تازہ ترین

ایک عورت کی کہانی اسکی زبانی

تاریخ    30 مئی 2021 (00 : 01 AM)   


بھیگی پلکیں میری پڑھ لو اشک فشانی لکھتی ہوں
  ایک ابھاگن عورت ہوں میں اپنی کہانی لکھتی ہوں 
عورت ہی نے جنم دیا اور عورت ہونا سکھلایا
دکھ کے آگے اف نہ کرنا بچپن ہی میں بتلایا 
بچپن ہی سے دیکھا گھر میں ’’رائے‘‘ کی کچھ اوقات نہی 
میں تو ہوں اک موم کا پتُلا میری کوئی ذات نہی 
میری انّا کو ٹھیس  ہی پہنچی اپنے ان بے دردوں سے 
میں تو اکثر سنتی آئی گھر کے سارے مردوں سے 
جا کر تم خاموش رہو ہاں تم سے کس نے پوچھا ہے 
کمرے میں روپوش رہو تم ،تم سے کس نے پوچھا ہے
بھائی چاہے جو بھی کر لیں ان کو تو آزادی ہے 
میری خواہش بھی تو پوچھو دل میرا فریادی ہے
میری اس فریاد میں لوگو ایک ذرا سا جھوٹ نہیں 
اپنا جیون ساتھی چُُن لوں مجھ کو اتنی چھوٹ نہیں 
جب بھی چاہا جس سے چاہا میرا رشتہ کر بیٹھے 
جان نہیں پہچان نہیں اور ناطہ میرا کر بیٹھے 
بابل چھوٹا ،بچھڑا آنگن، ایک پرائے گھر آئی 
اشکوں سے تب تر تھا آنچل اور جھکا کر سر آئی 
جیون بدلا ،دنیا بدلی،بچوں کا پھر سُکھ دیکھا 
ہوے جواں جب گود کے پالے ،ان کے ہاتھوں دُکھ دیکھا 
میری آنکھوں سے اب ان کو آنکھ مِلاتے دیکھا ہے 
بات بات پر ان کا غصہ اور چلاتے دیکھا ہے 
دل جب میرا ٹوٹا پھوٹا جھوٹ موٹ کی سوتی ہوں 
دبا دبا کر اپنی سانسیں  دیر تلک میں روتی ہوں
مردوں کی دنیا ہے شاید ، عورت کی پہچان نہیں
ان کو لگتا ہے کچھ ایسا اپنے کچھ ارمان نہیں
ہم کچھ بولیں شوہر ٹالے، شوہر بولیں ہونا ہے 
ہم کو بس قربانی دینی، ہم کو تو بس کھونا ہے 
اپنی خواہش خواب ہمارے خواب ہی اکثر رہتے ہیں 
جفا کی آندھی ستم کے نشتر ہم ہی گھُُٹ کر سہتے ہیں
عمر کے موسم ڈھلتے ڈھلتے دیپ بُجھانے آئے  ہیں 
اجل کے پنجے حیاتِ تن کے نقش مٹانے آئے ہیں 
وقتِ قضا تھی خواہش دل میں اب میں کھُل کر بولوں گی 
جاتے جاتے ارمانوں کی گٹھری اب میں کھولوں گی 
ارمانوں کا خون ہوا ہے سب سے کھُل کر کہنا ہے 
خاموشی کو توڈ رہی ہوں درد نہیں اب سہنا ہے 
لیکن موت یہ کان میں بولی ’’آنکھیں موند کے سو جاوو ‘‘
چلو فنا کا دامن تھامو اور مٹی میں کھو جاوئو
تیری خاموشی کی آہیں  فلک فلک پر سنتے ہیں 
کس کی فغاں ہے ،کون ہے روتا، سارے ملائیک کہتے ہیں
تیرا  خالق بھی تھا اللّه یہ دنیا تھی تیری بھی
تیرا مالک بھی تھا اللّه اور خوشیاں تھی تیری بھی 
جو بھی کہنا ہے اب جا کر اپنے رب سے کہہ دینا
اپنا دُکھڑا رو رو کر تم شاہِ بے عرب سے کہ دینا 
 
فلک ریاض 
حسینی کالونی،چھترگام کشمیر،موبائل نمبر؛6005513109
 

تازہ ترین