تازہ ترین

محکمہ جل شکتی کے عارضی ملازم نے تنگ آ کر خودکشی کر لی

ایک اور ملازم کی مبینہ خود کشی پر پونچھ میں سرشام احتجاج

تاریخ    23 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


حسین محتشم
پونچھ//محکمہ صحت عامہ(پی ایچ ای )میں عرصہ بیس سال سے عارضی ملازمت کرنے والے محمد ریاض ولد ولی محمد ساکن محلہ اعلیٰ پیر پونچھ نے گھر کے اخراجات پورے نہ ہونے پر تنگ آ کر زہر کھا کر خودکشی کر لی۔تفصیلات کے مطابق محکمہ پی ایچ ای میں تقریبا بیس سالوں سے عارضی ملازمت کرنے والے محمد ریاض ولود ولی محمد ساکن محلہ اعلیٰ پیر پونچھ نے پیر کے روز کوئی زہریلی شے کھا کر خودکشی کرنے کی کوشش کی جنھیں فورا ضلع ہسپتال پونچھ پہنچایا گیا جہاں ان کی نازک حالت دیکھتے ہوئے ڈاکٹروں نے انھیں جموں منتقل کر دیا ۔جموں میڈیکل کالج میں ڈاکٹروں کی از حد کوشش کے باوجود اس شخص نے دم توڑ دیا ۔اس دوران پولیس نے متوفی کی لعش کو ضابطے کی کارروائی اور پوسٹ مارٹم کے بعد لعش لواحقین کے حوالے کر دی۔ اس دوران پونچھ میں شام کو جل شکتی محکمہ کے ایک ڈیلی ویجر کی مبینہ خود کشی کے خلاف احتجاج کیاگیا۔مرنے والے کی شناخت فیاض احمد ولد ولی محمد سکنہ بانڈی چیچیاں پونچھ کے طور پر ہوئی ہے۔مظاہرین جن میں متوفی کے لواحقین ، رشتہ داروں اور کچھ مقامی افراد شامل ہیں نے بتایا کہ ریاض پچھلے بیس سالوں سے محکمہ جل شکتی میں روزانہ کی نوکری کے طور پر کام کر رہا تھا اور اب اسے ماہانہ اجرت کے طور پر ساٹھ سات سو مزدوری مل رہی ہے۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ "روزانہ مزدور متعدد مسائل سے دوچار ہیں اور ان کو مستقل کرنے جیسے مطالبات کو مشکوک اور ہنگامہ خیزی میں ڈالنے سے نظرانداز کیا جارہا ہے۔"انہوں نے الزام لگایا کہ معاوضے کی ناقص ادائیگی اور ناجائز طریقہ کار کی وجہ سے دباؤ میں مبتلا ریاض نے خودکشی کرلی۔مظاہرین نے کہا ، "ہم ان کے خاندان کے ایک ممبر سے مالی امداد اور نوکری کا مطالبہ کرتے ہیں۔"آخری اطلاعات آنے پر سینئر انتظامی افسران موقع پر موجود تھے کہ احتجاج کو راحت بخش بنائیں۔دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ مقتول کو اتنے کے روز پونچھ کے اسپتال میں زہر دینے کے معاملے میں داخل کیا گیا تھا اور اسے جموں ریفر کردیا گیا تھا جہاں وہ پیر کو دم توڑ گیا تھا۔پولیس نے کہا ، "ہم نے اس معاملے کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔"