس پھوس کی وجہ سے جھیل کاپانی رنگ بدلنے لگا ہے اوراس سے بدبو اُٹھتی ہے ۔ لیکس اینڈ واٹر ویز اتھارٹی نے جھیل سے گھاس پھوس اورکیچڑ سے نجات دلانے کی ایک مہم چھیڑرکھی ہے ۔اس صفائی مہم کی نگرانی کرنے والے ایک افسر کا کہنا ہے کہ ’’ڈل جھیل جتنا صاف رہے گا،اُتنا ہی ٹھیک رہے گا‘‘۔انہوں نے کہا’’ ہم نے جھیل کوصاف کرنے کی جومہم شروع کی ہے ،اُس کاایک مقصد یہاں سیروتفریح کیلئے آنے والے سیلانیوں کوبدبواوربیماریوں سے بچانا ہے‘‘ ۔انہوں نے مزید کہا’’ ہم نے اس سیزن میں جھیل کی صفائی کیلئے 78ہزار مزدورکام پرلگانے ہیں اورہم روزانہ 500مزدورکام پرلگاتے ہیں ،جو مشینوں کی مددسے جھیل کے اندرموجود گھاس پھوس اورکیچڑ کونکالتے ہیں‘‘ ۔لائوڈاحکام کے مطابق رواں صفائی مہم کے دوران 9.18مربع میٹر کوصاف کرنا ہے اورمہم جاری ہے ۔
 

تازہ ترین