تازہ ترین

نظمیں

تاریخ    28 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


انسانیت کہاں ہے؟

 
انسان کو انسانیت کا پاس نہیں ہے
 
انساں کے احترام کا احساس نہیں ہے
اب تو کدورتیں ہی دلوں میں ہیں خیمہ زن
 
آتی انہیں صفائی ہی اب راس نہیں ہے
دنیا میں اب نہیں رہا وہ پیار و محبت
 
اس کی کہیں وہ بو نہیں وہ باس نہیں ہے
ناپید ہو چکے ہیں اب اخلاق و مروت
 
دنیا میں پھر یہ آئیں یہ بھی آس نہیں ہے
طاقتوروں کا ہے یہ جہاں ظلم سے بھرا
 
کیسے بچیں کہ کچھ ہمارے پاس نہیں ہے
ذہنوں میں بد دماغیاں ہوں جب بھری ہوئی
 
انسانیت پھر آتی انہیں راس نہیں ہے
با اختیار تو بہو ہی اب ہے گھروں میں
 
کوئی سسر نہیں ہے کوئی ساس نہیں ہے
دنیا و آخرت میں ہے ملتا عمل کا پھل
 
سچ تو یہی ہے یہ کوئی وسواس نہیں ہے
کیا دل کی صفائی ہے ٹھیک یا کہ کدورت؟
 
سب کچھ ہے اب مگر یہی احساس نہیں ہے
ہر سو سیاسی شاطروں کی ہے یہ شاطری!
 
جن کو کسی اصول کا اب پاس نہیں ہے
نیکی کسی سے ہو تو یہ اتنی ہے قیمتی
 
جتنا کوئی یاقوت یا الماس نہیں ہے
ظالم تو پھلے پھولے اور مظلوم کی ہو موت
 
کیا اے بشیرؔ اس میں رنج و یاس نہیں ہے
 
بشیر احمد بشیرؔ (ابن نشاطؔ) کشتواڑی
موبائل نمبر؛9018487470
 
 
 
 

کوئی جان نہیں ہے

بدنام یونہی اب فقط شیطان نہیں ہے
انسان بھی اب تو رہا انسان نہیں ہے
 
انصاف سے خالی ہیں دل پتھر بنے ہوئے
ہیں جسم مگر اُن میں کوئی جان نہیں ہے
 
ہیں چاک گریبان اور دامن ہیں تار تار
یہ دیکھ کر بھی کوئی پشیمان نہیں ہے
 
ہے سب کے مُنہ میں رام رام بغل میں ہے چُھری
اب دوست دشمن کی کوئی پہچان نہیں ہے
 
گھپلا کہیں، غبن کہیں ہے، ڈاکہ کہیں پر
لُٹتے نگر کا کوئی نگہبان نہیں ہے
 
جو زندہ ہوکے کررہا ہو مُردہ پَرستی
کیسے مان لیں گے وہ نادان نہیں ہے
 
اے مجید وانی
احمد نگر، سرینگر
موبائل نمبر؛9697334305
 
 
 
 

انعام کردے

شریروں کو الٰہی رام کردے
َٖفَتَح  یابی ہمارے نام کردے
عنبر افشاں فضائیں چار سُو اب
ہمار ی ہر گلی میں عام کردے
مُنوّر نورِ نکہت سے مُنوّر 
ہماری صُبح کردے شام کردے
نرالا اُنس و اُلفت کا وہ مایہ
صحابہؓ کا ہمیں انعام کردے
وفاکی راہ پر جو چل دئے ہیں
الٰہی سَہل اُن کا کام کردے
ہماری بیٹیوں کو یا الٰہی 
عطااک نعمتِ اسلام کردے
چمن سے دور یکسر، دوریکسر
قیامت تک رنج  و آلام کردے
پرکھ لے آہٹیں ابلیس کی  جو
وہی فکر و فہم الہام کردے
مقد س نامِ اطہر مُصطفٰی ؐ کا
بساطِ قلب پہ ارقام کردے
جفاکاروں کی ہستی کو مٹا کر
سرِبازار تو نیلام کردے
 
طُفیلؔ شفیع
 گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر
موبائل نمبر؛6006081653