تازہ ترین

جہانگیر چوک میں غیر مقامی چوروں کا گروہ پولیس کی گرفت میں

کنگن میں سونار کی دکان لوٹنے میں ملوث،سونے کے زیورات اورآلٹو کار ضبط

تاریخ    17 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


ارشاد احمد
سرینگر//پولیس نے چوری کی متعدد وارداتوں کو انجام دینے والے اتر پردیش سے تعلق رکھنے والے 4نقب زنون کی گرفتاری عمل میں لائی۔شہید گنج پولیس اسٹیشن میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو معاملے کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا گیا کہ حال ہی میں سوشل نیٹ ورکنگ ویب سائٹ پر ضلع گاندربل کے علاقہ کنگن میں سونار کی ایک دکان پر ہوئی چوری کی واردات کی ویڈیو وائرل ہوئی ۔اس دوران شہید گنج پولیس اسٹیشن کی جانب سے جہانگیر چوک میں ناکہ پارٹی نے آلٹو ماروتی کار میں ایک خاتون سمیت چار افراد کو مشتبہ حالت میں دیکھا جسکے بعدچاروں کو کار سے باہرآنے کو کہا گیا۔ چاروں جیسے ہی باہر آئے توتھانہ سے وابستہ اے ایس آئی نے ان میں سے دو افراد کی پہچان کرلی جو کنگن علاقہ میں سونار کی دوکان کی چوری میں ملوث تھے۔ چاروں کو پولیس تھانہ شہید گنج منتقل کیا گیا جہاں ابتدائی پوچھ تاچھ کے دوران انہوں نے اعتراف کیا کہ انہوں نے کنگن میں سونار کی دکان میں چوری کی واردات انجام دی تھی۔ مزید تحقیقات پر چاروں نے قبول کیا کہ وہ اتر پردیش کے مراد آباد سے تعلق رکھنے والے ہیں جہاں سے وہ 12 اپریل کو جموں پہنچے تھے اور انہوں نے وہاںرگھوناتھ بازار میں سونار کی دکان سے چوری کی واردات انجام دی تھی۔ اس کے بعد اودہم پور میں بھی سونار کی دکان سے سونے کے زیورات لوٹ لئے۔کشمیر آکر انہوں نے ضلع گاندربل کے علاقہ کنگن سے سونار کی دکان سے سونے کی انگوٹھیاں چرالیں۔دوران پوچھ گچھ انہوں نے اعتراف کیا کہ وہ سب سے پہلے سونار سے سستے داموں والی انگوٹھی خرید لیتے تھے جس کی قیمت ادا کرنے کے لئے نوٹوں کا بنڈل نکال کر قیمت ادا کرتے تھے جس کے بعد وہ مہنگے داموں والے سونے کے زیورات دکھانے کی مانگ کرتے تھے۔چونکہ دوکاندار نوٹوں کا بنڈل دیکھ کر مطمئن ہوجاتا تھا اور مزید زیورات نکال کر دکھانے لگتا تھا ۔اتنے میں مذکورہ چور موقع دیکھ کر وہ ایک دو انگوٹھیاں چرا لیتے تھے۔پولیس نے ان کی تحویل سے سونے کی انگوٹھیاں اور دیگر زیورات اور ہزاروں روپے نقد رقم اورآلٹو کار ضبط کی ۔چاروں کی شناخت آکاش ولد راجیش ساکنہ مراد آباد اتر پردیش،گیتا زوجہ راجیش، دانش ولد سریش اور منوج کمار ولد مہی پال سنگھ ساکنہ غازی آباد اتر پردیش کے بطور ہوئی ۔چاروں کو سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیاگیا اور ان کے خلاف کیس زیر نمبر 10/2021 درج کرکے مزید تحقیقات شروع کردی گئی ۔