تازہ ترین

لاکھوں روپے خرچ کرنے کے باوجود کھار پورہ ۔ رتن باس رابطہ سڑک 8برسوں سے زیر تعمیر

زمینداروں کے تنازعہ کے باعث نبارڈ کی سکیم بند ہوئی ، کام مکمل کرنے کی کوشش جاری: محکمہ تعمیرات

تاریخ    8 مئی 2021 (00 : 01 AM)   


محمد تسکین
 بانہال // جموں سرینگر قومی شاہراہ پر واقع کھارپورہ - رتن باس رابطہ سڑک پر لاکھوں روپے کی رقومات خرچنے کے بعد بھی مکمل نہیں کی گئی ہے اور پچھلے قریب سات سالوں سے زیر تعمیر سڑک کو تکمیل تک پہنچانے کیلئے سرکاری طور پر اقدامات نہیں کئے گئے ہیں اور زمینداروں کے اعتراض سے پانچ سال سے کام بند پڑا ہے۔شاہراہ پر واقع قصبہ بانہال میں ڈولیگام نالہ پر گنڈ عدلکوٹ پل کے پاس سے نکلنے والی یہ رابطہ سڑک کھارپورہ، شابن باس اور رتن باس کی بستیوں کو سڑک کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے اس وقت کے کانگریس وزیر غلام محمد سروری نے منظور کی تھی اور اس کی بیشتر کھدائی کا کام بھی انجام دیا گیا ہے لیکن کچھ زمینداروں کی طرف سے اعتراضات کی وجہ پہلے کلومیٹر میں کچھ کام رہ گیا ہے۔ محمد قدافی نامی ایک شہری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کھارپورہ اور شابن باس کی عوام سڑک نہ ہونے کی وجہ سے سخت مشکلات کا سامنے کر رہے ہیں اور محکمہ تعمیرات عامہ تنازعہ حل کرکے سڑک کو مکمل کرنے میں ناکام ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے آٹھ برسوں سے لوگ اس اُمید میں ہیں کہ آج نہیں تو کل یہ سڑک مکمل کی جائے گئی ،لیکن ابھی تک کھارپورہ اور شابن باس کے لوگوں کیلئے سڑک کا خواب خواب ہی رہ گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ علاقے کے ایک وفد نے میرا قصبہ میری شان کے پروگرام میں شرکت کی غرض سے آئے گورنر کے مشیر فاروق خان سے کھارپورہ سڑک کا معاملہ زور و شور سے اٹھایا تھا اور انہوں نے اور ڈپٹی کمشنر رام بن ناظم زئی خان نے کھارپورہ رابطہ سڑک کو مکمل کرنے کیلئے پوری کوشش کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے اور معاملہ اعلی حکام کی نوٹس میں لایا جائے گا۔  اس سلسلے میں بات کرنے پر محکمہ تعمیرات عامہ رام بن کے ایگزیکٹو انجینئر مقبول حسین نے کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کھارپورہ رابطہ سڑک پر کچھ زمینداروں نے اعتراض کیا ہے اور سڑک کا کام مسلسل التوا میں رہنے کی وجہ سے یہ فنڈنگ ایجنسی نبارڈ کی سکیم سے باہر ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نبارڈ کی طرف سے کسی کام کو مکمل کرنے کیلئے تین سال کی مدت دی جاتی ہے اور اسے مکمل کرنے کیلئے نبارڈکو دوبارہ خطہ کتابت کے زریعے لکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رام بن ڈویژن میں ایسی درجنوں سڑکیں ہیں جو فنڈنگ نہ ہونے کی وجہ سے مکمل نہیں کی جا سکی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ تعمیرات عامہ ڈویژن رام بن کی طرف سے حکام کو متعدد بار بند یا شروع کئے جانے والے سڑک رابطوں کی فہرستیں بھیجی گئی ہیں لیکن ابھی تک فنڈز فراہم نہیں کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کی ہرممکن کوشش ہوگی کہ ضروری اور اہم نوعیت کے کاموں کے علاوہ کھارپورہ رتن باس سڑک سمیت دیگر پروجیکٹوں کو مکمل کیا جائے ،تاکہ عام لوگوں کیلئے شروع کئے گئے ان پروجیکٹوں سے راحت مل سکے۔