تازہ ترین

خطہ چناب میں سڑک حادثات کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ،ذمہ دار کون؟

سیول سوسائٹی نے خراب سڑکوں، ناتجربہ کار ڈرائیور و ٹریفک پولیس کی عدم توجہی پر حکام بنایا ہدف تنقید، تاریگامی کمیٹی کی سفارشات پر عمل درآمد کرنے کا مطالبہ کیا

تاریخ    10 مئی 2021 (00 : 01 AM)   
(File Photo)

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //وادی چناب کے شہر و گام کی رابطہ سڑکوں پر سڑک حادثات کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے کہیں پر ڈرائیور کی لاپرواہی، تو کہیں خستہ حال سڑک اور اکثر و بیشتر حادثات حکام کی عدم توجہی کے سبب رونما ہوتے ہیں جس میں قیمتی جانوں کا ضیاع ہوتا ہے۔ بڑھتے ہوئے سڑک حادثات پر سیول سوسائٹی ممبران نے اپنی خاموشی توڑتے ہوئے موجودہ سرکار کے ساتھ ساتھ سابق حکومتوں کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ ڈوڈہ کشتواڑ بٹوت قومی شاہراہ سمیت اندرونی دیہات کی پچاس فیصدی رابطہ سڑکیں حفاظتی دیواروں، نکاسی نظام اور نوے فیصدی شاہراہوں پر کرش بیرئر کا انتظام نہیں ہے۔ڈوڈہ کے نامور سماجی کارکن و قلمکار اشتیاق احمد دیو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ خطہ چناب میں سڑک حادثات کے لئے انتظامیہ، تعمیراتی ایجنسیاں، ڈرائیور و عام لوگ برابر کے شریک ہیں۔انہوں نے کہا کہ جہاں ان سڑکوں پر ٹریفک کی متواتر چیکنگ نہیں ہوتی ہے وہیں دور افتادہ علاقوں میں اورلوڈنگ، تیز رفتاری و ناتجربہ کار ڈرائیوروں کا گاڑی چلانا معمول بن گیا ہے۔سیاسی و سماجی کارکن مہندر سنگھ سرمال کے مطابق ڈرائیور گاڑی چلاتے وقت موبائل فون کا استعمال کرتے ہیں اور اگر کسی سواری نے اس پر مداخلت کی تو وہ غیر اخلاقی برتاؤ کرتے ہیں جس کی کئی مثالیں ہمارے سامنے ہیں۔ سابق رکن قانون ساز کونسل نریش کمار گپتا نے کہا کہ موجودہ حکومت خطہ میں بہتر ٹریفک نظام بنانے میں ناکام رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ عمر عبداللہ کیلئے قیادت میں قائم مخلوط حکومت نے اس کا سبب جاننے کے لئے قانون سازیہ ارکان کی ایک ٹیم محمد یوسف تاریگامی کی قیادت میں تشکیل دی تھی جنہوں نے چناب کا تفصیلی دورہ کرکے اپنی سفارشات حکومت کو پیش کی تھی جس میں خراب سڑکیں، ایس آر ٹی سی بسوں میں اضافہ کرنے، شاہراہ کے کنارے کرش بیرئر لگانے، ڈرائیوروں کی باقاعدہ تربیت کرنے و عوام میں بیداری لانا شامل تھا لیکن اس پر کسی نے عمل نہیں کیا۔ ڈی ڈی سی ممبر کاہرہ معراج ملک نے خستہ حال سڑکوں کو حادثات کے لئے ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ بٹوت ڈوڈہ کشتواڑ شاہراہ سمیت بھدرواہ، بھلیسہ، بونجواہ کی اندرونی دیہات کی رابطہ سڑکیں خستہ حال ہو چکی ہیں۔انہوں نے کہا کہ نکاسی نظام، حفاظتی دیواریں غائب ہیں اور تعمیراتی ایجنسیاں سالانہ کروڑوں روپے کی بلیں سرکاری خزانے سے مرمت کے نام پر ہڑپ کرتے ہیں۔انہوں نے حکومت سے عوام میں بیداری لانے، ٹریفک کی متواتر چیکنگ کرنے و ناکارہ گاڑیوں کو سڑکوں سے ہٹانے و بہتر سڑک نظام بنانے کا مطالبہ کیا۔