تازہ ترین

جموں کشمیرکااگلاوزیراعلیٰ بھاجپاکاہوگا:چگھ | پارٹی کارکنوں کو اسمبلی انتخابات کی تیاریاں کرنے کی ہدایت

تاریخ    8 مارچ 2021 (54 : 12 AM)   


شبیرابن یوسف
سری نگر//جموں کشمیر کسی دن ریاست ہوگی ،کی بات کرتے ہوئے بھاجپا نے اپنے کارکنوں کو اسمبلی انتخابات کیلئے تیار یاں کرنے کی ہدایت دی جو اکتوبر نومبر میں ہوں گے کیوں کہ انہیں امید ہے کہ تب تک حدبندی کمیشن کاکام مکمل ہوا ہوگا۔اس بات کااظہار بھاجپا کے سینئررہنمائوں نے پارٹی کی اسٹیٹ ایگزیکیٹوکمیٹی کے کٹرہ میں منعقدہ دوروزہ اجلاس کے آخری دن کیا۔اسٹیٹ ایگزیکیٹوکمیٹی کی میٹنگ میں کئی قرار دادیں بھی پاس کی گئیں۔پارٹی کے جنرل سیکریٹری اور جموں کشمیراورلداخ امور کے انچارج ترون چگھ نے کہا ِ’’وادی میں تقریباًامن بحال ہوا ہے ‘‘۔انہوں نے شرکاء کو بتایا ،’’اکتوبر اور نومبر میں منعقد ہونے والے انتخابات کی تیاریاں کرو‘‘۔چگھ نے کہا کہ انہیں امید ہے کہ اس وقت تک حد بندی کمیشن کاکام مکمل ہو اہوگا۔یقینی طور وزیراعلیٰ بھاجپا کا ہوگااور ہرایک کو اس کیلئے زمین ہموار کرناہوگا۔انہوں نے کہا ،’’ عوام سے رابطہ بنائے رکھا جائے اوران کی مشکلات اور مسائل کو حل کیا جائے تاکہ وہ ہمیں ووٹ دیں‘‘۔چگھ نے کہا ،’’جموں کشمیر کاخصوصی درجہ ختم کرنے کے بعدبھاجپا نے اپنے بانی کا شیاماپرشاد مکھرجی خواب پورا کیا ہے،جن کا نعرہ تھا،ایک دیش میں دوودھان،دوپردھان ،دو نشان ،نہیں چلے گا‘‘۔بھاجپا کے قومی جنرل سیکریٹری نے کہا،’’ان کاخواب پورا ہوچکا ہے اور اب اس میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے‘‘۔چگھ نے کہا کہ جموں کشمیر کوترقی دی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا،’’عالمگیر وباء کی وجہ سے اس میں کچھ مشکلات درپیش تھیں اب عالمگیر وباء کچھ حدتک کم ہوا ہے اوراب کام ہونے لگے ہیں‘‘۔ جموں کشمیر بھاجپاکے صدر رویندررینہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ کسی نے یہ سوچاتک نہ تھا کہ جموں کشمیرمیں بھاجپا کانائب وزیراعلیٰ ہوگا۔لوگوں نے ہمیں اس وقت ووٹ دیااورہمیں امید ہے کہ لوگ ہمیں پھر ووٹ دیں گے اورہم جموں کشمیرمیں حکومت قائم کریں گے اور بھاجپا کا وزیراعلی ہوگا۔انہوں نے کہا کہ حالیہ اختتام پزیر ہوئے ضلع ترقیاتی کونسل انتخابات میں لوگوں نے ہم پر ایک بار پھربھروسہ کیااور ہم انہیں یقین دلاتے ہیں کہ ان سب کی ترقی ہوگی۔رینہ نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا ،’’ہاں وزیراعلیٰ بھاجپاکاہوگااورمیں اس بات کاذکرسٹیٹ ایگزیکیٹوکمیٹی کے خطاب میں کیا‘‘۔بعدمیں اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے بھاجپا کے صدر نے کہا کہ جموں کشمیر ستر سال ریاست تھی لیکن نیشنل کانفرنس ،پیپلزڈیموکریٹک پارٹی اور کانگریس نے اسے لوٹا۔یہاں جموں کشمیر مرکزی زیرانتظام علاقہ میں کام بہتر طور ہورہا ہے اور کچھ آئینی تبدیلیوں کو کرناپڑے گا اور حکومت وہ کرے گی۔ریاستی درجہ کے متعلق پوچھے جانے پرانہوں نے کہا جب بھی لوگ چاہیں گے یہ دیاجائے گا۔وزیرداخلہ نے پارلیمنٹ میں اس کا وعدہ کیا ہے اور یہ کسی دن دیا جائے گا۔