تازہ ترین

کورونا:دہلی میں آج رات سے نافز ہوگا ویک اینڈ کرفیو

تاریخ    17 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


یواین آئی
نئی دہلی// دہلی میں کافی تیزی سے بڑھ رہے کورونا انفیکشن کے پھیلنے کو روکنے کے لئے آج رات دس بجے سے ہفتے کے آخری دو دنوں میں کرفیو نافذ ہوجائے گا۔دہلی میں جمعہ کی رات دس بجے سے پیر کی صبح پانچ بجے تک کے لئے ہفتے کے آخر میں کرفیو لگانے کا اعلان کیا گیا ہے ۔دارالحکومت میں کورونا انفیکشن کی روک تھام کے لئے دہلی حکومت کی جاری کردہ رہنما خطوط کے مطابق ہفتے کے آخر میں کرفیو کے دوران لازمی خدمات میں شامل افراد کے علاوہ شادی کی تقریب میں شرکت کرنے والوں کے لئے بھی کرفیو پاس جاری کیے جائیں گے ۔ اس دوران ، دہلی میں آڈیٹوریم ، مال ، جم اور اسپا مکمل طور پر بند ہوجائیں گے ۔ تھیٹروں کو 30 فیصد صلاحیت کے ساتھ چلنے کی اجازت دی گئی ہے ۔ ضروری خدمات سے وابستہ افراد کو کرفیو پاس جاری کیے جائیں گے ۔ لوگوں کو ریستورانوں میں بیٹھ کر کھانا کھانے سے منع کیا جائے گا اور صرف گھر کھانا لے جانے کی اجازت ہوگی۔وزیر اعلی اروند کیجریوال نے لیفٹیننٹ گورنر انیل بیجل اور دیگر عہدیداروں سے ملاقات کے بعد یہ فیصلہ کیا ہے ۔ملک کی دیگر بہت سی ریاستوں کی طرح دارالحکومت دہلی میں بھی کورونا انفیکشن بہت تیزی سے پھیل رہا ہے ۔ دہلی میں جمعرات کو کورونا انفیکشن کے 16699 نئے کیس رپورٹ ہوئے جبکہ 112 افراد اس وبا کی وجہ سے ہلاک ہوگئے ۔
دریں اثنا ، دہلی حکومت نے دارالحکومت میں تیزی سے بڑھتے ہوئے کورونا انفیکشن کے پھیلاؤ کو کنٹرول کرنے کے لئے نائب وزیر اعلی منیش سسوڈیا کو کووڈ ۔19 انتظامیہ کا نوڈل وزیر مقرر کیا ہے ۔اس سلسلے میں چیف منسٹر اروند کیجریوال نے ایک آرڈر پر دستخط کردیئے ہیں ، جس کے مطابق مسٹر سسودیا اب دارالحکومت میں کووڈ 19 مینجمنٹ کے نوڈل وزیر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں گے اور اگلے احکامات تک بین وزارتی رابطہ کی ذمہ داری بھی نبھائیں گے ۔
 
 
 
 

سسودیا بنے کورونا انتظامیہ کے نوڈل وزیر

یواین آئی
نئی دہلی// دہلی حکومت نے نائب وزیراعلی منیش سسودیا کو اہم ذمہ داری دیتے ہوئے دارالحکومت میں تیزی سے بڑھ رہے کورونا انفیکشن کے پھیلنے کو روکنے کے لئے کووڈ -19 انتظامیہ کا نوڈل وزیر مقرر کیا ہے ۔وزیراعلی اروند کیجریوال نے اس سلسلے میں ایک حکم پر دستخط کئے ہیں جس کے مطابق  سسودیا اب دارالحکومت میں کووڈ-19 انتظامیہ کے لئے نوڈل وزیر کے طورپر کام کریں گے اور اگلے حکم تک بین وزارتی تال میل کی ذمہ داری بھی سنبھالیں گے ۔دارالحکومت میں تیزی سے بڑھ رہے کورونا انفیکشن کے درمیان جمعرات کو کورونا کے 16,699 نئے معاملے سامنے آئے تھے اور اس وبا کی وجہ سے 112 اورلوگوں کی موت ہوئی تھی۔
 

راجستھان میں جمعہ کی شام سے کرفیو نافذ ہوگا

یواین آئی
جئے پور// راجستھان حکومت نے عالمی وبا کورونا کی دوسری لہر کے تیزی سے بڑھنے کے پیش نظر ریاست میں جمعہ کی شام چھ بجے سے پیر کی صبح پانچ بجے تک ویکینڈ کرفیو لگانے کا فیصلہ کیا ہے ۔وزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے جمعرات دیر شب کورونا کورگروپ کے ساتھ میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا۔ کورونا کے بڑھتے انفیکشن کے پیش نظرجمعہ کی شام چھ بجے سے پیر کی صبح پانچ بجے تک ریاست میں کرفیو رہے گا۔  گہلوت نے تمام لوگوں سے درخواست کی ہے کہ کرفیو کے دوران حکومت کا تعاون کریں اورکووڈ مناسب سلوک کی پیروی کریں۔انہوں نے کہا کہ کرفیو کے دوران پہلے سے جاری نائٹ کرفیو میں رعایت کی کیٹگری والی خدمات میں پھل سبزی، دودھ، ایل پی جی اور بینکنگ خدمات کو شامل کیا گیا ہے ۔ پہلے ریاست کے 17 اضلاع میں کورونا کے زیادہ معاملے سامنے آرہے تھے لیکن گزشتہ کچھ دنوں سے تمام اضلاع میں انفیکشن تیزی سے پھیل رہا ہے ۔ اب ریاست میں کورونا کے 6658 نئے معاملے اور 33 اموات ہوئی ہیں۔ اس لئے ویکینڈ کرفیو کا سخت فیصلہ کیا گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر وقت رہتے اقدام نہیں کئے گئے تو صورت حال دوسری ریاستوں جیسی سنگین ہوسکتی ہے ۔ عوام سے اپیل ہے کہ وہ پہلے کی طرح اتحاد دکھائیں اور ایک دوسرے کا تعاون کریں۔ راجستھان حکومت ہر حالات سے نمٹنے کے لئے تیار ہے ۔ وقت کا مطالبہ ہے کہ ایک بار پھرتمام لوگ متحد ہوکر اسی عزم کے ساتھ تمام احتیاط اور حکومت کے ذریعہ مقررہ گائیڈلائن پر سختی سے عمل کریں۔ ہمیں یہ احساس ہے کہ تھوڑے وقت کے لئے شہریوں کو کچھ مشکلات کا سامناکرنا پڑسکتا ہے ، لیکن ہمیں یہ نہیں بھولناہے کہ جان ہے توجہاں ہے۔ریاست کے ضلع بھیلواڑہ کے سہاڑا، راجسمند اورضلع چورو کے سوجان گڑھ میں اتوارکو ہونے والی ووٹنگ اور اس سے وابستہ عمل کو ویکینڈ کرفیو میں رعایت رہے گی۔ اس کے علاوہ ضروری اور انتہائی ضروری اشیاء پھل سبزی، دودھ، ایل پی جی اور بینکنگ خدمات، دوا کی دوکانیں، ایمرجنسی خدمات سے جڑے دفاتر، شادی تقریب، میڈیکل خدمات سے وابستہ کام کا مقام، بس، ریلوے اسٹیشن اورہوائی اڈے سے آنے جانے والے لوگوں کو اس دوران آنے جانے کی چھوٹ ہوگی۔ قابل ذکر ہے کہ شہروں میں پہلے ہی شام چھ بجے سے صبح پانچ بجے تک نائٹ کرفیو نافذ ہے ۔قابل ذکر ہے کہ راجستھان میں جمعہ کو کورونا کے اب تک کے ایک دن میں سب سے زیادہ 6658 نئے معاملات سامنے آئے ۔ ان میں سب سے زیادہ جئے پور میں 848، جودھپور 847، ادے پور 711 اور کوٹا میں 638 معاملے سامنے آئے ۔ اس سے ریاست میں کورونا مریضوں کی تعداد بڑھ کر تین لاکھ 87 ہزار 950 پہنچ گئی۔ اس سے جمعہ کو 33 لوگوں کی موت ہوجانے سے اموات کی تعداد بھی 3041 پہنچ گئی۔ ریاست میں کورونا کے تیزی سے معاملے بڑھنے سے فعال معاملات کی تعداد بھی 49 ہزار 276 ہوگئی۔ حالانکہ اب تک تین لاکھ 35 ہزار633 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔