تازہ ترین

گلاب باغ زکورہ میں 18گھنٹے کے بعد آپریشن ختم

مکان کو شدید نقصان، جنگجوئوں کا اتہ پتہ نہ چل سکا، شوپیان میں فورسز پر فائرنگ

تاریخ    8 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


ارشاد احمد+شاہد ٹاک
گاندربل+شوپیان// سرینگر کے مضافاتی علاقے گلاب باغ زکورہ میں18گھنٹے تک محاصرہ کی کارروائی جاری رکھی گئی لیکن دوران آپریشن ایک زیر تعمیر عالی شان رہائشی مکان پر ماررٹر گولوں کی بارش کے بعد بھی جنگجوئوں کا کوئی اتہ پتہ نہیں چلا سکا اور نہ انہوں نے دوران شب کوئی جوابی فائر کیا۔ادھر امام صاحب شوپیان میں فوج کی ایک گشتی پارٹی پر جنگجوئوں نے فائر کھول دیا تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔

زکورہ

منگل کی شام8 بجکر 30 منٹ پر گلاب باغ کی ایک ملحقہ بستی’ مرزا باغ کالونی ‘کو پولیس، سی آر پی ایف، اور 5 آر آر گاندربل نے محاصرہ کیا اور ایک مخصوص مکان کے ارد گرد گھیرا تنگ کیا۔منگل کی شام پولیس کی جانب سے میڈیا کو بتایا گیا کہ انہیں بستی میں کم سے کم 2جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملی ہے جن کے خلاف آپریشن کیا جارہا ہے۔اس موقعہ پر فوری طور پر علاقے میں روشنی کا انتظام کیا گیا اور چاروں طرف ناکہ بندی کی گئی۔ بستی کے ارد گردداخلی اور خارجی راستوں پر خار دار تاریں بچھائیں۔مشتبہ دو منزلہ زیر تعمیر مکان، جو اعجاز احمد شاہ ولد محمد امین بنا رہا ہے، کے نزدیک رات 11 بجکر 35 منٹ پر وارننگ کے طور پر ہوا میں کچھ گولیاں بھی چلائی گئیں تاہم جواباًکوئی گولی نہیں چلی۔پولیس و فورسز نے ممکنہ طور پر یہاں موجود جنگجوئوں کو سرنڈر کرنے کی کئی بار پیشکش کی۔ پبلک ایڈرس سسٹم کے ذریعہ جنگجوئوں کو کئی بار ہتھیار ڈالنے کیلئے کہا گیا لیکن مکان کے اندر سے کوئی جواب نہیں آیا۔دوران شب جب ہتھیار ڈالنے کی پیشکش پر کوئی جواب نہیں آیا تو صبح کے وقت مکان کے اندر کھڑکیوں سے کئی سموک شیل داغے گئے لیکن اس پر بھی کوئی جواب نہیں آیا۔ بعد میںسیکورٹی فورسز نے زیر تعمیر مکان کی جانب مارٹر اور یو بی ایل جی کے گولے داغے تاہم اس پر بھی جواب میں کوئی گولی نہیں چلی۔رہائشی مکان پر مارٹر گولے داغنے سے اسے نا قابل تلافی نقصان پہنچا۔مکان کی کھڑکیاں اکھڑ گئیں، شیشے چکنا چور ہوئے، مکان کے اندر دیواروں میں دراڑیں پڑ گئیں اور مکان کی باہری دیواروں حتیٰ کہ صحن کے ارد گرد دیوار میں بھی بڑے سوراخ  پیدا ہوئے۔سیکورٹی فورسز کی کارروائی میں عالی شان مکان کو لاکھوں کا نقصان ہوا لیکن کسی بھی عسکریت پسند کی موجودگی نہیں ملی جس کے بعد محاصرہ ختم کردیا گیا۔ مقامی لوگوں نے الزام لگایا کہ منگل کی شام ہی مکان میں کسی بھی جنگجو کی موجودگی نہیں ملی تھی کیونکہ اندر سے کوئی بھی جواب نہیں آرہا تھا ۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ فورسز نے اسکے باوجود بھی مکان پر مارٹر گولے داغے اور اسے نا قابل رہائش بنا دیا۔ادھر پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ غالباً دو جنگجو محاصرہ کرنے کے دوران ہی فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔
شوپیان

امام صاحب شوپیان پر جنگجوئوں نے فورسز پر حملہ کرنے کی کوشش کی ۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ جے کے بینک امام صاحب شوپیان کے نزدیک سہ پہر 3بجے178بٹالین سی آ پی ایف اور پولیس  نے ناکہ لگایا تھا جس کے دوران دور سے جنگجوئوں نے ان پر فائرنگ کی۔تاہم اس سے کوئی زخمی نہیں ہوا۔ اس موقعہ پر فورسز نے جوابی کارروائی نہیں کی البتہ علاقے کو فوری طور پر محاصرہ میں لیا اور تلاشیاں لیں۔جنگجو فائرنگ کرنے کیساتھ ہی فرار ہوئے تھے۔