تازہ ترین

مزید خبرں

تاریخ    9 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


کورونا وائرس کی وبا

بذریعہ روڑ آنے والوں کی ٹیسٹنگ لور منڈا میں ہوگی

سہولیات آئندہ چند روز میں :ڈی سی سرینگر

نیوز ڈیسک
 
سرینگر //کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے انتظامیہ نے بذریعہ روڑ سفر کرنے والے افراد کی ٹیسٹنگ لوور منڈا قاضی گنڈ میں کرنیکا فیصلہ کیا ہے لیکن ساتھ ہی کہا گیا ہے کہ فوری طور پر ایسا نہیں کیا جاسکتا۔یاد رہے دو روز قبل کشمیر عظمیٰ نے اس معاملے کو اجاگر کیا تھا۔ ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر محمد اعجاز اسد نے ٹی آر سی میں کورونا سے منسلک معاملات پر جائزہ میٹنگ کے دوران کہا کہ جموں سے سرینگر بذریعہ روڑ آنے والے تمام افراد کی ٹیسٹنگ کا عمل آئندہ چند دنوں میں شروع ہونا چاہئے تاکہ کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ سیاحت سے جڑے فرنٹ لائن ورکروں ہوٹل عملہ، ڈرائیوروں، ہائوس بوٹ عملہ اور دیگر متعلقین کی ٹیکہ کاری کا عمل بھی شروع ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ سیاحت سے جڑے اداروں میں عملہ کیلئے خصوصی تربیتی پروگراموں کا انعقاد ہونا چاہئے جن میں سیاحوں سے نپٹنے اور خدمات فراہم کرنے کیلئے قوائد و ضوابط شامل ہیں۔ محمد اعجاز اسد نے سیاحت سے جڑے تمام افراد کو ہوٹلوں اور دیگر جگہوں پر قرنطین کیلئے علیحدہ 2کمرے دستیاب رکھنے کی بھی ہدایت دی ہے تاکہ سیاح کی رپورٹ مثبت آنے پر انہیں قرنطین کیا جاسکے۔ کو انہوں نے کہا کہ رونا وائرس کے دوران معیاری ضائع اخلاق پر عمل کرنے پر زور دیتے ہم سب کو ذمہ داری سے کام کرنا ہوگا اورتمام متعلقین کو ایک ٹیم کی طرح کام کرکے بہتر سیاحت کو یقینی بنانا چاہئے۔ اس موقع پر ڈاکٹر غزالہ، جو ائر پورٹ پر ٹیسٹنگ کی انچارج ہیں، نے کورونا وائرس مخالف ٹیکہ کاری کی اہمیت کو اجاگر کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اموات اور وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے ویکسین ضروری ہے۔ اس موقع پر سرینگر ، گلمرگ، پہلگام اور سونہ مرگ سے آئے نمائندوں نے میٹنگ میں حصہ لیا اور اپنے تحفظات کا اظہار کیا ۔اس موقع پر سیاحت سے جڑے افراد نے کئی مانگیں رکھیں جن میں کورونا وائرس سے متاثر سیاحوں کیلئے علیحدہ ہوٹل، آر ٹی پی سی آر رپورٹ آنے کے بعد ہی کشمیر میں داخل ہونے کی اجازت اور ایئر پورٹ اور دیگر مقامات پر ٹیسٹنگ سہولیات میں بہتری شامل ہے۔
 

ہایہامہ جنگل میں نوجوان کی عدم شناخت لاش بر آمد 

اشرف چراغ 
 
کپوارہ// ہایہامہ کپوارہ میں ایک نوجوان کی لاش پُراسرار طور پر بر آمد کی گئی ہے۔ جمعرات کی صبح جگٹیال ہایہامہ کپوارہ میں خواتین جنگلی سبزی لانے کیلئے گئیں ۔ اس موقعہ پر خواتین یہ دیکھ کر ششدر رہ گئیں کہ وہاں پر ایک نوجوان کی لاش پڑی ہے۔ معاملہ کی اطلاع فوری طور پر پولیس کو دی گئی۔اطلاع ملتے ہی پولیس کی ٹیم جائے واقعہ پر پہنچی اور  لاش کو اپنی تحویل لی ہے تاہم لاش کی شناخت ابھی تک نہیں ہوئی ہے۔ پولیس نے کیس درج کرکے معاملہ کی تحقیقات شروع کی ہے۔ 
 
 

پریس کانفرنس میں آغا حسن کوشرکت سے روکنا افسوس ناک:انجمن شرعی شیعیاں

سرینگر//انجمن شرعی شیعیان نے متحدہ مجلس علماء کے صدر اور میرواعظ عمر فاروق کی 20ماہ سے متواتر خانہ نظر بندی اور دیگر کئی دینی رہنماؤں کی دینی و سماجی سرگرمیوں کو محدود کرنے کی حکومتی کاروائی کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرتے ہوئے گورنر انتظامیہ سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ ماہ مبارک کے پیش نظر میر واعظ کشمیر کی خانہ نظربندی کو فوری طور ختم کریں تاکہ وہ رمضان المبارک کے دوران فرائض منصبی انجام دے سکے۔ انجمن شرعی شیعیان کے ترجمان نے کہا کہ میرواعظ کی مسلسل خانہ نظر بندی کی وجہ سے وادی کے قدیم ترین اور اہم دینی مرکز، مرکزی جامع مسجد سرینگر میں انجام پذیر دینی و تبلیغی سرگرمیاں مسدود ہو کر رہ گئی ہیں اور عوام کے دینی جذبات بری طرح مجروح ہیں ۔ترجمان نے میرواعظ منزل پر رمضان المبارک کے حوالے سے جڑے معاملات پر متحدہ مجلس علماء کی اہم پریس کانفرنس میں انجمن شرعی شیعیان کے صدر آغا سید حسن کو شرکت کرنے سے روکنے پر شدید رد عمل ظاہر کیاہے۔ ترجمان کے مطابق آغا حسن کی غیر موجودگی میں ان کے فرزند آغا سید مجتبیٰ عباس نے پریس کانفرنس میں شرکت کرکے انجمن شرعی شیعیان کی نمائندگی کی ۔ترجمان نے کہا کہ آغا حسن عملی طور پر نہ آزاد ہیں اور نہ خانہ نظربند ہیں کیونکہ انھیں گھر سے باہر کسی بھی پروگرام میں شرکت کرنے کا آزادانہ اختیار نہیں ہے۔ ترجمان نے یونین ٹیریٹری اور بیرونی یوٹی مقید حریت کارکنوں اور قائدین نیز 5 اگست 2019 کے یکطرفہ اقدامات کے بعد گرفتار کئے گئے تمام نوجوانوں کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کا اقدام رمضان المبارک کے دوران عوام کے لئے سکون و اطمینان بخش ثابت ہوگا۔دریں اثنا آغا حسن نے جمعیت اہلحدیث کے سابق مولانا شوکت احمد شاہ کو برسی پر شاندار خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ وادی میں اتحاد بین المسلمین بالخصوص شیعہ سنی اتحاد کے لئے جو جرائت مندانہ کردار انہوں نے اداکیا ،وہ ناقابل فراموش ہے ۔

 

ضلع اور ماتحت عدالتوںمیں مقدمات کی سماعت

ورچوئل موڈ کے ذریعہ ہوگی،ذاتی حاضری عرضداشت سے مشروط 

سرینگر//جموں و کشمیر ہائی کورٹ کی طرف سے جاری کردہ حکم کی تعمیل میں ، مقدمات کی سماعت کے دوران ذاتی طور پرحاضری کو عارضی طور پر التواء میں رکھنے کا فیصلہ کیاگیا ہے اور 18 اپریل 2021 تک ضلعی اور ماتحت عدالتوں میں مقدمات کی سماعت ورچوئل موڈ کے ذریعے کی جائے گی۔ سرکاری بیان کے مطابق دونوں فریقوں کے وکلاء کو ان کی رضامندی سے مشروط ذاتی موجودگی کے طریقہ کار سے معاملات پیش کرنے کی آزادی دی گئی ہے۔ یہ بتایا گیا تھا کہ ذاتی موجودگی کی پیشی کے لئے تحریری رضامندی (کیس کی تفصیلات کے ساتھ ، عدالت کا نام جس کیس میں زیر التوا ہے اور اس کیس کا سی این آر نمبر) متعلقہ عدالت کا پریذائیڈنگ افسر کی کیس کی حساسیت کی نوعیت کو مد نظر رکھے گی۔مجازی سماعت کے علاوہ فریقین کے وکلاء ازدواجی معاملات ، دفعات 138 انسٹرومنٹس ایکٹ کے تحت معاملات،زیر حراست ملزم،سمجھوتہ یا کسی بھی دوسرے معاملات میں سماعت کے لئے پیش ہونے کے لئے اپنی رضامندی دے سکتے ہے ۔’’ایم اے سی ٹی ‘‘کے سامنے زیر التواگاڑیوں کے حادثے کے دعوؤں کے سلسلے میں ، فریقین ذاتی طور پر پیشی کے لئے اجازت کے لئے، ورچوئل وضع کے ذریعے براہ راست پریذائڈنگ آفیسر ایم اے سی ٹی سے رابطہ کریں گے۔تازہ ترین درخواستیں دائر کرنے کے علاوہ ، یہ تمام پریزائیڈنگ افسران پر لازم ہے کہ وہ درخواستیں وصول کریں ، لہذا ورچوئل موڈ کے ذریعہ ان کو موصولہ ، انسٹی ٹیوشن ، فائلنگ کاؤنٹر پر تیار کیا جائے۔ ذاتی طور پر پیش آنے کے لئے تحریری رضامندی کے بارے میں مزید تفصیلات ، متعلقہ افراد’’ ای کورٹ سیکشن‘‘ کے کسی بھی عہدیدار سے رابطہ کرسکتے ہیں۔بیان میں میں مزید کہا گیا ہے کہ عدالتوں میں تعینات عملہ اور وکلاء جو ذاتی طور پر عدالت میں پیش ہونگے کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ضروری احتیاط اٹھائے،جبکہ جسمانی دوری کو یقینی بنانے کے علاوہ چہرے پر ماسکوں کو لگائے اور حکومت کی جانب سے وقت وقت پر جاری معیاری عملیاتی طریقہ کاروں کو سختی کے ساتھ عملائے۔
 

رسوئی گیس میں لگی آگ سے جھلسنے والی خاتون دم توڑ بیٹھی، اننت ناگ میں کہرام

سونہ وار سڑک حادثہ میں گاندربل کا شہری لقمۂ اجل 

سوپور میں ٹریکٹر پلٹنے سے ڈرائیور زخمی 

عارف بلوچ++غلام محمد 
 
اننت ناگ+سوپور //اننت ناگ میں چند روز قبل رسوئی گیس خارج ہونے کے نتیجے میں بری طرح سے جھلسنے والی خاتون صدراسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھی ۔ادھر سونہ وار سرینگر میں سڑک کے ایک حادثہ میں گاندر بل کا ایک17سالہ مزدور لقمہ اجل بن گیا جبکہ سوپور میں ٹریکٹر پلٹنے سے جواں سال ڈرائیور زخمی ہوگیا۔54 سالہ راجہ بانو زوجہ عبدالقیوم ساکنہ مٹن اننت ناگ چند روز قبل کچن میں کام کر رہی تھی جس کے دوران رسوئی گیس خارج ہونے کے بعد آگ ظاہر ہونے سے خاتون بری طرح جھلس گئی اور اس سے علاج معالجے کیلئے گورنمنٹ میڈیکل کالج اننت ناگ پہنچایاگیا جہاں ڈاکٹروں نے اس سے مزید علاج کے لئے ایس ایم ایچ ایس سرینگر منتقل کیا جہاں وہ جمعرات کی صبح زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھی ۔سی این ایس کے مطابق عمر قادر گنائی ولد غلام قادر ساکن واکورہ گاندربل کو جی بی پنتھ ہسپتال سونہ کے نزدیک سڑک حادثہ میں موقع پر ہی موت واقع ہوگئی۔ حادثے میں واکورہ کا رہنے والا ہی 22سالہ دانش احمد بٹ ولد محمد الطاف بٹ زخمی ہوگیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے سڑک حادثے کے اس دلخراش واقعے سے متعلق کیس درج کرلیا ہے۔ اس دوران منڈجی سوپور میں ٹریکٹر پلٹنے سے ڈرائیور زخمی ہوگیا۔ 24سالہ سجاد احمد گنائی ولد محمد مجنون ساکنہ منڈجی ٹریکٹر چلا رہا تھا اور ٹریکٹر پلٹنے کے نتیجہ میں شدید زخمی ہوگیا۔ مذکورہ شہری کو فوری طور پر بارہمولہ ہسپتال لے جایاگیا جہاں سے اسے مزید علاج و معالجہ کیلئے صدر ہسپتال منتقل کیاگیا۔ 
 
 

کولگام میں مارکیٹ چیکنگ

دکانداروں پرجرمانہ عائد 

کولگام میں پولیس، محکمہ مال اور اینفورسمنٹ ونگ نے ضلع میں مارکیٹ چیکنگ کی اور دکانداروں سے 3800روپے جرمانہ وصول کیا۔پولیس تھانہ منزگام کے ایس ایچ او،محکمہ مال اور اینفورسمنٹ کے اہلکاروں نے منزگام کے مین بازار اور ملحقہ بازاروں کا معائنہ کیا۔ معائنہ کا مقصد اشیائے ضروریہ کے معیار، کالا بازاری اور ناجائز منافع خور دکانداروں پر نظر رکھنا ہے۔ چیکنگ ٹیم نے دکانداروں بات کی اور ضلع انتظامیہ کی طرف سے کورونا وائرس سے متعلق رہنما خطوط پر عمل درآمد کرنے پر زور دیا۔ ٹیم نے دکانداروں سے کہاکہ وہ ریٹ لسٹ دکانوں پر آویزاں رکھیں۔ اس کے علاوہ ناپ تول قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر دکانداروں سے 3800روپے جرمانہ وصول کیاگیا۔
 

رورل ڈیولپمنٹ دفتر میں ملازمین کی غیر حاضری

ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام نے دفتر مقفل کردیا

گاندربل //ارشاد احمد//بڈگام میں رورل ڈیولپمنٹ دفتر میں ملازمین کی غیر حاضری پر ضلع ترقیاتی کمشنر نے دفتر کومقفل کیا۔ ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام شہباز مرزا نے جمعرات کو رورل ڈیولپمنٹ دفتر کا دورہ کیا جس کے دوران انہوں نے بیشتر ملازمین کو ڈیوٹی سے غیر حاضر پایا۔ انہوں نے معاملہ کا سنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے دفتر پر تالہ لگایا جس میں اے سی ڈی بڈگام اور ڈی پی او بڈگام کے دفاتر بھی موجود ہیں۔شہباز مرزا نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ یہ شکایات مل رہی تھیں کہ ملازمین ڈیوٹی پر لاپرواہی اور غفلت سے کام لے رہے ہیں اور روزانہ دیر سے دفتر آتے ہیں جس کی بنا پر میں نے ذاتی طور پر معائنہ کرتے ہوئے ملازمین کو ڈیوٹی سے غیر حاضر پایا مزید ہم ان کے خلاف باضابطہ محکمانہ کارروائی کی جائیگی۔ 
 
 

ریشی گنڈ کرالہ پورہ بنیادی سہولیات سے محروم

پینے کا پانی ندارد،سڑکیں خستہ حال،سکول میں اساتذہ کی کمی

اشرف چراغ 
کپوارہ //شمالی ضلع کپوارہ کاریشی گنڈ علاقہ بنیادی سہولیات سے محروم ہے جس کے با عث مقامی لوگو ں میں انتظامیہ کے تئیں ناراضگی پائی جارہی ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ ریشی گنڈ علاقہ میں پینے کے پانی کی سخت قلت پائی جارہی ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو سخت مشکلات کاسامنا کرنا پڑتا ہے۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ ریشی گنڈ علاقہ کو آج تک کسی واٹر سپلائی سکیم سے مستفید نہیں کیا گیا ہے ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ دو سال قبل سرکار نے اس علاقہ کے لئے درنگیاری ریشی گنڈ واٹر سپلائی سکیم کی منظوری دی تاہم آج تک اس پر کام شروع نہیں کیا گیا ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ علاقے کی سڑکو ں کی حالت اس قدر خستہ ہے کہ اس پر چلنا محال بن گیا ہے جبکہ گا ڑیو ںکی آمد و رفت بھی متاثر ہورہی ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ بجلی کے نا قص نظام سے لوگ اب تنگ آچکے ہیں کیونکہ محکمہ بجلی صارفین کو شیڈول کے مطابق بجلی فراہم نہیں کرتا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ کرالہ پورہ رسیو نگ اسٹیشن سے ہفتہ میں4روز بجلی سپلائی میںکٹوتی کی جاتی ہے ۔مقامی لوگو ں کا  کہنا ہے کہ علاقہ میں قائم مڈل سکول میں اساتذہ کی کمی کی وجہ سے زیر تعلیم بچو ں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے اور محکمہ تعلیم اس صورتحال سے باخبر ہونے کے باوجود اساتذہ کی کمی کو پورا نہیں کررہا ہے۔علاقہ کے لوگو ں نے ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ علاقہ ریشی گنڈ کی تعمیر و ترقی کی طرف خصوصی توجہ دی جائے تاکہ ان کے مشکلات کا ازالہ ہو سکے ۔
 

کولگام میں ڈاکٹر فاروق کی صحتیابی کیلئے دعائیہ مجلس

سرینگر//نیشنل کانفرنس ضلع کولگام کے اہتمام سے ایک دعائیہ مجلس کا اہتمام ہوا جس میں پارٹی صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ اور کورونا میں مبتلا دیگر مریضوں کی صحتیابی کیلئے خصوصی دعائوں کا اہتمام کیا گیا۔ مجلس میں شرکاء نے اللہ کے دربار میں نہایت عاجزی اور انکساری کے ساتھ دعائیںکیں۔ دعائیہ مجلس میں پارٹی کے ضلع صدر کولگام ایڈوکیٹ عبدالمجید لارمی اور پارٹی ترجمان عمران نبی ڈار کے علاوہ سینئر پارٹی عہدیداران، ڈی ڈی سی ممبران اور کارکنان موجود تھے۔ 
 

پروفیسر ریاض پنجابی کی خدمات ناقابل فراموش

این سی،پی ڈی پی،کانگریس ،اپنی پارٹی ،پی ڈی ایف ،سی پی آئی ایم کا اظہار تعزیت 

سرینگر//کشمیر یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر پروفیسر ریاض پنجابی کے انتقال پروائس چانسلر کشمیر یونیورسٹی پروفیسر طلعت احمد،نیشنل کانفرنس،جموں کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی،پی ڈی ایف،سی پی آئی ایم، اپنی پارٹی اور حقانی ٹرسٹ سمیت سماج کے مختلف حلقوں سے وابستہ افراد نے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔وائس چانسلر کشمیر یونیورسٹی پروفیسر طلعت احمد، رجسٹرارڈاکٹر نثار احمد میر اور دیگر افسران و عملے نے سابق وائس چانسلر پروفیسر ریاض پنجابی کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ پروفیسر طلعت اور ڈاکٹر نثار نے 2008سے لیکر2011تک موصوف کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے اُن کی مغفرت اور لواحقین کیلئے مغفرت کی دعا کی۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کی تعمیر و ترقی میں پروفیسر پنجابی کی خدمات کو ہمیشہ یاد کیا جائے گا۔ نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے گہرے صدمے کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔انہوں نے مرحوم کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم اور لٹریچر کے شعبے میں ناقابل فراموش خدمات انجام دینے کیلئے پروفیسر ریاض پنجابی کو پدم شری ایوارڈ سے نوازا گیا تھا اور مرحوم نے کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے بطور اپنے فرائض خوش اسلوبی اور تن دہی سے انجام دئے اور تعلیم کے شعبے میں کارہائے نمایاں انجام دئے۔ پارٹی کے نائب صدر عمر عبداللہ ،جنرل سکریٹری علی محمد ساگر، معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر مصطفی کمال، صوبائی صدر ناصر اسلم وانی، اراکین پارلیمان محمد اکبر لون، جسٹس (ر)حسنین مسعودی، سینئر لیڈران عبدالرحیم راتھر، محمد شفیع اوڑی، مبارک گل، شریف الدین شارق، نذیر احمد خان گریزی اور محمد یوسف ٹینگ نے بھی تعزیت کا اظہار کیا ہے۔پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی اور عبدالرحمان ویری نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ موصوف معروف ماہر تعلیم ہونے کے ساتھ ساتھ ہمیشہ امن کے وکیل تھے۔ انہوں نے مرحوم کی مغفرت اور اہل خانہ کیلئے صبر کی دعا کی۔جموں کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر جی اے میراورسینئر لیڈر پروفیسر سیف الدین سوز نے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت اور لواحقین بالخصوص اُن کی اہلیہ ترنم ریاض کیلئے صبر جمیل کی دعا کی۔چیئرمین پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ حکیم محمد یاسین ،سی پی آئی ایم لیڈر محمد یوسف تاریگامی اور اپنی پارٹی لیڈر محمد دلاور میرنے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت کیلئے دعا کی ہے۔سبھی لیڈران نے کہا ہے کہ موصوف نے جموں کشمیر کے تعلیمی میدان میں ناقابل فراموش کام کیا ہے۔حقانی میموریل ٹرسٹ نے نامور ماہر تعلیم اور کشمیر یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر ریاض پنجابی کے انتقال پر تعزیت کا اظہارکیا ہے۔ ٹرسٹ کے سرپرست اعلیٰ سید حمید اللہ حقانی نے ان کی وفات پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے اپنی علمی کارناموںاور تحقیقی مضامین سے دنیا بھر میں کشمیر کا نام روشن کیاہے ۔
 

کولگام میں آگ ،2رہائشی مکانات خاکستر

  سرینگر// دمحال ہانجی پورہ کے وٹیگام نامی گائوں میں آگ کی ایک ہولناک واردات میں دو مکانات خاکستر ہو گئے جن میں سات کنبے رہائش پذیر تھے۔آگ جمعرات کی صبح ایک رہائشی مکان سے نمودار ہوگئی جس نے آناًفاناً دوسرے مکان کو بھی اپنی لپیٹ میں لیا ۔مقامی لوگوں کے مطابق آگ لگنے کے ساتھ ہی فائر اینڈ ایمر جنسی کو مطلع کرنے کے ساتھ ساتھ خود بھی مقامی نوجوان آگ بجھانے میں جٹ گئے  اوربروقت کارروائی کے نتیجے میں ایک گنجان آبادی کو ایک بڑے حادثہ سے بچالیا گیا۔آگ کی اس واردات سے سات کنبے بے گھر  ہوگئے جن میں جہانگیر احمد ڈار ، محمد اسلم ڈار، محمد یوسف ڈار، گلزار احمد ڈار، محمد اشرف ڈار ، محمد یوسف پرے اور مبارک احمد پرے شامل ہیں۔مقامی لوگوں نے موجودہ لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ سے متاثرین کیلئے مدد کی اپیل کی ہے ۔کے این ایس 
 

ہندوارہ میں شہری گرفتار 

نالہ ماور سے غیر قانونی طور ریت اور باجری نکالنے کا الزام 

اشرف چراغ 
کپوارہ// لنگیٹ پولیس نے نالہ ماور سے غیر قانونی طور ریت اور باجری نکالنے کے الزام میں ایک شخص کو گا ڑی سمیت گرفتار کیا ۔پولیس کے مطابق انہو ں نے نالہ ماور سے غیرقانونی طور ریت اور باجری نکالنے والو ں کے خلاف ایک مہم شروع کی ہے ۔پولیس کا کہنا ہے کہ ایک خصوصی ٹیم نے جمعرات کو ایک گا ڑی ضبط کی اور اس کے ڈرائیور جا وید احمد میر ساکن گلگام کو گرفتار کیا جو نالہ سے غیر قانونی طور ریت اور باجری نکالتاتھا ۔پولیس نے معاملہ کی نسبت ایک کیس زیر ایف آئی آر نمبر 77/2021درج کر کے تحقیقات شروع کی ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ سر کار اور ضلع انتظامیہ کی پابندی کے باوجود بھی نالہ ماور سے ریت اور باجری نکالنے کا کام جاری ہے۔
 

 میر سید حفیظ اللہ اندرابی کا عرس

 انجمن اہلسنت والجماعت کی تقریبات اختتام پذیر 

سرینگر//انجمن اہلسنت والجماعت جموں و کشمیرنے میر سید حفیظ اللہ اندرابی بانی غوثیہ عربی کالج ٹرسٹ قاضی گنڈکے سالانہ عرس تقریبات  عقیدت کے ساتھ منائی گئیں جس کی صدارت سجادہ نشین میر سید محمد شفیع اندرابی نے کی۔اس موقعہ پر علماء اہلسنت نے اُن کی علمی، دینی و  خدمات پر انہیں خراج عقیدت پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ اُن کی دینی وعلمی خدمات تاریخ کشمیر کا روشن باب ہے۔ 
 

گریز کا سڑک رابطہ فوری طور پر بحال کیا جائے: محمد اکبر لون

سرینگر//جموں و کشمیر کے رکن پارلیمان برائے شمالی کشمیر ایڈکیٹ محمد اکبر لون نے سرحدی علاقہ گریز اور دیگرعلاقوں کی رابطہ سڑکیں فوری طور پر بحال کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ رابطہ مسلسل منقطع رہنے سے لوگ گوناگوں مشکلات سے دوچار ہیں۔ ایک طرف غذائی اجناس اور ضروریاتِ زندگی کی کمی ہے جبکہ دوسری جانب ادویات کی قلت بھی ہونے لگی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان علاقوں کے مریض  علاج و معالجہ کیلئے دوسری علاقوں تک پہنچنے سے قاصر ہیں، جس نے لوگوں کی پریشانوں میں مزید اضافہ کردیا ہے۔ لون نے بیکن اور متعلقہ حکام کو ہدایت کی ان علاقوں کا سڑک رابطہ جنگی بنیادوں پر بحال کرکے وہاں ضروریاتِ زندگی کا وافر سٹاک پہنچایا جائے۔ ادھر پارٹی کے رکن پارلیمان برائے شمالی کشمیر جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ مغل شاہراہ کو آمدو رفت کے قابل بنانے کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کیا جائے تاکہ سرینگر جموں شاہراہ پر دبائو کم ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ سرینگر جموں شاہراہ آئے روز بند رہتی ہے اسلئے مغل شاہراہ کو آمد ورفت کے قابل بنانا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ 
 

کھاگ پولیس کا عوامی دربار

کورونا رہنما خطوط پر عمل کرنے کی اپیل

سرینگر// بڈگام پولیس نے کھاگ تھانہ میںایس ایچ او کی سربراہی میں ایک عوامی دربار کا انعقاد کیا۔اجلاس میں نمبردار ، سرپنچ ، پنچ ، تاجروں اور علاقے کے معزز شہریوں نے شرکت کی۔ اجلاس کا مقصد کوویڈ 19 کے پیش نظر حکومت کی طرف سے جاری کردہ رہنما خطوط کے بارے میں لوگوں کو آگاہ کرنا تھا۔ شرکاء سے گزارش کی گئی کہ وہ کووڈ کو روکنے کے لئے ہدایات / ایس او پیز پر عمل کریں۔ انہیں یہ بھی مشورہ دیا گیا کہ کووڈ ایس او پیز کے بارے میں عوام میں آگاہی پھیلائیں۔اجلاس کے دوران شرکاء نے کچھ شکایات کیں جن میں سے کچھ موقع پر ہی حل کئے گئے۔ صدارت کرنے والے افسران نے شرکا کو یقین دلایا کہ سول انتظامیہ سے متعلق امور کو جلد از جلد ازالہ کرنے کے لئے متعلقہ محکموں کے ساتھ بات کی جائے گی۔ایس ایس پی بڈگام طاہر سلیم نے ایک بار پھر عام لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ مناسب ہدایات پر عمل کریں ، معاشرتی فاصلے کو برقرار رکھیں ، ماسک پہنیں اور وبائی امراض پھیلنے پر قابو پانے کے لئے تمام ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔ انہوں نے ان تمام اہل افراد سے بھی درخواست کی کہ کوویڈ ویکسین لگائیں۔
 

تازہ ترین