تازہ ترین

شیئر بازار میں کہرام، سینسیکس میں 1708پوائنٹس کی گراوٹ

تاریخ    13 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


ممبئی//کووڈ -19 کے تیزی سے پھیلنے اور اس کے پیش نظر ریاستوں کی طرف سے پابندیاں عائد کئے جانے سے شیئر بازار میں کہرام مچ گیا اور چوطرفہ فروخت کے درمیان بی ایس ای کا سینسیکس اور نیشنل اسٹاک ایکسچینج کا نفٹی تقریباڈھائی مہینے کی نچلی سطح تک نیچے آگیا۔گزشتہ کچھ دنوں سے ملک میں کووڈ- 19 کے نئے متاثرین میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ مرکزی وزارت صحت کی طرف سے پیر کی صبح جاری ہونے والے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران 168912 نئے متاثرین سامنے آئے ہیں۔ متعدد ریاستوں نے انفیکشن پر قابو پانے کے لئے تازہ پابندیاں عائد کردی ہیں۔ سرمایہ کاروں کو خدشہ ہے کہ  پھر سے لاک ڈاون جیسی صورتحال پیدا ہوسکتی ہے۔ابتداء ہی سے دباؤ میں رہنے والا سینسیکس کاروبار کے اختتام پر 1707.94 پوائنٹس یعنی 3.44 فیصد  کی گراوٹ کے ساتھ  47883.38 پوائنٹس پر بند ہوا۔ نفٹی بھی 524.05 پوائنٹس یعنی 3.53 فیصد کی گراوٹ سے 14310.80 پوائٹس پر بند ہوا۔ اسٹاک مارکیٹ میں گراوٹ کے سبب سرمایہ کاروں کو 8.69 لاکھ کروڑ روپے کا نقصان ہوا۔رواں سال 26 فروری کے بعد دونوں بڑے انڈیکس میں یہ ایک دن کی سب سے بڑی گراوٹ ہے۔ سینسیکس 29 جنوری کے بعد پہلی مرتبہ 48000 کے نیچے بند ہوا، جب کہ نفٹی کی  یکم فروری کے بعد  یہ سب سے کم سطح  ہے۔درمیانے اور چھوٹی کمپنیوں کے حصص پر زیادہ دباؤ رہا۔ بی ایس ای کا مڈ کیپ 5.32 فیصد کی گراوٹ کے ساتھ 19656.75 پوائنٹس پر بند ہوا۔جبکہ اسمال کیپ 4.81 فیصد کم ہوکر 20557.01 پوائنٹس پر بند ہوا۔یو این آئی
 

تازہ ترین