تازہ ترین

۔24گھنٹوں میں کوئی فوت نہیں| جموں کشمیر میں 991مثبت

سفر کرنے والے383افراد شامل،سرینگر میں ایک دن میں 300کا ہندسہ پار

تاریخ    13 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر // گذشتہ سال 17مارچ سے پہلی مرتبہ پیر کو بیرون ریاستوں اور ممالک سے جموں و کشمیر آنے والے 383 سمیت 991  افرادوائرس سے متاثر پائے گئے تاہم اس دوران کسی کی موت واقع نہیں ہوئی ۔گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران  34 ہزار 121ٹیسٹ کئے گئے، جن میں 991افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں ۔ان میں 499جموں جبکہ 492کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ متاثر ہونے والی تعداد میں پہلی بار جموں نے کشمیر پر تھوڑی بہت سبقت لی۔کشمیر سے تعلق رکھنے والے 492متاثرین میں 408مقامی سطح جبکہ 84افراد بیرون ریاستوں اور ممالک سے سفر کرنے کے وادی آئے۔کشمیر کے 492متاثرین میں سرینگر میں سب سے زیادہ 303، بارہمولہ میں 53، بڈگام میں 31، پلوامہ میں 30، کپوارہ میں 22، اننت ناگ میں 25، بانڈی پورہ میں 3، گاندربل میں 12، کولگام میں10اور 3 شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں۔ جموں صوبے کے کشتواڑ اور پونچھ ضلع میں کسی کی رپورٹ مثبت نہیں آئی ہے جبکہ دیگر 8اضلاع میں ریکارڈ 499افراد وائرس سے متاثر ہوئے جن میں بیرون ریاستوں اور ممالک سے آنے والے 299افراد بھی وائرس سے متاثر پائے گئے۔ جموںمیں 200افراد مقامی سطح پر وائرس میں مبتلا لوگوں کے رابطے میں آئے ہیں۔جموں صوبے کے499متاثرین میںضلع جموں میں 181، ادھمپور میں 160، راجوری میں 1، کٹھوعہ میں 55،سانبہ میں 4، رام بن میں ایک اور ریاسی میں 97افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے میں متاثرین کی مجموعی تعداد55702تک پہنچ گئی جبکہ یہاں متوفین کی تعداد752بنی ہوئی ہے۔ جموں و کشمیر میں متاثرین کی تعداد 139381ہوگئی ہے جبکہ وائرس سے 2034متاثرین جان گنوا چکے ہیں۔ 
 

نجی سکول سیل،30ہزار جرما نہ 

 سرینگر /پرویز احمد/ ضلع انتظامیہ بڈگام نے سکول کھلا رکھنے کی پاداش میں ایک نجی سکول کو سیل کرکے سکول پر 30ہزار روپے کا جرمانہ عائد کیا ہے۔ سوموار کو چیف ایجوکیشن آفیسر بڈگام نے خمینی چوک پر واقع ایک نجی سکول پر چھاپہ مارا اور وہاں سکول میں بچوں کو معمول کے مطابق کلاسوں میں موجود پایا ۔ ڈپٹی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزا نے سکول پر جرمانہ عائد کر کے سکول کو سیل کردیا جبکہ مذکورہ نجی سکول کے خلاف تحقیقات کا بھی حکم جاری کیا گیا ہے۔ 
 
 

التجاء مفتی وائرس سے متاثر

سرینگر//پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کی چھوٹی بیٹی التجاء مفتی کی رپورٹ سوموار کو مثبت آئی ہے۔ محبوبہ مفتی نے اپنے ٹیوٹر پیغام میں لکھا’’ میری چھوٹی بیٹی التجاء کی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔انہوں نے مزید تحریر کیا’’ التجاء نے خود کو قرنطین کرلیا ہے، جیسا کہ ڈاکٹروں نے مشورہ دیا ہے اور تمام لازمی احتیاط برت رہی ہے‘‘۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس سے قبل نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور انکے فرزند عمر عبداللہ کی رپورٹیں مثبت آئی تھیں۔ جموں و کشمیر میں پچھلے35دنوں سے متاثرین کی تعداد میں متواتر طور پر اضافہ ہورہا ہے۔
 

تازہ ترین