تازہ ترین

نوارترا تہور پرجموں میونسپل حدود میں تمام گوشت / مرغ کی دکانیں ،ذبح خانے بند

تاریخ    10 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


سید امجد شاہ
جموں //جموں میونسپل کارپوریشن (جے ایم سی) نے نواترا تہوار کے دوران میونسپلٹی حدود میں دو ذبح خانوں اور 162 گوشت / مرغ کی دکانیں بند رکھنے کا حکم دیا ہے۔میئر ، جموں میونسپل کارپوریشن (جے ایم سی) چندر موہن گپتا نے بتایا’’ ہم نے ایک پرانی روایت کو زندہ کیا ہے جب جموں پرانا شہر تھا تومہاراجہ دورکے دوران پرانے شہرمیں نوراترا تہوار کے دوران گوشت کی تمام دکانیں بند رہتی تھیں‘‘۔گپتا نے کہا کہ یہ مشق جموں میں مشکل سے 25 سے 30 سال پہلے تک جاری تھی اور اسی وجہ سے انہوں نے اس کو دوبارہ بحال کیا ہے جو کوئی نئی بات نہیں ہے۔جے ایم سی نے جموں کے میونسپل حدود میں ذبح خانے اور گوشت کی دکانیں بند کرنے کا حکم دیا ہے جس کے جواب میں جے ایم سی کے 11 ویں جنرل ہاؤس اجلاس کی منظوری دی گئی قرارداد کا حوالہ دیا گیا ہے۔میونسپل ویٹرنری آفیسر ، ڈاکٹر سشیل کمار شرما نے بتایا "جے ایم سی کی حدود میں تقریباً 76 جھٹکا اور 86 حلال گوشت / مرغ کی دکانیں اور دو ذبح خانے یعنی ڈوگرہ ہال (جھٹکا) اور گوجر نگر (حلال) ہیں۔شرما نے کہا کہ ان کے پاس رجسٹرڈ دکانوں کے اعداد و شمار موجود ہیں یہاں تک کہ دربار کے دوران کچھ دکانیں عارضی طور پر چلتی ہیں۔انہوں نے مزید کہا "یہ دکانیں اور ذبح خانہ نواترا تہوار کے وقت 7 سے 9 دن تک بند رہیں گی"۔تاہم وارڈ نمبر 6 کے کارپوریٹر محی الدین چودھری نے بتایا "ہم تمام برادریوں کے مذہبی عقیدے کا احترام کرتے ہیں۔ تاہم جے ایم سی کو مذہبی مقامات کے قریب دکانیں بند رکھنی چاہئیں تھیں ، بلدیاتی حدود میں نہیں۔ یہ بلا جواز حکم ہے جس سے گوشت / مرغ کے کاروبار میں لوگوں کو نقصان ہوسکتا ہے۔انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ رہائشی علاقوں میں دکانوں کو کھلا رہنے دیا جائے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ "جے ایم سی کو بھی شراب کی دکانیں بند کرنے کا حکم دینا چاہئے تھا"۔