تازہ ترین

سرینگر میں تاریخی آبی ذخائر کی بحالی

ڈپٹی کمشنر نے پیش رفت کا جائزہ لیا، تجاوزات ہٹانے کی مہم شروع کرنے کی ہدایت

تاریخ    10 جون 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//ڈپٹی کمشنر سرینگر محمد اعجاز اسد نے تاریخی آبی ذخائر کی بحالی سے متعلق پیش رفت کا جائزہ لینے کے لئے ایک اجلاس کی صدارت کی جس میں نگین ، خوشحال سر ، گل سر اور آنچار جھیلوں کے علاوہ بابا ڈیمب اور نالہ امر خان کی بحالی کا جائزہ لیا گیا۔اس موقع پرڈپٹی کمشنر کو آبی ذخائر کی شناخت اور غیر قانونی تعمیرات کی نشاندہی کے لئے جاری کاموں کی رفتار کے علاوہ ضلع کے تمام آبی ذخائر کی بحالی اور صفائی کے لئے کئے گئے اقدامات کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا۔ایگزیکٹو انجینئر آبپاشی اور فلڈ کنٹرول نے آگاہ کیا کہ سرینگر میں آبی ذخائر کی بحالی کے لئے کام جاری ہے۔ انہوں نے ہدف کے حصول کے لئے اضافی رقوم کا مطالبہ کیا۔انہوں نے مزید بتایا کہ سرینگر اسمارٹ سٹی کی جانب سے ابھی تک گل سر آبی ذخیرہ کی بحالی کے لئے 15 لاکھ روپے کی رقم فراہم کی جاچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کام کو مکمل کرنے کے لئے مزید فنڈز کی ضرورت ہے اور بحالی کے کاموں کو جاری رکھنے کے لئے مزید فراہمی کا بھی مطالبہ کیا۔آبی ذخیروں کی حد بندی کے سلسلے میں ، ڈی سی نے متعلقہ تحصیلداروں کو ہدایت کی کہ وہ تمام آبی ذخیروں کی حد بندی کے عمل کو فوری طور پر تیز کریں۔ انہوں نے کہا کہ وہ ان آبی ذخائر کے اندر موجود تجاوزات کی نشاندہی کریں تاکہ تمام غیر قانونی تعمیرات کوہٹانے کے لئے بڑی مہم شروع کی جائے۔ڈی سی نے افسران کو ہدایت کی کہ وہ جمع ہونے والے کچرے کی صفائی کے لئے تمام ضروری اقدامات کریں۔انہوں نے کہا کہ بحالی کے اقدامات کا ایک مقصد سرینگر ضلع میں واٹر نیویگیشن سرکٹ کو بحال کرنا ہے۔ڈی سی نے یہ بھی کہا کہ سرینگر میں آبی ذخائر کی بحال کے لئے سب کا تعاون لازمی ہے۔میٹنگ میںایڈیشنل ڈپٹی کمشنر سرینگر خورشید احمد ، چیف پلاننگ آفیسر ، محمد یٰسین لون ، ایس ڈی ایم ایسٹ اویس مشتاق ، اسسٹنٹ کمشنر ریونیو ، رئیس احمد بٹ اور متعلقہ تحصیلداروں کے علاوہ ایس ایم سی ، ایس ڈی اے ، پی ایچ ای ، آبپاشی اور فلڈ کنٹرول اور دیگر محکموں کے افسران موجود تھے۔
 

تازہ ترین