تازہ ترین

دہشت گردی اور بنیاد پرستی بڑے خطرات

خدشات برحق، اجتماعی انداز اپنانے کی ضرورت: راجناتھ سنگھ

تاریخ    17 جون 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دہلی //وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے بدھ کے روز کہا کہ دہشت گردی اور بنیاد پرستی دنیا میں امن و سلامتی کیلئے "سب سے بڑے خطرات" ہیں اور چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے اجتماعی انداز اپنانے کی ضرورت ہے۔آسیان وزیر دفاع کے اجلاس پلس (اے ڈی ایم ایم پلس) کے خطاب میں ، سنگھ نے سمندری سلامتی کے چیلنجوں پر ہندوستان کے خدشات پر بھی روشنی ڈالی اور یہ بھی نوٹ کیا کہ بحیرہ جنوبی چین میں ہونے والی پیشرفتوں نے خطے اور اس سے آگے کی توجہ اپنی طرف مبذول کرلی ہے۔وزیر دفاع نے اقوام متحدہ کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کے احترام ، بات چیت کے ذریعے تنازعات کے پرامن حل اور بین الاقوامی قواعد و قوانین کی پاسداری پر مبنی ہند بحر الکاہل میں ایک آزاد ، کھلی اور جامع نظم کو یقینی بنانے پر زور دیا۔دہشت گردی کے نیٹ ورک کے خطرے کا حوالہ دیتے ہوئے ، سنگھ نے دہشت گردی کی حوصلہ افزائی ، حمایت اور مالی اعانت فراہم کرنے اور دہشت گردوں کو پناہ فراہم کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا ، "دہشت گردی اور بنیاد پرستی امن و سلامتی کو درپیش خطرناک خطرہ ہیں جس کا سامنا آج دنیا کر رہا ہے ‘‘۔وزیر دفاع نے کہا کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے ایک رکن کی حیثیت سے ، دہشت گردی کی مالی اعانت سے نمٹنے کیلئے پرعزم ہے۔انہوں نے کہا ، "ہندوستان دہشت گردی کے بارے میں عالمی خدشات میں شریک ہے اور اس کا خیال ہے کہ اس دور میں جب دہشت گردوں کے درمیان نیٹ ورکنگ خطرناک حد تک پہنچ رہی ہے ، صرف اجتماعی تعاون کے ذریعے ہی دہشت گرد تنظیموں اور ان کے نیٹ ورک کو مکمل طور پر ختم کیا جاسکتا ہے ، مجرموں کی نشاندہی کر کے ان کا احتساب کیا جاسکتا ہے۔"
 

تازہ ترین