تازہ ترین

کورونا کی شدت برقرار| جموں کشمیر میں جزوی لاک ڈائون کا اعلان

۔ 50فیصد تجارتی سرگرمیاں متبادل ایام میں جاری رہیں گی

تاریخ    21 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی

 شبانہ کرفیو سبھی 20اضلاع میں نافذ،گاڑیوں میں 50فیصد مسافر بٹھانے کی اجازت

 
سرینگر//جموں و کشمیر حکومت نے آج سے جزوی لاک ڈائون کرنیکا اعلان کیا ہے۔کورونا لہر کی زنجیر پر قابوپانے کے لئے میونسپلو شہری بلدیاتی حدود کے اندر تجارتی مراکز، بازاروں، شاپنگ کمپلیکسوںمیں متبادل ایام میں 50 فیصد کاروباری سرگرمیوں کو جاری رکھنے کی اجازت ہوگی۔ مسافر بردار ٹرانسپورٹ میں گنجائش کے برعکس نصف سواریوں کو بٹھانے کی اجازت ہوگی جبکہ شبانہ کرفیو کا نفاذ سبھی 20اضلاع میں نافذ العمل ہوگا۔ جموں کشمیر میں گزشتہ ایک ماہ سے کورونا وائرس کیسوں میں ہوش ربا اضافہ کے بعد لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے مرکزی زیر انتظام والے خطے میں اس وبائی وائرس سے نپٹنے اور اس کی زنجیر توڑنے کیلئے جزوی لاک ڈائون کے احکامات دیئے ہیں۔ لیفٹیننٹ گورنرکے دفتر سے منگل کو جاری کئی ٹویٹ پیغامات میں اس کی اطلاع دی گئی ۔مختلف ٹویٹ کے زریعہ بتایا گیا کہ مسافر بردار ٹرانسپورٹ میں مسافروں کی گنجائش 50 فیصد تک محدود کردی جائے گی،جبکہ ضلع پولیس سپرانٹنڈنٹوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ان احکامات کی تعمیل کرائے۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا  ’’جموں و کشمیر میں پبلک ٹرانسپورٹ (میٹاڈار / منی بس / بسیں وغیرہ) کو صرف اس کی اجازت دی گئی ہے کہ وہ اس  میںمسافروںکے بیٹھنے کی نشستیں50فیصد کم کریں،جبکہ ضلعی سپر انٹنڈنٹ ان احکامات پر عملدر آمد کرائے۔ایل جی نے اپنے ٹویٹ میں مزید کہا ’’ شہری بلدیاتی اداروں اور میونسپل حدود کے اندر واقع  شاپنگ کمپلیکسوں،بازاروں اور تجارتی مراکز میں صرف50فیصد دکانوں کو متبادل ایام میں کھلا رکھنے کی اجازت ہوگی‘‘۔تاہم ، ایل جی سنہا نے اپنے ٹویٹ میں مزید کہا کہ’’تمام اضلاع کے ضلعی مجسٹریٹ ترجیحی طور پر مقامی بازاریسوسی ایشنوں کے مشورے سے اس پر عمل درآمد کرنے کے لئے ایک طریقہ کار وضع کریں گے‘‘۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا کہ ایک نئے کوویڈ کنٹرول اقدامات کے تحت رات کے وقت کورونا کرفیو کو جموں و کشمیر کے تمام 20 اضلاع کے میونسپل وشہری بلدیاتی حدود تک بڑھایا جائے گا۔انہوں نے ٹویٹ میں کہا’’یہ پہلے ہی آٹھ اضلاع میں شام 10 بجے سے صبح 6 بجے تک نافذ العمل ہے‘‘۔سرکار نے بعد میں با ضابطہ طور پر ایک حکم نامہ جاری کیا۔جس میں کورونا کو قابو کرنے کیلئے بندشوں کا اعلان کیا گیا۔آفات سمایٰ منیجمنٹ،ریلیف،باز آبادکاری و نگرانی محکمہ کی سٹیٹ ایگزیکٹو کمیٹی کے ممبر سیکریٹری سمرن دیپ سنگھ کی جانب سے جاری حکم نامہ میں کہا گیا کہ جموں کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے چیف سیکریٹری،فائنانشل کمشنر صحت و طبی تعلیم،سیکریٹری تعلیم اور جموں و کشمیر  کے صوبا ئی کمشنروں کے ہمراہ جموں کشمیر میں کورونا سے متعلق صورتحال کا مفصل جائزہ لیا۔ حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ جائزہ میٹنگ کے دوران  کورونا وائرس کے پھیلائو کی صورتحال کا جائزہ لیا گیاجبکہ روزانہ کی بنیادوں پر کیسوں میں اضافے کے رجحان کو بھی زیر غور لایا گیا۔ حکم نامہ میں کہا گیا کہ شبانہ کرفیو میونسپل حدود میں تمام20اضلاع میں نافذ کیا گیا ہے۔ حکم نامہ میں متبادل دنوں میں تجارتی مراکز کھولنے اور مسافر بردار ٹرانسپورٹ کی نشستوں میں50فیصد کمی کا بھی اعلان کیا گیا۔ ضلع مجسٹریٹوں کو ہدایت دی گئی کہ دکانات کھولنے سے متعلق متعلقہ بازار یونینوں کے ساتھ طریقہ کار عملائے،جبکہ ضلع پولیس سپر انٹنڈنٹوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ معیاری عملیاتی طریقہ کار کو  زمینی سطح پر نافذ کریں۔
 
 

 مزید5 علاقوں میں محدود پابندیاں عائد

 پرویز احمد 
 
 سرینگر // ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر نے مزید5علاقوں کو محدود پابندی والے علاقے قرار دیا ہے اور اسطرح ابتک وادی میں 31علاقوں کو محدود پابندی والے علاقوں کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔ منگل رات دیر گئے ڈپٹی کمشنر سرینگر کی جانب سے جاری کئے گئے حکم نامہ میں بتایا گیا ہے کہ حضرتبل ، ایس آر گنج اور صدربل نزدیک مسجد امیر حنطیہ، براریپورہ سکہ ڈافر اور ملک یار فتح کدل کو محدود پابندی والے علاقوں میں شامل کیا گیا ہے۔  19اپریل کو مزید تین علاقوں کو محدود پابندیوں والے علاقے کے زمرے میں لاگیا تھا جن میں حیدر کالونی کلہ خان گلی صورہ،فردوس آباد کالونی بژہ پورہ اور بٹہ مالو کے غزلہ آباد علاقے میں واقع لین نمبر 2شامل ہے۔اس سے قبل  بی بی کینٹ بادامی باغ، بیگ محلہ آلوچی باغ اور مخدوم محلہ بٹہ پورہ نواب باغ نزدیک بہرار اسپتال لال بازار، لین نمبر 1عمر کالونی (ائے )لال بازار نزدیک راہ مسجد، عمر کالونی( اے) لال بازار لین نمبر 3نذدیک جی ڈی گوائنکا سکول ، زند شاہ مسجد کاٹھی دروازہ ، سنگین دروازہ ہاکہ بازار،گلشن محلہ عثمان آباد حول شامل ہیں۔میڈیکل زون بٹہ مالو میں وازہ باغ حیدرپورہ، ستھرا شاہی نزدیک حول ، ستھر ا شاہی نزدیک سیول سیکریٹریٹ،ایس ڈی اے کالونی بٹہ مالو نزدیک ٹیلنٹ سکول، قمر آباد بمنہ نزدیک صدیق لین ابو بکر مسجد بمنہ، نوشہرہ مین سٹاپ، عمر ہیر مسجد عثمان، باغات نزدیک جامع مسجد، بٹہ مالو نزدیک پی سی آر نزدیک جامع مسجد اور نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کو متاثرہ علاقہ قرار دیا گیا تھا ۔ ضلع انتظامیہ  نے بارہمولہ کے 8علاقوں کو محدود بندشوں والے علاقوں میں شامل کیا گیا ہے جن میں خواجہ باغ لوور( پیٹرول پمپ سے جٹی تک) ، چیک کانسپورہ، سنگری کالونی، کانلی باغ،دیوان باغ، دلنہ( قاضی محلہ، راوت پورہ، دلنہ گھاٹ اور ملت کالونی) ، شیروانی کالونی اور لون محلہ فیروز پور شامل ہیں۔ 
 

تازہ ترین